تازہ ترین

مزید خبریں

26 جون 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نیو ڈسک

محکمہ موسمیات کے ڈائریکٹر جنرل گورنر سے ملاقی

سرینگر/ /اِنڈین میٹرولوجیکل ڈیپارٹمنٹ کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر کے جے رمیش نے یہاں راج بھون میں گورنر ستیہ پال ملک کے ساتھ ملاقات کی۔انہوں نے گورنر کو ریاست میں موجود موسم کے پیشن گوئی نظام اور عام لوگوں کے ساتھ ساتھ امر ناتھ جی یاتریوں کے لئے اس کے فوائد کے بارے میں جانکاری دی۔گورنر نے اس موقعہ پر یاتریوں کی سہولت کے لئے پہلے ہی موسم سے متعلق جانکاری فراہم کرنے کی اہمیت کو اُجاگر کرتے ہوئے کہا کہ یاترا کا انحصار کافی حد تک موسمی حالات پر ہوتا ہے۔
 
 
 

مسئلہ کشمیر کا دیرپا حل 

خاکہ تشکیل دینے کی اشد ضرورت: حسنین مسعودی

سرینگر//نیشنل کانفرنس لیڈر اور جنوبی کشمیر کے رکن پارلیمان جسٹس (ر) حسنین مسعودی نے مذاکرات پر زور دیتے ہوئے کہا کہ مسئلہ کشمیر کے بامعنی اور دیر پا حل کیلئے مذاکرات شروع کئے جائیں۔ انہوں نے مرکزی و ریاستی سرکار پر زور دیا کہ وہ عوامی حکومت کو برسر وجود میں لانے کیلئے ریاست جموں وکشمیر میں فوری طور پر اسمبلی انتخابات سے متعلق اعلان کریں۔ نیشنل کانفرنس لیڈر اور جنوبی کشمیر کے رکن پارلیمان جسٹس (ر) حسنین مسعودی نے منگلوار کو پارلیمنٹ میں مسئلہ کشمیر کے بامعنی حل کی خاطر مذاکرات کی وکالت کی ہے۔ انہوں نے بتایا مسئلہ کشمیر کے دیرپا حل کیلئے ایک خاکہ تشکیل دینے کی اشد ضرورت ہے۔ انہوں نے بتایا کہ آج کل ہر کوئی جمہوریت کی باتیں کرتا ہے تاہم جموں وکشمیر کو حقیقی جمہوریت سے سرے سے ہی محروم رکھا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ زمینی سطح پر جمہوریت کو جگہ فراہم کرنے کیلئے ایک جوابدہ حکومت کی ضرورت ہے تاہم اس کیلئے ضروری ہے کہ ریاست جموں وکشمیر میں جلد از جلد عوامی حکومت کو برسر وجود میں لانے کی خاطراسمبلی انتخابات کو منعقد کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ جموں وکشمیر میں صدر راج کی سرے سے ہی گنجائش موجود نہیں تھی لیکن بلاجواز طریقے پر اسمبلی انتخابات کو التوا میں رکھا گیا جس کے نتیجے میں عوام کو اپنی پسندیدہ سرکار سے محروم رکھا گیا۔جسٹس (ر) حسنین مسعودی نے بتایا کہ اسمبلی انتخابات کو مزید التوا میں رکھنے کی خاطر اب حد بندی سے متعلق باتیں کی جارہی ہیں۔انہوں نے بتایا کہ جموں وکشمیر میں ترقی کا کہیں پر نام و نشان موجود نہیں ہے۔ یہاں پر بجلی کا ڈھانچہ بھی بری طرح سے متاثر ہے جبکہ سیاحتی شعبہ آخری ہچکیاں لے رہا ہے۔
 
 

