تازہ ترین

کٹھوعہ عصمت دری و قتل معاملہ:متعدد انجمنوں نے عدالتی فیصلے کو سیاسی رنگت دینے والوں کیلئے بڑا دھچکا قرار دیا،تحقیقاتی ٹیم کی ستائش

12 جون 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک

سکھ انجمنوں کی مشترکہ پریس کانفرنس 

جموں / /متعددسکھ یونائیٹڈ انجمنوں نے رسانہ عصمت ریزی و قتل معاملہ میں فیصلہ کی سراہنا کرتے ہوئے تحقیقاتی ایجنسی کی جانب سے پیشہ وارانہ کام انجام دینے پر ستائش کی ہے۔منگل کے روز یہاں متعدد سکھ تنظیموں کی جانب سے منعقدہ ایک مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین سکھ یونائیٹڈ فرنٹ سدرشن سنگھ وزیر نے کہا کہ رسانہ عصمت ریزی اور قتل معاملہ میں تاریخی فیصلہ ان لوگوں کے لئے ایک بڑا دھچکا ہے ،جو 8  سال کی بچی کے ساتھ ہوئے خطر ناک فعل کو سیاسی رنگت دینے کی کوشش کر رہے تھے،جسے تین روز تک بند کرکے اذیتیں دی گئی۔وزیر نے حال ہی میں میرٹھ میں اڑھائی سال کی بچی کی بے رحمی سے قتل کی بھی مذمت کی ۔انہوںنے اس واقعہ میں روزانہ کی بنیادوں پر سماعت ہونی چاہیے اور انہیں سزائے موت دی جانی چاہیے تاکہ لوگ عبرت کھائیں اورمستقبل میں ایسے واقعات کو روکا جاسکے۔ انہوں نے دیگر تمام سکھ انجمنوں کے نمائندوں کے ہمراہ متاثرہ کنبہ کے ساتھ مکمل ہمدردی کاا ظہار کیا۔پریس کانفرنس کے دوران وزیر نے جے اینڈ کے کرائم برانچ کی جانب سے معاملہ کی تحقیقات پیشہ وارانہ طریقہ سے انجام دینے کی بھی ستائش کی۔انہوں نے ریاستی سرکار پر RPC میں ترمیم کرکے اس میں دفعہ 376 A اور B شامل کرنے پر زور دیا،جس کی رو سے ایسے جرائم میں ملوث 12 سال کی عمر سے کم بچوں کو بھی سزائے موت ہو جائے۔وزیر نے سماج کے تمام طبقوں کو رسانہ واقعہ کو اجا گر کرنے کیلئے دھرنے دینے اور کینڈل مارچ  وغیرہ نکالنے کی بھی سراہنا کی،جس سے یہ معلوم ہوتا ہے کہ ہر ایک کے بھارت میں ابھی بھی انسانیت زندہ ہے۔انہوں نے کہا کہ تمام سکھ تنظیمیں اس واقعہ میں انصاف دلانے کے لئے پیش پیش تھیں ۔پریس کانفرنس میںشرومنی اکالی دل کے صدر دربیندر سنگھ ،جے اینڈ کے موٹر ٹرانسپورٹ ایسو سی ایشن کے چیئرمین ایس سریندر سنگھ کالہ ، بھائی کنہیا نشکام سوسائٹی کے مہندر سنگھ، چیر مین سکھ ویلفیئرسوسائٹی کے ایس گجن سنگھ ، سکھ نوجوان سبھا کے ایس سرجیت سنگھ، یوتھ اکالی دل کے ایس ہرپریت سنگھ ،استری اکالی دل کی سردارنی کلدیپ کور، سابقہ سرپنچ سردارنی گورمیت کور، اور استری اکالی دل کے جنرل سیکرٹری ایس پرمجیت سنگھ ،مشیر ایس اے ڈی ایس راجا سنگھ ،اے آئی ایس ایس ایف کے ایس ہرپریت سنگھ لکی بھی شامل تھے۔پریس کانفرنس میں ہزارا سنگھ ، ایس رویندر سنگھ ، ایس کلدیپ ملک،راجندر سنگھ،کلونت سنگھ،منموہن سنگھ،چیئرمین گول گجرال سنگھ سبھا،جگجیت سنگھ،کلتار سنگھ،گوردیو سنگھ،رسبیر سنگھ،تیج پال سنگھ وغیرہ بھی موجود تھے۔

