تازہ ترین

مزید خبریں

13 جون 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نیو ڈسک

درخواست قبول ہونے کے باوجود

مودی کا طیارہ پاکستانی حدود سے نہیں گزرے گا

نئی دہلی//شنگھائی تعاون تنظیم(ایس سی او)کے سربراہان مملکت کی چوٹی کانفرنس میں حصہ لینے کے لئے کرگیز جمہوریہ کے دارالحکومت بشکیک جانے کے لئے وزیراعظم نریندرمودی کا طیارہ پاکستان کے فضائی علاقے سے ہوکر نہیں گزرے گا۔وزارت خارجہ کے ترجمان رویش کمار نے وزیراعظم مودی کے طیارے کے راستے کے بارے میں نامہ نگاروں کے سوالوں کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ حکومت نے بشکیک جانے کے لئے وزیراعظم کے طیارے کے لئے دو راستوں کے متبادل کو تلاش کیاتھا۔انہوں نے کہا کہ یہ فیصلہ کیاگیا ہے کہ وزیراعظم کا طیارہ اومان ،ایران اور وسطی ایشیائی ملکوں کے فضائی علاقوں سے گزرتا ہوا بشکیک پہنچے گا۔اسلام آباد سے آئی میڈیا رپورٹ میں کہاگیا تھا کہ ہندوستان نے وزیراعظم مودی کے طیارے کے بشکیک جانے کے لئے پاکستان حکومت سے اپنے فضائی علاقے سے گزرنے کی اجازت طلب کی تھی۔پہلے وزارت خارجہ کے افسران نے مودی کے طیارے کے راستے پر کئے گئے سوالوں کو یہ کہتے ہوئے ٹال دیا تھا کہ وزیراعظم کی سلامتی کے پیش نظر سفرکا راستہ عام نہیں کیا جاسکتا۔ مودی 13اور 14جون کوشنگھائی تعاون تنظیم (ایس سی او)کے رکن ملکوں کے سربراہان مملکت کی چوٹی کانفرنس میں حصہ لینے کے لئے آج رات بشکیک روانہ ہوں گے جہان ان کی روس کے صدر ولادیمر پوتن اور چین کے صدر شی جنپنگ کے ساتھ دو طرفہ میٹنگ بھی ہوگی۔دونوں دن چوٹی کانفرنس میں حصہ لینے کے علاوہ ان کا کرگیز جمہوریہ میں دو روزہ دورے کا بھی پروگرام ہے ۔بشکیک میں پاکستان کے وزیراعظم عمران خان کے ساتھ رسمی یا غیر رسمی میٹنگ کے امکان کے بارے میں پوچھے جانے پر وزارت خارجہ نے واضح کیا کہ مودی کی پاکستانی وزیراعظم سے ملاقات کا کوئی پروگرام نہیں ہے ۔یواین آئی
 
 
 

