تازہ ترین

ٹپر لڑھک کر دریائے چناب میں جاگرا

رام بن میں2بھائیوں سمیت 4 طلباء غرقآب ہوکر ہلاک

26 جون 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

محمد تسکین
بانہال //رام ضلع میں کرول کمیت لنک روڈ پر ایک ٹپر حادثے کاشکار ہوکر دریائے چناب میں جاگرا جس کے نتیجہ میں اس پر سوار 4طلباء لقمہ اجل بن گئے جن میں سے ایک کی نعش ابھی تک نہیں ملی جبکہ 3زخمی ہوئے ہیں ۔ اس حادثے میں ٹپر کا ڈرائیور بھی مضروب ہواہے ۔حادثے کا دلدوز اور اذیت ناک پہلو یہ کہ زخمی ٹپر ڈرائیور منموہن سنگھ اس حادثے میں اپنے دو جواں سال بیٹوں سے ہاتھ دھو بیٹھا ہے اور اس کا ایک بیٹا دریائے چناب میں بہہ گیا ہے جبکہ ڈرائیور کے رشتہ دار پردیپ سنگھ کی ایک بیٹی لقمہ اجل بن گئی اور دو بیٹیاں زخمی ہوئی ہیںجن میں سے ایک کو نازک حالت میں جموں منتقل کیاگیاہے۔پولیس ذرائع کے مطابق کنڈی علاقے سے تعلق رکھنے والا ایک ٹپر ڈرائیور اپنے دو بچوں اور دیگر طلاب کو سکول سے چھٹی کے بعد ٹپر پر بٹھاکر گھر واپس لیجارہاتھاجس دوران ڈگری کالج روڈ کے نزدیک کرول کے مقام پر ٹپر اس کے قابو سے باہر ہوپلٹے کھاتے ہوئے دریائے چناب میں جاگرا جس کے نتیجہ میں7سالہ منجیت سنگھ ولد لیہار سنگھ اور 14سالہ پوجا دیوی دختر پردیپ سنگھ کی موقعہ پر ہی موت ہوگئی جبکہ 16سالہ گورو سنگھ ولد منموہن سنگھ نے بعد ضلع ہسپتال رام بن میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ دیا ۔اس حادثے میں 17سالہ اجے سنگھ ولد منموہن سنگھ لاپتہ ہے جس کی تلاش کی جارہی ہے ۔اس کے علاوہ دوطلباء 9سالہ سروپا دختر پردیپ سنگھ اور 15سالہ کملیشا کماری دختر دھرم سنگھ اور50سالہ ٹپر ڈرائیورمنموہن سنگھ ولد شیو سرن کا رام بن ہسپتال میں علاج چل رہاہے جبکہ 14سالہ جیوتی دیوی دختر پردیپ سنگھ کو نازک حالت میں گورنمنٹ میڈیکل کالج و ہسپتال جموں منتقل کیاگیاہے ۔حادثے میں مرنے اور زخمی ہونے والوں کا تعلق کنڈی کرول سے ہے۔حادثے کی خبر ملتے ہی مقامی لوگ ، پولیس اور کیو آر ٹی رام بن کے مقامی رضاکار بچائو کارروائیوں میں جٹ گئے اور خوش قسمتی سے گاڑی کے دریائے چناب میں گرنے سے پہلے 8 میں سے 7 سوار گاڑی سے باہر گر چکے تھے جبکہ17 سال کا اجے سنگھ ولد ڈرائیور منموہن سنگھ دریائے چناب کے تیز پانی کیساتھ بہہ گیا ۔ایس ایچ او رام بن وجے کوتوال نے دریا برد ہوئے نوجوان سمیت 4 ہلاکتوں کی تصدیق کرتے ہوئے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ دریا برد ہوئے لڑکے کی تلاش جاری ہے لیکن دریائے چناب میں پانی کے تیز بہائو کی وجہ سے نعش کو ڈھونڈ نکالنا ناممکن بنا ہوا ہے۔ مقامی لوگوں نے بتایاکہ گاڑی میں سواردو بچے ڈرائیورمنموہن سنگھ کے تھے جبکہ بقیہ بچے اسکے قریبی رشتہ دار تھے اور منگل کی دوپہر بعد سکول سے واپس آنے کے بعد اس نے اپنے دو بیٹوں سمیت اِن بچوں کو گھر پہنچانے کیلئے اپنی گاڑی میں بٹھایا لیکن شاہراہ پرکرول سے کمیت کنڈی رابطہ سڑک پر شروع کیا گیا سفر چند منٹوں کے بعد ہی اپنے اختتام کو پہنچا جو چار سکولی بچوں کی موت کا باعث بنا۔ایس ایس پی رام بن انیتا شرما نے بتایاکہ تین بچوں کی موت ہوئی ہے جبکہ ایک لاپتہ ہے اور ایک کو گورنمنٹ میڈیکل کالج و ہسپتال جموں منتقل کیاگیاہے جبکہ دو دیگران کا ٹپر ڈرائیور کے ہمراہ رام بن ضلع ہسپتال میں علاج کیاجارہاہے ۔ انہوں نے بتایاکہ لاپتہ طالبعلم کی تلاش کیلئے پولیس نے تلاشی کارروائی شروع کردی ہے ۔اس حادثے سے رام بن کرول کا پورا علاقہ سوگوار اور افسردہ ہے۔