تازہ ترین

بھرتی میں کمی، پتھرائو ختم،جنگجوئوں کا 10سالہ ڈھانچہ تباہ کردیا

پاکستان پربھارت کیساتھ خفیہ معلومات کا تبادلہ کرنا لازم: گورنر

20 جون 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

بلال فرقانی
سرینگر//ریاستی گورنر ستیہ پال ملک نے کہا ہے کہ پاکستان پر لازم ہے کہ وہ بھارت کیساتھ جنگجوئوں سے متعلق خفیہ اطلاعات کا تبادلہ کرے۔شہر میں ٹریفک قوانین کے حوالے سے ایک تقریب کے حاشیہ پر نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے گورنر نے کہا کہ وادی میں زمینی صورتحال پرامن اور قابو میں ہے۔ انہوں نے کہا’’ کچھ لوگوں کو باہر سے وادی میں حملے کرنے کیلئے بھیجا جا رہا ہے،تاہم موجودہ انتظامیہ کی حکمرانی کے دوران گزشتہ10برسوں کے دوران جو جنگجویانہ ڈھانچہ تیار کیا گیا تھا،اس کو زیادہ سے زیادہ نقصان پہنچاہے‘‘۔ ریاستی گورنر نے کہا کہ انکی سربراہی میں موجودہ انتظامیہ’’ جنگجویانہ وبائو کو ختم‘‘ کرے گی۔انہوں نے کہا کہ مجموعی صورتحال قابومیں ہے،’’ مقامی نوجوانوں کی طرف سے جنگجوئوں کے صفوں میں شمولیت میں غیر معمولی کمی واقع ہوئی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ نوجوان(جنہوں نے عسکری صفوں میں شمولیت اختیار کی تھیــ) اپنے گھرئوں کو واپس آرہے ہیں،پتھرائو کے واقعات اب کہیں نہیں ہورہے ہیں ، حتیٰ کہ نماز جمعہ کے بعد احتجاج کی روایت بھی ختم ہوئی ہے۔گورنر نے کہا ’’ صورتحال میں بھی کافی بہتری آئی ہے،اور آپ از خود اس کو دیکھ سکتے ہیں‘‘۔ حالیہ جنگجویانہ حملوں پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ستیہ پال ملک نے کہا  اس طرح کے اکا دکا واقعات امریکہ،فرانس اور برطانیہ میں بھی ہوتے ہیں۔
انہوں نے کہا’’ہم اس طرح کے منصوبوں کو خاک میں ملانے کیلئے تیار ہیں،آپ نے سابق حکومت کی طرف سے جنگجویت سے نپٹنے کا طریقہ دیکھا ہوگا،اور آپ نے یہ بھی دیکھا ہوگا کہ ہم نے کس طرح نپٹا،آپ اس میں فرق دیکھ سکتے ہیں‘‘۔ سرینگر جموں شاہراہ پر جنگجوئوں کی جانب سے فدائین حملے سے متعلق پاکستان کی خفیہ اطلاع پر اپنے رد عمل میں گورنر نے بتایا کہ پڑوسی ملک پاکستان پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ اس قسم کے حملوں اور منصوبوں سے متعلق کسی بھی خفیہ اطلاع سے ہمیں آگاہ کرتا رہے۔ انہوں نے بتایا کہ پاکستان اس بات کیلئے ذمہ دار ہے کہ حکومت ہندوستان کیساتھ کسی بھی خفیہ اطلاعات کا اشتراک کریں تاکہ جنگجوئوں کے منصوبوں کو ناکام کیا جاسکے۔ تاہم گورنرنے بتایا کہ جہاں پاکستان کشمیر میں کسی خفیہ منصوبے سے متعلق تفصیلات کا تبادلہ کرتا ہے وہیں یہ بات بھی دیکھنے کے قابل ہے کہ پاکستان اپنی سرزمین پر اس طرح کے حملوں کو روکنے میں کتنا کامیاب ہوا ہے۔گورنر نے بتایا کہ ’’یہ پاکستان کی ذمہ داری ہے کہ وہ خفیہ اطلاعات سے متعلق نئی دہلی کو آگاہ کرتا رہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ ایک ماہ سے وادی میں سیاحت کے گراف میں بھی اضافہ ہوا ہے،وہ اب کسی سے خوف محسوس نہیں کرتے۔ایس پی ملک نے کہا کہ گزشتہ روز ان کو گلمرگ سے ایک سیاح نے فون پر بتایا کہ اس مقام پر20ہزار سیاح ہیں،اور پولیس کسی وجہ سے ان کو روک رہی ہے،اس لئے سیاح بغیر کسی خوف کے آرہے ہیں۔ ملک نے کہا کہ آئندہ ماہ شروع ہونے والی امرناتھ یاترا کیلئے جامع سیکورٹی انتظامات کئے جائیں گے۔