ریزرویشن ترمیمی بل کا طریقہ کار غیر آئینی: محبوبہ مفتی

سرینگر //پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی نے بین الاقوامی سرحد پر رہائش پذیر آبادی کیلئے مراعات سے متعلق لوک سبھا میں ریزرویشن ترمیمی بل پیش کرنے پر کہا کہ ہم بل کی کھلے دل سے حمایت کرتے ہیں تاہم جس طرح بل کو پیش کرنے کا طریقہ کار اپنایاگیا وہ سراسر غیر آئینی ہے۔انہوں نے دعویٰ کیا کہ پارٹی کے بانی مرحوم مفتی محمد سعیدہی وہ پہلے شخص تھے جنہوں نے سرحدی عوام کو راحت پہنچانے کیلئے ریزرویشن بل پیش کی تھی۔انہوںنے بتایا کہ مرکزی وزیر داخلہ نے لوک سبھا میں بل پیش کرکے جموں وکشمیر کے آئین پر کاری ضرب لگائی ہے۔
 
 
 

مشیر گورنر کی مرکزی فائنائس سیکرٹری کیساتھ ملاقات

ریاست سے جڑے مالی معاملات پرتبادلہ خیال 

   نئی دلّی//گورنر کے مشیر کے کے شرما نے  نئی دلّی میں خزانہ کے مرکزی سیکرٹری (اَخراجات )گریش چندر مرمو کے ساتھ ان کے دفتر میں ملاقات کی اور ریاست سے جڑے مالی معاملات کے بارے میں ان کے ساتھ تبادلہ خیال کیا۔مشیر نے مرکزی حکومت سے کہا کہ ریاستی حکومت کو ساتویں تنخواہ کمیشن کی سفارشات لاگو کرنے کی وجہ سے مالی خسارے کا سامنا کرنا پڑا ہے۔اُنہوں نے کہا کہ جموں وکشمیر میں پرائیویٹ سیکٹر کے فقدان کے نتیجے میں ریاستی حکومت سب سے زیادہ ملازمتیں فراہم کر تی ہے۔مشیر نے کہاکہ بڑھتے مالی خسارے کی وجہ سے ریاست کومرکز کی طرف سے مالی امداد کی سخت ضرورت ہے تاکہ ترقیاتی سرگرمیوں اور بنیادی ڈھانچے کے فروغ کو یقینی بنایا جاسکے۔میٹنگ کے دوران سیکورٹی سے جُڑے اخراجات کے رہنما خطوط میں نرمی برتنے،جموں وکشمیر کے ہیرٹیج کے احیائے نو ، سیاحتی ڈھانچے(خصوصاً لیہہ اور کرگل) کے فروغ اور دیگر کئی معاملات پر تبادلہ خیال کیا گیا۔میٹنگ میں کھیل کود اور لائیو لی ہُڈ سے جُڑے معاملات کو بھی زیر بحث لایا گیا۔مشیر موصوف نے مزید کہا کہ نوجوانوں کے ہنر میں مزید نکھار لانے کی خاطر سیاحتی سرگرمیوں کو فروغ دینے اور ریاست میں ویٹرنری ریسرچ انسٹی چیوٹ کے قیام کے لئے مرکزی امداد کی سخت ضرورت ہے ۔ بعدمیں کے کے شرما نے مرکزی فائنانس سیکرٹری سُبھاش چندر گرگ کے ساتھ بھی ملاقات کی۔
 
 
 

 خورشید گنائی کااظہار افسوس 

سری نگر//گورنر کے مشیر خورشید احمد گنائی نے رام بن ضلع میں جسوال پُل کے پاس ایک ٹپر کے حادثے میں سکولی بچوں کے فوت ہونے پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا۔اپنے ایک تعزتی پیغام خورشید گنائی جو محکمہ تعلیم کے انچارج بھی ہیں نے غمزدہ کنبوں کے ساتھ اپنی دلی ہمدردی کا اِظہار کیا ۔ مشیر موصوف نے ضلع انتظامیہ کو ہدایت جاری کی کہ وہ سکول جانے والے بچوں کی حفاظت یقینی بنانے اور ٹرک مالکان و ٹپر مالکان کو سکولی بچوں کو اُٹھانے پر پابندی لگائیں۔مشیر موصوف نے ڈپٹی کمشنر رام بن کو ہدایت دی کہ وہ اس واقعہ کی تحقیقات عمل میںلائیں۔
 
 
 