نئی حد بندی پر سیاسی ہلچل

سابق ممبران اسمبلی کی نشست | ریاستی آئین کے تحفظ کیلئے متحد ہونے کا عزم

سرینگر //سابق ممبران اسمبلی محمد یوسف تاریگامی، حکیم محمد یاسین، انجینئر رشید، سید الطاف بخاری اور غلام حسن میر نے مشترکہ طور پربتایا ہے کہ وہ ریاستی آئین کو مسخ کرنے کیلئے کی جارہی کسی بھی کوشش کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔ ریاست جموں وکشمیر کے سابق ممبران اسمبلی بشمول محمد یوسف تاریگامی، حکیم محمد یاسین، انجینئر عبدالرشید، سید الطاف بخاری اورغلام حسن میر پر مشتمل گروپ نے اس بات کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ وہ ریاستی آئین کے ساتھ کی جارہی چھیڑ خوانی کی کسی بھی کوشش کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔معلوم ہوا کہ بدھ کو سابق ممبران اسمبلی نے سرینگر میں ایک مشترکہ میٹنگ منعقد کی جس میں ریاست جموں وکشمیر کے آئین کے تحفظ اور حد بندی سے متعلق جاری تنازعے پر مفصل تبادلہ خیال کیا گیا۔میٹنگ کے دوران سابق ممبران اسمبلی نے مرکزی سرکار کی جانب سے ریاست جموں وکشمیر میں نئے سرے سے حد بندی کے متعلق بیانات پر کافی بحث و مباحثہ کیا ۔ اس موقعے پر سابق ممبران اسمبلی نے اس بات کو محسوس کیا کہ حد بندی سے متعلق بلاجواز طریق کار سے ریاستی عوام کے قلب و ذہن کے اندر مزید اجنبیت کا ماحول پروان چڑھے گا اور اس طرح ریاست کی سیکولر تانے بھانے پر شدید دھچکا لگے گا۔سابق ممبران اسمبلی نے اس موقعے پر مرکزی و ریاستی حکومتوں پر زور دیا کہ وہ حد بندی سے متعلق نئے شوشے کو پھیلانے سے ریاستی امن کو نقصان پہنچانے سے اجتناب کریں۔ انہوں نے بتایا کہ اگر مرکزی سرکار نے ریاستی عوام کی خواہشات کا احترام نہ کرتے ہوئے حد بندی سے متعلق قانون کو آگے بڑھایا تو اس سے ریاستی و مرکزی آئین کی دھجیاں بکھر جائیں گی۔انہوں نے بتایا کہ اس طرح کے معاملات کو عوامی حکومتوں پر ڈال دینا چاہے تاکہ وہ حالات کا گہرائی سے جائزہ لینے کے بعد ایسے معاملات پر کئی حتمی فیصلہ لینے سے قبل سنجیدگی کے ساتھ غور وفکر کریں۔میٹنگ کے دوران سابق ممبران قانون ساز اسمبلی نے ریاستی آئین کے تحفظ کی خاطر جملہ عوام، سیاسی جماعتوں اور سیول سوسائٹی ممبران کو متحد ہونے کی اپیل کی تاکہ متحدہ طور پر کشمیر دشمن ایجنڈے کا مقابلہ کیا جائے۔
 
 
 

 پبلک پراسکیوٹراور ایڈیشنل پراسکیوٹر برخواست

سرینگر// سرکار نے ریاست میں مختلف عدالتوں میں کام کر رہے پبلک پراسکیوٹروں اور ایڈیشنل پراسکیوٹروں کی خدمات کو برخاست کیا ہے ۔محکمہ قانون و اِنصاف کی طرف سے جاری ایک حکمنامے کے مطابق سرکارنے کرمنل پروسیجر کوڈ کے سیکشن 492 کے تحت اِن پراسکیوٹروں کی خدمات کو فوری طور برخواست کیا ہے۔حکمنامے کے مطابق پولیس محکمہ میں کام کر رہے سینئر پرازِکیوٹنگ آفیسر اور چیف پرازکیوٹنگ آفیسر متعلقہ عدالتوں اور ایڈیشنل سیشنز عدالتوں میں اگلے حکمنامے تک مجرمانہ کاموں کی دیکھ ریکھ کریں گے۔
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 

