فیاض احمد کلو کی صدارت میں کشمیر ایڈیٹرس گلڈ کا اجلاس

اخبارات کو درپیش مسائل پر تبادلہ خیال

9 جولائی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
سرینگر//کشمیرایڈیٹرس گلڈ کے اجلاس میں سوموار کو ذرائع ابلاغ خصوصاً اخبارات کو درپیش مسائل پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ گلڈ کے صدر فیاض احمدکلو کی صدارت میں منعقدہ اجلاس میں ممبران نے پریس کلب کے آنے والے اولین انتخابات پرصلاح مشورہ بھی کیا۔ میٹنگ کے دوران پریس کلب کے نامزد صدرہارون رشید نے کلب کو صحافتی سرگرمیوں کا مرکز بنانے کے لئے کئے گئے اقدامات کا خلاصہ پیش کیا۔میٹنگ کے دوران ممبران نے پریس کلب کواتحاد کی علامت بنانے پر اصرار کیا اورکہا کہ سبھی متعلقین کو اپنے طور ہرسطح پراس بات کو یقینی بنانا چاہیے کہ یہ اولین انتخابات صحافیوں کو منقسم کرنے کے بجائے متحد کریں۔ انہوں نے تاکید کی کہ منتخب ہونے والے سبھی عہدیدارپریس کلب کو باہمی تعامل اور صحافتی سرگرمیوں کاادارہ بنانے کیلئے ہر ممکن کوشش کریں گے ۔اس دوران گلڈ کے صدر نے ممبران کو نئی دہلی میں قومی تحقیقاتی ایجنسی کی طلبی پر ہفتہ بھرکی اپنی سرگرمیوں سے آگاہ کیا۔گلڈ صدر نے کہا کہ مرکزی تحقیقاتی ایجنسی نے اُن کی اپنی اشاعت ،اخبارات اور کشمیر ایڈیٹرس گلڈ کے بارے میں اُس سے متعدد سوالات کئے ۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ کشمیر ایڈیٹرس گلڈ کاقیام کشمیر میں ذرائع ابلاغ کو روزمرہ درپیش مسائل کوحل کرنے کیلئے عمل میں لایا گیاتھا۔گلڈسال2008میں پہلی بار قائم ہوااور2010تک قائم رہا۔اس کے بعد گلڈ منظر سے باہر ہوااور2016کے گرمائی احتجاج کے دوران چھاپ خانوںاوراخباری دفاتر پرپولیس چھاپوں کے بعد گلڈ کادوبارہ احیا کیاگیا۔ گزشتہ تین برس کے دوران گلڈ کشمیر میں پریس کلب کو قائم کرنے ،ریاست بھر میں ذرائع ابلاغ کیلئے رقومات کی تفویض اور صحافیوں کی بہبود کیلئے کچھ رقم مختص کروانے میں کامیاب ہوا۔آخرالذکرمعاملے میں حکومت نے ابھی گلڈ کی تجاویزکے پس منظر میں پالیسی مرتب نہیں کی ہے۔ ممبران نے تجویز پیش کی کہ گلڈ کواُن صحافیو ں کیلئے بھی کھول دیناچاہیے جو مالکان اخبارات یامدیراں نہیں ہیں اور اُن کے خیالات اور معاملات پربھی معمول کے طور تبادلہ خیال کیاجانا چاہیے ۔ 
 

تازہ ترین