تازہ ترین

سنٹرل یونیورسٹی کشمیر میں تحقیقی پروگرام کا انعقاد

30 جون 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نیو ڈسک
گاندربل //کیلیفورنیا یونیورسٹی ڈیوس سے وابستہ ڈاکٹر امتیاز کھانڈے نے سنٹرل یونیورسٹی کشمیر کے گرین کیمپس گاندربل میں زرعی حیاتیات عنوان کے تحت ایک اہم درس  دیا۔ انہوں نے اپنے کہا کہ موجودہ وقت کے کسانوں کو ہر سال نقصان سے دوچار ہونا پڑتا ہے،جس سے بچنے کے لئے کسانوں کو صرف ایک بار یہ اعلیٰ پیداوار کے بیجوں کو خریدنے کے لئے اور اعلیٰ پیداوار کی صلاحیت کو کھوئے بغیر مستقبل میں بڑھتی ہوئی موسمی حالات کے مطابق بیجوں کا ایک چھوٹا حصہ استعمال کریں۔یہ پیش رفت تحقیقی نوعیت میں شائع کی گئی تھی۔ اس تحقیق کوترقی پذیر دنیا میں بھوک کی دشواری کو حل کرنے میں اہم سمجھا جاتا ہے۔اس موقع پر پروفیسر محمد افضل زرگر، سکول آف لائف سائنسز کے سربراہ نے موجودہ سیاق و سباق میں پلانٹ حیاتیات کی تحقیق کی اہمیت کو نمایاں کرنے کے علاوہ پروفیسر ڈاکٹر امتیاز احمد کی تحقیق پر عمل درآمد کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔ پروفیسر زرگر نے اقتصادی ترقی کے لئے فصل کی پیداوار کو بڑھانے میں بیو ٹکنالوجی کے تحت کسانوں کو کاشت کاری انجام دینے کی صلاح دی۔اس موقع پر ڈاکٹر امتیاز احمد کھانڈے نے طلباء کے ساتھ تفصیلی بات چیت کی اور ان کی جانب سے ان کی تحقیق کے بارے میں سوالات کے جوابات دیئے۔اس موقع پر بیو ٹیکنالوجی کے سربراہ ڈاکٹر عابد حمید ڈار نیبھی  خطاب کیا۔ڈاکٹر رئیس، ڈاکٹر نثار،ڈاکٹر شبیر سمیت دیگر اساتذہ اور اراکین پروگرام کے دوران موجود تھے۔