 سروڑی اور شریف سرتاج نے فیصلے کا خیر مقدم کیا

کشتواڑ//جمو ں و کشمیر پردیش کانگریس کمیٹی کے نائب صدرغلام محمد سروڑی نے کٹھوعہ سانحہ میں 6 قصورواروں کے خلاف عدالتی فیصلے کی سراہنا کرتے ہوئے کہا ہے کہ ا س سے عصمت دری کے قصورواروں کو ایک مضبوط پیغام جائے گا۔انہوں نے کہا کہ انصاف کی جیت ہوئی ہے۔موصوف نے کہا کہ یہ ایک غریب کنبے کی لڑائی نہیں تھی بلکہ ملک کی لڑائی تھی اور یہ ایک مضبوط پیغام تھا کہ ایسے عناصر کو بخشا نہیں جائے گا۔انہوں نے اس معاملہ میں جموں وکشمیر پولیس کی بھی سراہنا کی ۔اس دوران فریڈم موومنٹ کے چیئرمین محمدشریف سرتاج نے رسانہ کیس میں عدالتی فیصلے پر اطمینان کا اظہار کیا ہے۔اپنے ایک بیان میں انہوںنے کہا کہ مجرمین کو ایسی عبرتناک سزا دی جانی چاہئے کہ پھر کوئی ایسی درندگی کا مظاہر کرنے کی جرت نہ کر سکے۔محمد شریف  سرتاج نے اُن تمام پولیس افسران کو مبارکباد پیش کی جنہوں نے جانفشانی،محنت اور ایمانداری سے اس کیس کی تحقیقات کی ۔انہوں نے کہا کہ اگر اسی طرح شوپیاں کی آسیہ نیلوفر اور کنن پوشہ پورہ کیسوں کی حقیقت پر مبنی تحقیقات ہو جائے گی تو اُنہیں بھی ضرور انصاف ملے گا۔
 
 
 

ڈاکٹر فاروق کی سابق ایم ایل اے گاندربل سے تعزیت پرسی

سرینگر// نیشنل کانفرنس صدرڈاکٹر فاروق عبداللہ نے تولہ مولہ گاندربل جاکر سابق ممبر اسمبلی حاجی محمد مقبول بٹ کی تعزیت پرسی کی ۔ حاجی محمد مقبول بٹ کا فرزند مظفر احمد گذشتہ روز اپنے مکان کی چھت سے پھسل کر لقمہ اجل بن گیا تھا۔ڈاکٹر عبداللہ نے مرحوم کے حق میں مغفرت اور لواحقین کیلئے صبر جمیل کی دعا کی ۔ اس موقع پر ضلع صدر گاندربل شیخ اشفاق جبار اور دیگر پارٹی عہدیداران بھی موجود تھے۔ دریں اثناء پارٹی کے جنرل سیکریٹری علی محمد ساگر، معاون جنرل سکریٹری ڈاکٹر شیخ مصطفی کمال، صوبائی صدر ناصر اسلم وانی، سینئر لیڈران میاں الطاف احمداور حاجی غلام قادر آخون نے بھیسوگوار کنبے سے تعزیت کی۔
 
 
 

ٹرانسپورٹروں کے مسائل پرغورکیاجائے:ویری 

سرینگر//پیپلزڈیموکریٹک پارٹی کے نائب صدر عبدالرحمان ویری نے حکومت پرزوردیا ہے کہ وہ جموں کشمیرکے ٹرانسپورٹروں کے مطالبات پرغور کرکے موجودہ تعطل کوپرامن طور ختم کریں۔ایک بیان میں عبدالرحمان ویری نے ٹرانسپورٹروں کی ہڑتال پر تشویش کااظہار کیااورکہا کہ اس سے معمولات زندگی ریاست بھر میں مفلوج ہوگئے جس سے کہ عام لوگوں کو پریشانیوں کاسامناکرناپڑا۔ انہوں نے کہا کہ وقت کاتقاضا ہے کہ حکومت  متاثرہ ٹرانسپورٹروں کے ساتھ بات کرکے مسائل کو مزیدکسی ٹکرائو کے بغیرحل کریں ۔انہوں نے مزیدکہا کہ ٹرانسپورٹروں کے مزید کئی اور مسائل ہیں جوانہوں نے کئی باراُٹھائیں ہیں اورحکومت کافرض ہے کہ وہ اُن کی مشکلات کوسنیں اوراُنہیں دورکرنے کی سعی کرے۔ویری نے کہا کہ صورتحال کونظراندازکرنے سے کچھ حاصل نہیں ہوگابلکہ اس سے مزیدمسائل پیدا ہوں گے اور جن کاخمیازہ عام آدمی کوبھگتنا پڑے گا۔
 
 