گنڈ کنگن میں حادثہ،ڈرائیور زخمی

کنگن//غلام نبی رینہ//گنڈ کنگن میں سڑک کے ایک حادثے میں ٹریکٹر ڈرائیور شدید طورپر زخمی ہو گیاہے۔ کشمیر عظمیٰ کو ملی تفصیلات کے مطابق وسطی کشمیر گاندربل کے گنڈ کنگن علاقے میں اس وقت سنسنی پھیل گئی جب ایک ٹریکٹر سڑک پر پلٹ گیا جس کے نتیجے میں 20برس کا نوجوان ریاض احمد بٹ ولد منظور احمد بٹ ساکن فراؤ مظفر احمد لون ولد غلام محی الدین لون ساکن کلو محلہ گنڈ  شدید طور پر ذخمی ہوگئے اگر چہ دونوں زخمیوں کو فوری طور پر پرائمری ہلتھ سنٹر گنڈ منتقل کیا گیا تاہم ڈاکٹروں نے دونوں کو علاج معالجہ کے لئے صورہ ہسپتال منتقل کردیا۔ ہسپتال ذرائع نے بتایا کہ بیس برس کے ریاض احمد بٹ کی حالت تشویش ناک تھی  پولیس نے کیس درج کرکے تحقیقات شروع کردی//گنڈ کنگن میں سڑک کے ایک حادثے میں ٹریکٹر ڈرائیور شدید طورپر زخمی ہو گیاہے۔ کشمیر عظمیٰ کو ملی تفصیلات کے مطابق وسطی کشمیر گاندربل کے گنڈ کنگن علاقے میں اس وقت سنسنی پھیل گئی جب ایک ٹریکٹر سڑک پر پلٹ گیا جس کے نتیجے میں 20برس کا نوجوان ریاض احمد بٹ ولد منظور احمد بٹ ساکن فراؤ مظفر احمد لون ولد غلام محی الدین لون ساکن کلو محلہ گنڈ  شدید طور پر ذخمی ہوگئے اگر چہ دونوں زخمیوں کو فوری طور پر پرائمری ہلتھ سنٹر گنڈ منتقل کیا گیا تاہم ڈاکٹروں نے دونوں کو علاج معالجہ کے لئے صورہ ہسپتال منتقل کردیا۔ ہسپتال ذرائع نے بتایا کہ بیس برس کے ریاض احمد بٹ کی حالت تشویش ناک تھی  پولیس نے کیس درج کرکے تحقیقات شروع کردی
 
 

حریت کے ساتھ بات چیت خوش آئند:وکیل

سرینگر//مرکزی سرکار کی طرف سے حریت لیڈران کے ساتھ مذاکرات کے اشارہ کو قابل تعریف اور صحیح سمت کی طرف صحیح قدم قرار دیتے ہوئے پیپلز کانفرنس کے سنیئر نائب صدر اورسابق وزیر عبد الغنی وکیل نے کہا کہ دیرآید درست آید ایسا لگ رہا ہے کہ مرکزی سرکار سمجھ گئی ہے کہ دھونس دبائو ، گرفتاریوں اور خون خرابے سے کچھ حاصل نہیں کیا جا سکتا ہے ۔اور نہ ہی آئندہ ہوگا بلکہ ہر مسئلے کا حل صرف بات چیت کے ذریعے ہی نکلا جا سکتا ہے ۔ روہامہ اور لویگری پورہ میں پارٹی ورکروں کے کنونشن سے خطاب کے دوران عبد الغنی وکیل نے کہا کہ ہندوستان کو بڑے بھائی کی حیثیت سے بات چیت کو کامیاب اور با مقصد بنانے کیلئے پاکستان کے ساتھ مذاکرات کیلئے پہل کرنی چاہئے تاکہ تشدد کا خاتمہ ہو اور امن و آشتی کا ماحول قائم ہو سکے جو کہ ر یاست جموں کشمیر میں تعمیر و ترقی کیلئے انتہائی اہم ہے 
 
 