گوجر دیش چیر ی ٹیبل ٹرسٹ 

جموں //گوجر دیش چیریٹیبل ٹرسٹ نے رسانہ عصمت ریزی وقتل میں عدالت کے فیصلہ کی سراہنا کی ہے۔ اس سلسلہ میںٹرسٹ کی جانب سے ایک پریس کانفرنس کے دوران بتایا گیا کہ ٹرسٹ نے اس بارے میں ایک غیر معمولی اجلاس اکا ہتمام کیا گیا ،جس میں ملک کے عدلیہ پر اطمینان کا اظہار کیا گیا ۔بیان میں عدالت کی جانب سے اس معاملہ میں مثالی سزا سنانے پرخوشی کا اظہار کیا گیا ۔انہوں نے کہا کہ پٹھانکوٹ عدالت نے8 سالہ بچی کے ساتھ ہوئی عصمت ریزی اور قتل میں ملوث 6 مبینہ ملزمان بشمول سرغنہ کو سزا سنائی ہے ۔ گوجر دیش چیریٹیبل ٹرسٹ کے چیر مین چودھری عبدل حمید نے کہا کہ ہر ایک کو بھارتی عدلیہ پر اعتماد ہونا چاہیے ۔ انہوں نے کہا  ملزمان نے8  سال کی بچی کے ساتھ ہوئے خطر ناک فعل کو سیاسی رنگت دینے کی کوشش کر رہے تھے،جسے تین روز تک بند کرکے اذیتیں دی گئی ۔ تاہم ،انہوں نے کہا کہ یہ بد قسمتی کی بات ہے کہ چند عناصر نے اس واقعہ کر فرقہ وارانہ رنگت دینے کی کوشش کی تھی لیکن عدلیہ کی مداخلت سے متاثرہ کنبہ کو انصاف مل ہی گیا ۔انہوں نے کہا کہ سول سوسائٹی کو بلا لحاظ سیاسی الحاق کے کام کرنا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ ایسے واقعات کے ساتھ مذہب کو نہیں جوڑنا چاہیے ،ٹرسٹ کے جنرل سیکرٹری چودھری بشیر احمد نون ، خزانچی محمد یوسف کھیپر و دیگر ممبران نے بھی میڈیا سے خطاب کیا ۔ 

جموں مسلم فرنٹ  

جموں//جموں مسلم فرنٹ نے رسانہ معاملہ میں پنجاب کی عدالت کے تواریخی فیصلہ اور مبینہ ملزمان کا مثالی سزا سنانے کی سراہنا کی ہے۔ایک بیان میںفرنٹ کے چیئر مین ظفر نے کہا کہ یہ فیصلہ ان لوگوں کیک شکست ہے جو اس معاملہ کو سبوتاج کرنے کی کوشش کر رہے تھے۔انہوں نے کہا کہ اس معاملہ کی تحقیقات کرنیوالے پولیس اہلکاروں کی ٹیم کو انعام دینے کا مطالبہ کیا جنھوں نے پیشہ وارانہ تحقیقات سے انصاف کی علم بلند رکھی۔انہوں نے بھارت سرکار سے انصاف کی راہ میں روکاوٹ ڈالنے والوں کے خلاف سخت کاروائی کرنے کی اپیل کی۔فرنٹ کے صدر عمران قاضی ،جنرل سیکرٹری محمد صادق، نائب صدر تنویر وانی نے بھی ریاست کے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ سیاسی کیفیت سے بالاتر ہو کر برائیوں سے پاک ایک سماج تعمیر کرنے کی اپیل کی اور ایک ایسا سازگار ماحول تیار رکنے کی اپیل کی ،جس سے بھائی چارے کو استحکام ملے گا۔ فرنٹ کے صدر عمران قاضی نے مزید کہا ہے کہ اب یہ دیکھناہوگا کہ بی جے پی ان لوگوں کے ساتھ کیا سلوک کرتی ہے جنھوں نے قومی ترنگا لیکرسا معام،ہ کو سبوتاج کرنے کی کوشش کی تھی ۔انہوں نے کہا کہ اس معاملہ میں بغاوت کرنے والوں پر معاملات درج کئے جانے کی ضرورت ہے۔

 وفا فائونڈیشن

جموں // وفا فائونڈیشن نے رسانہ معاملہ میں پٹھانکوٹ عدالت کے فیصلہ کا خیر مقدم کیاہے ۔ایک پریس بیان میںفائونڈیشن کے چیئرمین پرویز وفا نے پٹھانکوٹ عدالت کی جانب سے رسانہ عصمت ریزی و قتل معاملہ میں 7 میں سے6 مبینہ ملزماں کو سزا سنانے کے فیصلہ کا خیر مقدم کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہر ایک کو بھارتی عدلیہ پر اعتماد ہونا چاہیے ۔ انہوں نے کہا کہ جرم بلا لحاظ ذات، رنگ و نسل جرم ہی ہے ۔ تاہم ،انہوں نے کہا کہ یہ بد قسمتی کی بات ہے کہ چند عناصر نے اس واقعہ کر فرقہ وارانہ رنگت دینے کی کوشش کی تھی لیکن عدلیہ کی مداخلت سے متاثرہ کنبہ کو انصاف مل ہی گیا ۔انہوں نے کہا کہ سول سوسائٹی کو بلا لحاظ سیاسی الحاق کے کام کرنا ہوگا۔انہوں نے کہا کہ جُرم تو جُرم ہی ہے جسکی ہر ایک کو مذمت کرنی چاہیے۔انہوں نے کہا کہ ایسے واقعات کے ساتھ مذہب کو نہیں جوڑنا چاہیے ،ریاست کے لوگوں کو کسی بھی قیمت پر ہمیشہ اتحاد و اتفاق قائم رکھنا چاہیے ،تاکہ مستقبل میں بھی بد دیانت عناصر کے ناپاک عزائم ناکام ہو جائیں۔پرویز نے سابقہ وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی جانب سے اس معاملہ میں پوری حمایت دینے کی بھی ستائش کی۔انہوں نے بھارت سرکار سے ملک میں ایسے واقعات پر قابو پانے کیلئے عصمت ریزی کے معاملات میں سزائے موت کا اعلان کرنے کی اپیل کی ہے۔