حج2019:کپوارہ کے عازمین کیلئے تربیتی پروگرام

کپوارہ// ترقیاتی کمشنر کپوارہ انشل گرگ کی ہدایت پر کپوارہ کے عازمین حج کے لئے 15اور17جون کو تربیتی پروگرام ترتیب دیا گیاہے۔کپوارہ،ترہگام،کرالہ پورہ،کیرن،کرناہ،مژھل،سوگام اور لالپورہ کے منتخب عازمین سے کہا گیا ہے کہ وہ 15جون کو مسجد مرشیدین میںحج تربیت میںشرکت کریں۔جبکہ ہندوارہ،زچلڈارہ،رامحال،تارتھ پورہ،لنگیٹ ،کرالہ گنڈ ،ویلگام اورقلم آباد کے عازمین کو جامع مسجد ہندوارہ میں 17جون کو تربیت فراہم ہوگی۔تربیتی عمل صبح10بجے سے شام 4بجے تک جاری رہے گا۔
 
 
 
 
 

 پلوامہ میں پریس کلب کا افتتاح 

پلوامہ// ضلع ترقیاتی کمشنر پلوامہ ڈاکٹر سید عابد رشید شاہ نے پریس کلب پلوامہ کا افتتاح کیا ۔اس موقعہ پر انہوںنے کہا کہ ضلع میں پریس کلب کے قیام سے صحافیوں کو عوامی اہمیت کے حامل معاملات اور گردونواح کے حالات وواقعات کے بارے میں تبادلہ خیال کرنے کاموقعہ فراہم ہوگا جو کہ مجموعی طور پر ضلع کے عوام کے مفاد میںہے۔ترقیاتی کمشنر نے صحافیوں پر زوردیا کہ وہ ذرائع ابلاغ میںتعلیم،صحت،پانی اور دیگر معاملات کو اُبھاریں۔انہوںنے امید ظاہر کی کہ یہ کلب عوامی معاملات کے حل کے لئے لوگو ں اور انتظامیہ کے درمیان ایک پُل کی حیثیت سے کام کرے گا اوراس کی بدولت مرکزی اور ریاستی معاونت والی سکیموں کو اجاگر کیا جاسکے گا۔اس موقعہ پر پلوامہ ورکنگ جرنلسٹ ایسوسی ایشن اورپلوامہ شوپیان ورکنگ جرنلسٹ گلڈ نے پریس کلب کے قیام کا خیر مقدم کیا اور اسے ایک تاریخی قدم قرار دیا۔
 
 
 
 
 