ضلعی سطح پر کورپشن معاملات کی تحقیقات میں تاخیر

چیف ویجی لنس کمشنر کا اظہار تشویش

 سرینگر/چیف ویجی لینس کمشنر پی ایل گُپتا نے یہاں ڈسٹرکٹ ویجی لینس افسروں کی ایک میٹنگ کے دوران کشمیر صوبے میں التواء میں پڑے معاملات کی پیش رفت کا جائیزہ لیا۔ویجی لینس کمشنر غضنفر حُسین اور ہلال احمد پرے کے علاوہ ڈائریکٹر اینٹی کورپشن بیورو آنند جین بھی اس میٹنگ میں موجود تھے۔سی وی سی نے سٹیٹ ویجی لینس کمیشن اور اینٹی کورپشن بیورو کی طرف سے ضلع ویجی لینس افسروں کو سونپی گئی تحقیقات کو نمٹانے میں تاخیر پر تشویش کا اظہار کیا۔ اس موقعہ پر بتایا گیا کہ کُچھ معاملات میں داخل کی گئی رپورٹ اور نمٹارے کی ہیت اطمینان بخش نہیں ہے۔ کمیشن کو بتایا گیا کہ اس وقت ڈپٹی کمشنروں اور ایڈیشنل ڈپٹی کمشنروں کے پاس اے سی بی کے409 ریفرینسز التواء میں پڑے ہوئے ہیں اور کچھ معاملات میں تحقیقاتی رپورٹ باقی ہے جس کی وجہ سے معاملات کو حل کرنے میں دشواریاں آرہی ہیں۔کمیشن نے ریونیو اہلکاروں کی طرف سے مبینہ طور پر غیر قانونی طور کئے گئے انتقالوں کی وجہ سے التواء میں پڑی اپیلوں پر بھی تشویش کا اظہار کیا ہے۔ایڈیشنل ڈپٹی کمشنروں سے کہا گیا ہے کہ وہ ان معاملات کے نپٹارے میں تیزی لائیں تا کہ نظام میں عام آدمی کے اعتقاد میں اضافہ ہوسکے۔ضلع ویجی لینس افسروں نے کمیشن کو انہیں درپیش کئی مسائل کے بارے میں جانکاری دی۔
 
 

مرکزی وزیر نے امرت و سمارٹ سٹی منصوبوں کاجائزہ لیا

 پی ایم اے وائی کے تحت 32804 رہائشی یونٹ منظور 

سری نگر//مکانات و شہری معاملات کے مرکزی وزیر مملکت ہر دیپ سنگھ پوری نے یہاں سٹیٹ مشن ڈائریکٹروں کے ساتھ امرت ، سمارٹ سٹی مشن اور پی ایم اے وائی ۔ ایچ ایف اے ( یو) سکیموں کی عمل آوری کا جائزہ لیا۔مختلف ریاستوں کے سٹیٹ مشن ڈائریکٹروں نے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے وزیر موصوف کے ساتھ تبادلہ خیال کیا اور اِن سکیموں کی پیش رفت اور حصولیابیوں کے بارے میں تفاصیل پیش کیں۔ہردیپ سنگھ پوری نے مختلف سکیموں کی کارکردگی پر اطمینا ن کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ اس عمل میں ریاستوں کو مساوی کے شراکت دار بناناچاہتے ہیں۔اُنہوں نے کہا کہ مختلف ترقیاتی کاموں سے ان سکیموں کی پیش رفت سے بھرپور عکاسی ہوتی ہے۔اُنہوں نے سٹیٹ مشن ڈائریکٹروں پر زور دیاکہ وہ ان سکیموں کی بروقت تکمیل کو یقینی بنائیں تاکہ اِن سکیموںکی عمل آوری کے دوران مالی مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ اُنہوں نے ریاستی حکومتوں پر زور دیا کہ وہ لوگوں کو فلاحی سکیموں کے بارے میں جانکاری دیں اور ترقیاتی سکیموں کو اِن کی دہلیز تک لے جائیں۔بعد میں اُنہوں نے ایک پریس کانفرنس سے بھی خطاب کیا جس میں کئی معاملات پر روشنی ڈالی گئی۔جموں وکشمیر ڈائریکٹر پلاننگ ہاوسنگ اینڈ اربن ڈیولپمنٹ ڈیپارٹمنٹ ایم آئی پخشوال نے ویڈیو کانفرنسنگ  کے ذریعے امرت مشن کے تحت کل 593.05کروڑ روپے مختص رکھے گئے تھے جن میں سے 306کروڑ روپے واگزار کئے گئے ہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ 92منظور شدہ پروجیکٹوں میں سے 89پروجیکٹوں کی ٹینڈرنگ کی گئی ہے جبکہ 84پروجیکٹ الاٹ کئے گئے ہیں۔ علاوہ ازیں 29پروجیکٹوں کو مکمل کیا جاچکا ہے۔پخشوال نے مزید کہا کہ پی ایم اے وائی سکیم کے تحت 32804رہائشی یونٹ منظور کئے گئے ہیں ۔اُنہوں نے کہاکہ 7695 رہائشی یونٹوں کا کام پہلے ہی ہاتھ میں لیا جاچکا ہے اور یہ تکمیل کے مختلف مراحل سے گزر رہے ہیں۔جموں سمارٹ سٹی کے تعلق سے ڈائریکٹر نے کہا کہ اس پروجیکٹ کے دو مدوں کے تحت 3464.51کروڑ روپے منظور کئے گئے ہیں۔ اُنہوں نے کہا کہ 72کرو ڑروپے سی ای او، جے ایس سی ایل کو واگزر کئے گئے ہیں جن میں مارچ 2019ء کے آخر تک 15.15 کروڑ روپے صرف کئے جاچکے ہیں۔سری نگر سمارٹ سٹی کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ اس پروجیکٹ کے دو مدوں کے تحت 3634.82کروڑ روپے کی رقم منظور کی گئی جس میں سے 52کروڑ روپے سی ای او ، جے ایس سی ایل کے حق میں واگزار کئے گئے جن میں سے7.07کروڑ روپے جہلم واٹر فرنٹ پروجیکٹ اور ہیرٹیج اور ٹوراِزم ڈیولپمنٹ پروجیکٹوں پر مارچ 2019ء کے آخر تک صرف کئے جاچکے ہیں۔
 
