عدالت نے راہل کے خلاف دوبارہ سمن جاری کیا

10 جولائی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

یواین آئی
احمدآباد//گجرات کے احمدآباد شہر کی ایک عدالت نے کانگریس لیڈر راہل گاندھی کی جانب سے مدھیہ پردیش کے جبل پور میں ایک انتخابی ریلی میں بی جے پی صدر امت شاہ کو ‘قتل کا ملزم بتاتے ’ ہوئے دی گئی تقریر کے سلسلے میں دائر معاملے میں آج دوبارہ سمن جاری کیا اور سماعت کی اگلی تاریخ نو اگست کو انہیں پیش ہونے کا حکم دیا۔اس سے پہلے گزشتہ یکم مئی کو عدالت نے اسی معاملے میں مسٹر گاندھی کے خلاف سمن جاری کرتے ہوئے انہیں نو جولائی یعنی آج پیش ہونے کو کہا تھا لیکن اس وقت کی لوک سبھا کے پتے پر بھیجے گئے اس سمن کو یہ کہتے ہوئے لوک سبھا اسپیکر کے دفتر نے لوٹا دیا ہے کہ اسے مسٹر گاندھی کے ذاتی پتے پر بھیجا جائے ،اس لئے آج عدالت نے اسے دوبارہ جاری کیاہے ۔مسٹر گاندھی کے وکیل پرکاش پٹیل نے یواین آئی سے اس کی تصدیق کی۔ میٹروپولیٹن مجسٹریٹ آر بی اٹالیا کی عدالت نے سماعت کی اگلی تاریخ نو اگست طے کی ہے ۔بی جے پی کے مقامی کونسلر کرشن ودن برہم بھٹ نے یہ معاملہ دائر کرتے ہوئے الزام لگایا ہے کہ گزشتہ 23اپریل کے انتخابی جلسے میں مسٹر گاندھی کی جانب سے دی گئی تقریر سے ان کے لیڈر کی توہین ہوئی ہے ۔مسٹر شاہ کو سہراب الدین شیخ مڈبھیڑ معاملے میں سی بی آئی کی عدالت نے پہلے ہی بری کردی ہے ۔گزشتہ 30اپریل کو عدالت کے سامنے ان کے وکیل نے دلیل پیش کی تھی کہ جبل پور میں جلسہ ہونے کے باوجود ٹیلی ویژن پر نشر مسٹرگاندھی کی تقریرکو احمدآباد سمیت ملک میں دیکھا سنا گیا تھا اس لئے وہ یہاں مقدمہ دائر کرسکتے ہیں۔
 

تازہ ترین