زیرزمین اورسطح زمین آبپاشی اعداوشمارکوترجیح دی جائے 

فائنانشل کمشنر مال کی ڈپٹی کمشنروں کوہدایت

سرینگر// فائنانشل کمشنر مال پون کوتوال نے صوبہ کشمیرکے ڈپٹی کمشنروں کو ہدایت دی کہ وہ زیر زمین اور سطح زمین کے اوپر پانی کے لئے مِنی اریگیشن سنسس کو ترجیح دیں۔اس کے علاوہ زرعی پالیسی کو تشکیل دینے کے لئے زرعی پیداوار کے اعداد فراہم کریں۔فائنانشل کمشنر مال نے ان باتوں کا اظہار ایک میٹنگ کی صدارت کرتے ہوئے کیا جو صوبہ کشمیر کے لئے چھٹے مِنی اری گیشن اور واٹر باڈیز سنسس کی پیش رفت کا جائزہ لینے کے لئے بلائی گئی تھی۔میٹنگ میں فائنانشل کمشنر نے مزید کہا کہ مِنی اری گیشن اور زرعی پیداوار کے اعداد کو زیر زمین پانی کی دستیابی کا تخمینہ لگانے کے لئے اور ریاست میں پانی کے ذخائر کو ترقی دینے کے لئے استعمال میں لایا جائے گا۔فائنانشل کمشنر مال نے ڈپٹی کمشنروں کو ہدایت دی کہ وہ اپنے علاقوں میں سٹیٹ اراضی پر ناجائز قبضہ ہٹانے کی مہم میں تیزی لائیں۔اُنہوں نے اس موقعہ پر غیر قانونی طور قبضے میں لی گئی اراضی کی نشاندہی کرنے کی ہدایت دی۔انہوں نے ڈپٹی کمشنروں کو ہدایت دی کہ وہ اپنے فیلڈ میں کام کر رہے عملے کو جواب دہ بنائیں تاکہ ناجائز طور لی گئی اراضی سے قبضہ ہٹانے میں دشواری نہ ہو۔ اُنہوں نے افسروں کو مزید ہدایت دی کہ وہ بے گھر افراد اور بغیر زمین کے کنبوں کی نشاندہی کریں اور اس سلسلے میں حکومت تجویز پیش کریںتاکہ ایسے کنبوں اور افراد کو رہائشی سہولیات فراہم کی جاسکیں۔ریوینو دفاتر اور کمپلیکسوں کی تعمیر و تجدید کے لئے پون کوتوال نے متعلقہ ڈپٹی کمشنروں کو ہدایت دی کہ وہ ریوینو انفرا سٹرکچر ڈیولپمنٹ فنڈ کو معرض و جود میں لانے کے بارے میں تجویز پیش کریں۔میٹنگ میں ڈی سی سری نگر شاہد اقبال چودھری، ڈی سی بڈگام ڈاکٹر سحرش اصغر، ڈی سی کولگام شمیم احمد وانی، ڈی سی کپواڑہ انشل گرگ ، ڈی سی شوپیاں اویس احمد و دیگر متعلقہ افسران موجود تھے۔
 
 
 

کولگام :غیر قانونی طور پر تعمیر کی گئی ،2دکانیں منہدم

کولگام// اے ڈی سی کولگام کی قیادت میں افسران کی ایک ٹیم نے مین مارکیٹ کولگام میں غیر قانونی طور تعمیر کی گئی 2دکانوں کو منہدم کیا۔یہ دونوں دکانیں آبپاشی چنل پر کھڑاکی گئی تھیں جن کی وجہ سے اندرونی رابطہ سڑکوں میں رکائوٹیں حائل ہوئی تھیں اور سینکڑوں لوگوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا تھا۔
 
 
 