 
 

حد متارکہ کے آر پار تجارت کو بحال کیا جائے

تاشقند میں منعقدہ کانفرنس میں تاجروں کازور 

سرینگر//حدمتارکہ کے آر پار تاجروں کی انجمنوں نے بھارت اور پاکستان کی حکومتوں پر زوردیا ہے کہ وہ جموں کشمیر میں حد متارکہ کے آر پارتجارت کو بحال کرنے کیلئے اقدامات کریں۔ چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے ایک پریس بیان کے مطابق تاشقند ازبکستان میں23 سے25جون تک منعقدہ ایک میٹنگ میں آرپارجموں وکشمیرکے علاقائی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری،ایسوسی ایشنوں /فیڈریشنوں کے نمائندوں نے کنٹرول لائن کے آرپارتجارت کا جامع جائزہ لیا۔شرکاء نے اس دوران بتایا کہ حکومت ہند وپاکستان کی طرف سے 2005سے جموں کشمیر میں حدمتارکہ کے آرپارشروع کی گئی تجارت وسفراعتماد سازی کابڑاقدم تھااوراس سے خطوں اور طبقوں کے درمیان بھروسہ اور اعتماد پیداہوا۔شرکاء نے اعتراف کیا کہ حدمتارکہ کو منقسم خاندانوں کے سفراورتجارت کیلئے کھولنے کا معاہدہ ہندپاک قیادت کی تدبر کاعکاس تھا۔ شرکاء نے کہا کہ ہندپاک حکومتوں کے درمیان اعتمادسازی کے اقدامات کے ردعمل میں انہوں نے مشکلات اورمالی خطرات کے باوجود اس تجارت کوجذباتی سرمایہ کاری سے جاری رکھا۔انہوں نے تاہم افسوس کے ساتھ کہا کہ اس تجارت کو قدیم طرزپر شروع کرنے کے بعددونوں ممالک کی حکومتوں نے اس تجارت کو جدیدخطوط پر استوار کرنے کیلئے کوئی منظم لائحہ عمل ترتیب نہیں دیا جس کی وجہ سے یہ تجارت ممکنہ غلط استعمال کے خطرے سے دوچاررہی ۔انہوں نے کہا کہ اس تجارت کو بھارت نے حقیقی تاجروں کی کسی خطا کے بناء 18اپریل2019سے معطل کیا۔ تجارت کی اچانک معطلی سے تاجروں کوکافی نقصان ہوا۔ایک بیان کے مطابق میٹنگ میں شرکاء نے ہندپاک کی حکومتوں پرزوردیا کہ وہ ا س تجارت کو جلد ازجلدبحال کرنے کیلئے تیکنیکی نظام اور طریقہ کار کا جامع جایزہ لیں۔منقسم جموں وکشمیر کے آرپار تاجروں اور تجارتی انجمنوں کے نمائندوں نے اپنی اپنی حکومتوں کو یقین دلایا کہ وہ ا س تجارت کو شفاف اور جدید خطوط پر استوار کرنے کیلئے اُنہیں بھرپور تعاون دیں گی ۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ تجارت کو سیاست سے الگ طوردیکھاجانا چاہیے جیسا کہ بھارت اورپاکستان کے درمیان بین الاقوامی تجارت میں ہوتا ہے جو دونوں ممالک کے درمیان تعلقات میں رکاوٹوں کے باوجود  بلا خلل جاری رہتی ہے۔ شرکاء نے سرینگر،جموں اور میرپور کے جوائینٹ چیمبرآف کامرس اینڈ انڈسٹری کوسرکاری حکام اور تاجروں کے ساتھ نزدیکی رابطہ بنائے رکھنے پرزوردیا تاکہ یہ تجارت جلدازجلدبحال ہو۔