گیس سلنڈردھماکہ تھایاکچھ اور؟تحقیقات کامطالبہ

ایک ہی کنبے کے5افرادکی ہلاکت کیخلاف اوڑی میں ہڑتال

ظفر اقبال

 
اوڑی//27مئی کولگامہ اوڑی میں گیس سلینڈرکے دھماکے میں ایک ہی گھر کے 5افراد کی ہلاکت کے خلاف بدھ کوقصبے میں مکمل ہڑتال کی گئی ۔اس دوران تمام دکانیں ،کاروباری ادارے اور ٹرانسپورٹ بندرہا۔ لوگ مطالبہ کررہے  ہیں کہ اس حادثے کی تحقیقات کی جائے۔مقامی لوگوں کو خدشہ ہے کہ یہ دھماکہ گیس سلینڈرسے نہیں ہواہے بلکہ اس کی وجہ کچھ اور ہوسکتی ہے ۔بازارکمیٹی اوڑی کے صدر پرویز احمدنے ’کشمیرعظمیٰ‘کوبتایاکہ یہ کیسے ممکن ہے کہ ایک چھوٹے سے گیس سلینڈرسے اتناجانی نقصان ہوجائے ۔انہوں نے کہا کہ یہ حادثہ گیس سلینڈر دھماکہ سے نہیں ہوا بلکہ کچھ اورہے۔انہوں نے کہا کہ پولیس اس واقعہ کی مکمل تحقیقات کرکے حقیقت کاکھوج لگائے۔مکان مالک محمدشفیع چالکونے بھی پولیس سے اپیل کی کہ وہ اس واقعہ کی تحقیقات کرے ۔انہوں نے کہا کہ گیس سلینڈرجوصڑف پانچ کلوکاتھا اُس کمرے میں موجود ہی نہیں تھا جہاں اُن کی اہلیہ اور بچے تھے۔انہوں نے بھی پولیس سے اپیل کی کہ وہ اس واقعہ کی تحقیقات کرے۔چالکونے مزیدکہا کہ انہوں نے سب ڈویژنل مجسٹریٹ اوڑی کوبھی تحریری طورواقعہ کی تحقیقات کرنے کی اپیل کی ہے ۔ادھر ایس ڈی پی او اوڑی معراج دین رینہ نے بتایا کہ اْنہوں نے پہلے ہی ایس ایچ او اوڑی  کی سربراہی میں تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی ہے جو اِس واقعہ کی انکوائری کر رہی ہے۔اْنہوں نے بتایا کہ اْنہوں نے جائے واقعہ سے کچھ نمونے بھی فورنسک جانچ کیلئے لیبارٹری کوبھیجے ہیں۔انہوں نے مزید بتایا کہ پوسٹ مارٹم اور فورنسک سائنس لیبارٹری  کی رپورٹ آنے کے بعد ہی مزید کچھ کہاجاسکتا ہے۔ یاد رہے کہ 17 روز قبل 27 مئی کو لگامہ اوڑی میں محمد شفیع چالکو کے گھر میں زور دار دھماکہ ہوا تھا اگر چہ ابتدائی طور مقامی لوگوں اور پولیس نے اِسے رسوئی گیس سلینڈر دھماکہ کہا تھا مگر لوحقین اور تاجروں نے اس بیان کو مسترد کیا ہے۔اس حادثے میں محمد شفیع چالکو کی 35 سالہ اہلیہ پروینہ اختراور چار بچے جن میں16 سالہ سبینہ بانو،14 سالہ شائستہ بانو،13 سالہ نازیہ بانو اور 5 سالہ عبید چالکو لقمہ اجل بن گئے جبکہ 10 سالہ اْلفت بانو ایمز میں زیر علاج ہے۔
 

۔NEET نتائج:ڈی سی پلوامہ نے کامیاب طلاب کی عزت افزائی کی

پلوامہ// ضلع ترقیاتی کمشنر پلوامہ نے ضلع میں نیٹ امتحانات میںکامیابی حاصل کرنے والے طلبأ وطالبات کی عزت افزائی کی اورانہیں توصیفی اسناد عطاکیں۔اس موقعہ پر طلبأ کے ساتھ بات چیت کے دوران ترقیاتی کمشنر نے ان کے روشن مستقبل کی امید ظاہر کی اورانہیں زندگی کے اہداف حاصل کرنے کے لئے جانفشانی اورلگن کے ساتھ کام کرنے کا مشورہ دیا۔یہ امر قابل ذکر ہے کہ ضلع میں 27طلبأ نے نیٹ امتحان میں کامیابی حاصل کی ہے ان میں طیبہ محی الدین اورکامران بھی شامل ہیں جنہوں نے بالترتیب624اور623نمبرات حاصل کئے ہیں۔
 

ہندی زبان کا استعمال اور درپیش مسائل 

سنٹرل یونیورسٹی گاندربل میں ورکشاپ

ارشاد احمد

 
گاندربل //سنٹرل یونیورسٹی کشمیر کے گاندربل کیمپس میں ’’ہندی زبان کا سرکاری طور پر استعمال اور اس کو درپیش مسائل کا حل‘‘کے موضوع پرایک روزہ تقریب کا اہتمام ہوا۔وائس چانسلرپروفیسرمعراج الدین میر، رجسٹرار پروفیسر فیاض احمد نکہ،سابق صدرراجستھان ساہتیہ اکیڈمی اودھپور ہیتو بھاردواج،سابق سربراہ ہندی کشمیر یونیورسٹی پروفیسر زہرہ افضل، ڈائریکٹر سائنس کیمپس پروفیسر افضل زرگرسمیت یونیورسٹی کے دیگر ارکان اس موقع پر موجود تھے۔ تقریب سے سنٹرل یونیورسٹی کشمیر کے وائس چانسلر پروفیسرمعراج الدین میر نے ورکشاپ کے انعقاد کے لئے ہندی شعبہ کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ لوگوں کے ساتھ موثر طریقے سے بات چیت کرنے کے لئے ہندی سمیت دیگر زبانوں کو سیکھنے کی اہمیت پر روشنی ڈالی۔انہوں نے کہا’’ہندی کے بارے میں مختلف قسم کے ملازمین کو بیدار کرنے کے لئے یونیورسٹی کا ہندی شعبہ اکثر کلاسوں کا انعقاد کر رہی ہے اور بہت سی تقریبات منعقد کرنے میں کامیاب رہا ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی کے کئی ملازم پہلے ہی پربودھ، پروین اور پرگیہ پروگراموں کو پرواز کے ساتھ منظور کر چکے ہیں۔رجسٹرار پروفیسر فیاض احمد نکہ نے کہا کہ زبانیں کسی کمیونٹی،فرقے،علاقے یا مذہب سے تعلق نہیں رکھتی ہیں بلکہ مختلف زبانوں کو سیکھ کر لوگوں کے لئے انتہائی فائدہ مند ثابت ہو سکتا ہے۔ڈائریکٹر سائنس کیمپس پروفیسر افضل زرگر نے ورکشاپ کے انعقاد کے لئے ہندی شعبہ کی تعریف کرتے ہوئے ہندی زبان سمیت دیگر زبانوں اور ان کے ادب کو سیکھنے کی ضرورت پر زور دیا۔راجستھان ساہتیہ اکادمی اودھپور کے سابق صدر پروفیسر ہیتو بھاردواج اور کشمیر یونیورسٹی کے سابق ہندی زبان کے سربراہ پروفیسر زہرہ افضل نے بعد میں تکنیکی سیشن منعقد کئے، جس میں انہوں نے ہندی کی تاریخ پر تفصیلی روشنی ڈالی ۔
 

منڈی کے وفد کی خورشید گنائی سے ملاقات

سرینگر// پونچھ ضلع کے منڈی علاقہ سے تعلق رکھنے والے ایک وفد نے بدھ کو گورنر کے مشیر خورشید احمد گنائی کے ساتھ ملاقات کر کے اپنے مطالبات اُن کے سامنے رکھے۔مولوی فرید کی قیادت میں اس وفد نے علاقہ میں بنیادی سہولیات کے نقدان سے متعلق کئی معاملات مشیر موصوف کی نوٹس میں لائے۔ انہوں نے منڈی میں حال ہی میں قائم کئے گئے گورنمنٹ ڈگری کالج کو کارگر بنانے کا مطالبہ کیا۔وفد نے ساوجیاں میں بنک شاخ قائم کرنے اور منڈی میں پی ایچ کے سب ڈویثرن کے قیام کی بھی مانگ کی۔مشیر موصوف نے وفد کو یقین دلایا کہ اُن کے تمام جائیزمطالبات مرحلہ وار بنیادوں پر پورا کئے جائیں گے۔
 