جموں کشمیرجوائنٹ چیمبرآف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدرراکیش گپتا ،صدر (کشمیر)عاشق حسین اورصدر(میرپور)سہیل شجاع نے اس بات کو دہرایا کہ وہ سرکاری حکام اور دیگر متعلقین کے ساتھ رابطہ بنائے رکھیں گے تاکہ اعتماد سازی کے اس منفرد قدم کے پیچھے حقیقی مقصد کھو نہ جائے۔تاشقند میٹنگ کی خاص بات دونوں اطراف کی خاتون کاروباریوںکی اس میں شرکت تھی۔
 
 
 

ڈاکٹروں کی تبدیلیوں میں ضابطوں کی خلاف ورزیاں

مریضوں کی نگہداشت میں تساہل پسندی کامؤجب :ڈاک

سرینگر//کشمیرمیں محکمہ صحت عامہ کی طرف سے ڈاکٹروں کی تبدیلی کے ضابطوں کی کھلم کھلا خلاف ورزی کرنے کی وجہ سے مریضوں کی نگہداشت بری طرح متاثر ہورہی ہے۔اس بات کااظہارڈاکٹرس ایسوسی ایشن آف کشمیر نے ایک بیان میں کیا ۔ایسوسی ایشن کے صدر نے کہا کہ بارسوخ ڈاکٹروں کو من پسند جگہوں پر تعینات کیاجاتا ہے اور وہ وہاں دہائیوں تعینات رہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ڈاکٹروں کی ٹرانسفر پالیسی کو مریضوں کے مفاد اور دوردرازجگہوں پر طبی اداروں کے بلاخلل کام کاج کویقینی بنانے کیلئے اپنایا گیا تھا۔اس کے تحت ایک جگہ پر ڈاکٹر کی کم سے کم تعیناتی دوبرس کیلئے ہونی تھی اور وہ وہاں زیادہ سے زیادہ تین سال تک فرائض انجام دے سکتا تھا۔ڈاکٹر نثار نے الزام لگایا کہ منظور نظر ڈاکٹر دہائیوں ایک ہی جگہ تعینات رہتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ایسے بھی ڈاکٹر ہیں جو اپنی سہولت کی جگہوں پر گزشتہ بیس سال سے تعینات ہیں ۔انہیں ہاتھ لگانایا تبدیل کرنے کے بارے میں سوچا بھی نہیں جاتا،اگر انہیں تبدیل کیابھی جائے گا ،تو وہ حکم فوراًمنسوخ کیاجاتا ہے ۔ڈاکٹرس ایسوسی ایشن کے صدر نے کہا کہ اس پالیسی کے تحت ایک ڈاکٹر کو لازمی طور دوبرس تک کیٹگری (اے) یعنی بہت کٹھن مقام پر ڈیوٹی دینی ہے اور پانچ سال تک کیٹگری (بی/سی)مشکل علاقوں کے طبی اداروں میں کام کرنا ہے ۔ڈاکٹر نثار نے کہا کہ تاہم منظور نظر ڈاکٹروں کو تقرری کے ساتھ ہی خاص جگہوں پرتعینات کیا جاتا ہے۔ پالیسی کے مطابق جوڈاکٹر بیک ورڈ ایریا کیلئے مخصوص نشستوں پر منتخب ہوئے ہوتے ہیں ،انہیں اُن علاقوں میںکم سے کم سات برس کام کرنا ہوگا،لیکن ان ڈاکٹروں نے کبھی ان علاقوں کودیکھابھی نہیں ہوگا۔انہوں نے کہا کہ بے ترتیب تبدیلی پالیسی کی وجہ سے مریضوں کی نگہداشت متاثر ہورہی ہے کیونکہ ڈاکٹروں کی توجہ اپنے لئے محفوظ جگہوں پر تعیناتی پر مرکوزہوتی ہے ۔دوردرازعلاقوں کے اسپتال اب صرف مریضوں کو ریفر کرنے کے مرکز بن گئے ہیںجہاں لوگوں کو معمولی بیماری کیلئے بھی بڑے اسپتال ریفر کیاجاتا ہے ۔
 

بیروہ میں بجلی مرمت کے دوران نمبردارلقمۂ اجل

سرینگر //بیروہ بڈگام میں کل اُس وقت کہرام مچ گیا جب بجلی ٹرانسفارمر کی مرمت کے دوران مقامی نمبردار کرنٹ لگنے سے جھلس کر لقمہ اجل بن گیا۔مقامی لوگوں کے مطابق گائوں کا نمبردار شبیر احمد ملک ولد غلام محمد ملک ساکن موچھن بیروہ بجلی ٹرانسفارمر کی مرمت کر رہا تھا تو اس دوران وہ کرنٹ لگنے کے سبب شدید طور زخمی ہوگیا تاہم یہاں موجود لوگوں نے انہیں سب ڈسٹرکٹ ہسپتال بیروہ پہنچایا جہاںمذکورہ نمبردارنے آخری سانس لی ۔ مقامی لوگوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ متعلقہ محکمہ جب خراب ٹرانسفارمر کو ٹھیک کرنے میں بری طرح سے ناکام رہا تو گائوں کے نمبردار شبیر احمد ملک نے خود ہی اس کو ٹھیک کرنے کی ٹھان لی تاہم مرمت کے دوران وہ اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھا۔انہوں نے بتایا کہ ٹرانسفارمر کو ٹھیک کرنے سے قبل گائوں کے نمبردارشبیر احمد ملک نے محکمہ بجلی کو باضابطہ طور پر مطلع کیا تھا کہ وہ گائوں میں بجلی سپلائی کو منقطع کریں اگرچہ اس دوران صبح 8بجے سے دن کے ایک بجے تک بجلی سپلائی بند رکھنے کا فیصلہ ہوا تھا تاہم اچانک صبح ساڑھے دس بجے بجلی بحال کی گئی اور ٹرانسفارمر کو ٹھیک کرنے میں مشغول نمبردار اس وقعہ کے دوران لقمہ اجل بن گیا ۔مقامی نمبرداد تین بچوں کا باپ تھا اور گھر والوں کا واحد کمائو بھی ۔اس واقعہ کے خلاف مقامی لوگوں نے بیروہ میں دھرنا دیا اور واقعہ کی تحقیقات کا بھی مطالبہ کیا مقامی لوگوں کے مطابق بیروہ میں بجلی کرنٹ کا یہ چھٹا واقعہ ہے اور ابھی تک اس وجہ سے 6افراد کی ہلاکت ہو چکی ہے ۔مقامی لوگوں نے گورنر انتظامیہ اورمحکمہ پی ڈی ڈی کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اس واقعہ کی تحقیقات عمل میںغفلت برتنے والوں کے خلاف کڑی کارروائی عمل میں لائیں ۔بعدمیں تحصیلدار بیروہ اور ایس ایچ او بیروہ کی یقین دہائی کے بعد دھرنے پر بیٹھے لوگ منتشر ہوئے ۔ 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 