بزرگ شہریوںکی خدمات

لیگل سروسز اتھارٹی کی جانب سے گاندربل اور جموں میںتقریبات

گاندربل// ایجنگ وِد ڈگنٹی کے تحت جاری ایک ہفتے کے مہم کی مناسبت سے ٹائون ہال گاندربل میں بزرگ شہریوں کے ساتھ ناقابل قبول سلوک کی روک تھا م کے سلسلے میں 15جون کو جانکاری پروگرام کی ایک کڑی کے طور پر ایک کثیر رُخی خدمات کیمپ کا اہتمام کیا گیا۔کیمپ میں سرکردہ شہریوں کے علاوہ سینئر سٹزنز نے بھی شرکت کی۔وائس چانسلر سینٹرل یونیورسٹی کشمیر پروفیسر ڈاکٹر معراج الدین نے کیمپ کا افتتاح کیا۔اس موقعہ پر پرنسپل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز جج گاندربل،ترقیاتی کمشنر گاندربل اور ایس ایس پی پولیس گاندربل کے علاوہ سیکریٹری ڈی ایل ایس اے گاندربل بھی موجود تھے۔شرکأ نے کیمپ میں میڈیکل چیک اپ سے استفادہ کیا۔یہ سہولیت سی ایم او گاندربل کی طرف سے دستیاب رکھی گئی تھی۔تحصیل سوشل ویلفیئر آفیسر گاندربل نے بزرگ شہریوں کو مختلف بہبودی سکیموںکے بارے میں جانکاری دی۔اس دوران مستحق بزرگ شہریوں میں مصنوعی آلاتِ سماعت بھی تقسیم کئے گئے۔کیمپ سے وائس چانسلر کے علاوہ دیگر مقررین نے بھی خطاب کیا۔اُدھر ریاستی ہائی کورٹ کی چیف جسٹس اور سٹیٹ لیگل سروسز اتھارٹی کی سرپرست اعلیٰ جسٹس گیتا متل کی ہدایت پر ڈسٹرکٹ لیگل سروسز اتھارٹی جموں کے اہتمام سے جموں یونیورسٹی میں بُزرگ شہریوں اور نوجوانوں کے لئے واکا تھان کا اہتمام کیا گیا۔اس پروگرام کے اہتمام میں محکمہ سیاحت اور محکمہ صحت نے اپنا اشتراک دیا تھا۔اس موقعہ پر پرنسپل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز جج جموں ونود چیٹرجی کول بھی موجود تھے۔ اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بُزرگ شہریوں کو زندگی کے تجربات حاصل ہوتے ہیں اور ہمیں اُن کے تجربات سے سبق حاصل کرنا چاہئے تا کہ ہم ایک بہتر دُنیا کی تشکیل ممکن بنا سکیں۔ انہوں نے نوجوانوں سے تلقین کی کہ وہ بُزرگوں کے مشوروں پر عمل کریں۔اس موقعہ پر محکمہ صحت نے طبی اور نیم طبی عملے کے علاوہ ایمرجنسی ادویات اور ایمبولنس گاڑیاں بھی دستیاب رکھی تھیں۔ پروگرام کے دوران شرکاء سے یوگا اور ورزش کرائی گئی۔دریں اثنا ڈسٹرکٹ لیگل سروسز اتھارٹی کے چیئرمین نے اس واکا تھان میں شرکت کرنے والے70 سال سے زائد عمر کے کئی بُزرگ شہریوں کی عزت افزائی کی۔
 

ریاست کے میڈیکل کالجوں میں ایم بی بی ایس کورس

۔200نشستوں کے اضافے کومنظوری 

سرینگر //ریاست کے میڈیکل کالجوں میں ایم بی بی ایس کورس کیلئے مزید200نشستوں کے اضافہ کئے جانے کومنظوری ملی ہے جن میں سے100نشستیں سماجی طورکمزوراورپسماندہ طبقوں کے طلباء کیلئے مخصوص ہوں گی۔سرکاری ذرائع نے بتایا کہ یہ خبرحالیہ نیٹ امتحان میں ریاست کے کامیاب اُمیدواروں کیلئے ایک خوشخبری ہے۔
 

 پی ڈی پی کا شوکت جان کی وفات پراظہار دکھ

سرینگر//پیپلزڈیموکریٹک پارٹی نے معروف سماجی کارکن شوکت جان کے انتقال پر دکھ کااظہار کیا ہے ۔پارٹی ترجمان کے مطابق پی ڈی پی کے ایک اعلیٰ سطحی وفد نے ممبرقانون سازکونسل کی قیادت میں مرحوم کے گھرجاکر پسماندگان کی ڈھارس بندھائی۔اس موقعہ پر خورشیدعالم نے مرحوم کی سماجی خدمات کاتذکرہ کیا۔