جواہر نودیا ودیالیہ چند گام کا معائنہ 

۔100کنال کی نشاندہی کرنے کیلئے افسران کو ہدایت 

پلوامہ//ڈپٹی کمشنر پلوامہ ڈاکٹر سید عابد رشید نے ڈی سی آفس کمپلیکس میں منعقدہ ایک میٹنگ کے دوران جواہر نوودایاوھیالیہ(جے این وی) سکول کی کارکردگی کا جائز ہ لیا اور سکو ل انتظامیہ کو درپیش مشکلات پر تبادلہ خیا ل کیا۔میٹنگ کے دوران سکول سے متعلق مختلف معاملات پر سیر حاصل بحث ہوئی۔ان معامات میںاراضی کی دستیابی،پینے کے پانی اور بجلی کی سہولیات ودیگرضروری سہولیات شامل تھیں۔ڈپٹی کمشنر نے چند گام میں سکول کے لئے 100کنال اراضی کی نشاندہی کرنے کے لئے ریونیو آفیسران کو ہدایات دیں جہاں سکول کو وسعت دینے کے لئے سٹیٹ لینڈ کا ایک بڑا رقبہ دستیاب ہے۔انہوںنے متعلقہ آفیسران کو فوری ڈی پی آر تیار کرنے کے لئے ہدایت دی تاکہ تعمیراتی کام جلد از جلد شروع کیا جاسکے۔انہوںنے محکمہ بجلی وصحت عامہ کے آفیسران کو ہدایت دی کہ وہ سکول کو معقول بجلی وپینے کا پانی فراہم کریں تاکہ طلبأ وسکول کا عملے کو کسی بھی مشکل کا سامنا نہ کرنا پڑے۔اس موقعہ پر ڈپٹی کمشنر نے سکول کے الیکٹریکفیشن کے لئے 6لاکھ روپے واگذار کئے۔یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ جے این وی چند گام جو پلوامہ کے بچوں کو تعلیمی سہولیات فراہم کررہا ہے ابھی تک ایک کرایہ کی عمارت میں اپنا کام کاج چلارہا ہے۔
 
 
 
 
 

انجمن علماء کا مولوی محمد اکرم کے لواحقین سے تعزیت

سرینگر//انجمن علماء وائمہ مساجد نے دارالعلوم فیض القرآن بائہامہ کے سابق مہتمم مولوی محمد اکرم کے انتقال پر رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملت اسلامیہ کشمیر کیلئے یہ ایک بہت بڑا صدمہ ہے۔ انجمن کے امیر اورمہتمم دارالعلوم سید المرسلین چوگام قاضی گنڈ حافظ عبدالرحمان اشرفی اورناظم تعلیمات دارالعلوم سید المرسلین مولانا قاری نواز احمد شان نے مولانا مرحوم کے گھرجاکرلواحقین کے ساتھ تعزیت کا اظہار کیا۔ 
 
 
 

شوپیان میں لوک عدالت منعقد

شوپیان//ڈسٹرکٹ لیگل سروسز اتھارٹی شوپیان کی صدارت میں ڈسٹرکٹ کورٹ کمپلیکس شوپیان میں ایک لوک عدالت منعقد ہوئی۔لوک عدالت میں مختلف نوعیت کے 305معاملات پیش کئے گئے جن میں سے آپسی افہام وتفہیم کے ساتھ 216معاملات نمٹائے گئے۔اس موقعہ پر 50775روپے جرمانے کے طور پر وصول کئے گئے اوراس رقم کو سرکاری خزانے میں جمع کیا گیا۔اس طرح سے6لاکھ روپے کی رقم لوک عدالت کے دوران حاصل کئے گئے۔بار ممبران ،متعلقہ لوگ ،عملے کے ممبران اورضلع انتظامیہ کے ضلع آفیسران کے علاوہ معزز شہریوں نے لوک عدالت میں حصہ لیا۔