تازہ ترین

ملک میں مودی کی سونامی

بھاجپا اور اتحادی جماعتوں کی تاریخ ساز فتح

24 مئی 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک

  کانگریس سمیت اپوزیشن پارٹیاں تنکوں کی طرح بہہ گئیں، راہل بھی امیٹھی نشست ہار گئے

 
نئی دہلی // لوک سبھا انتخابات کے دوران بھاجپا اور اسکی حلیف پارٹیوں نے خاموش سونامی میں اپوزیشن پارٹیوں کو کراری شکست دیکر دوسری مرتبہ دلی کے تخت پر براجمان ہونے کا راستہ صاف کردیا ہے۔خاموش سونامی کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ2014کے انتخابات کے مقابلے میں بی جے پی نے اپنی نشستوں کی تعداد میں 21سیٹوں کا اضافہ کردیا اور یوں کل ملا کر بھاجپا اور اسکے اتحادی جماعتوں نے 354نشستیں اپنی جھولی میں ڈال دیں۔جبکہ کانگریس کے کھاتے میں کوئی خاطر خواہ اضافہ نہیں ہوسکا اور پارٹی نے محض 51نشستیں حاصل کیں جو پچھلے چنائو کے مقابلے میں صرف 7سیٹیں زیادہ ہیں۔جبکہ دیگر پارٹیوں کے حق میں 98نشستیں آئیں جو 2014چنائو کے مقابلے میں 9 نشستیں کم ہیں۔راہل گاندھی اپنی خاندانی نشست امیٹھی بھی ہار گئے  اور انہوں نے اپنی ہار بھی تسلیم کرلی ہے۔3ماہ قبل راجستھان، مدھیہ پردیش اور چھتیس گڑھ میں کانگریس نے اسمبلی انتخابات میں بھاجپو کو شکست دی تھی لیکن کل کے نتائج میں ان تینوں ریاستوں میں کانگریس کو بدترین شکست سے دوچار ہونا پڑا۔اتر پردیش جہاں ایس پی اور بی ایس پی نے مشترکہ اتحاد قائم کیا تھا، بھاجپا کو کوئی خاص نقصان نہیں پہنچا سکے اور مہا گٹھ بندھن نے15نشستیں حاصل کی۔مودی کی خاموش سونامی نے اتر پردیش، جھارکھنڈ،ہماچل پردیش، ہریانہ، راجستھان، مدھیہ پردیش، چھتیس گڑھ ،بہار، کرنا ٹک،مہاراشٹرا، آسام، آندھرا پردیش،حتیٰ کہ مغربی بنگال میں بھی بھاجپا نے فتح کے جھنڈے لہرائے۔اسے علاوہ شمال مشرقی ریاستوں میں بھی بھاجپا نے اپنے حریفوں کو چت کردیا۔راہل گاندھی نے کانگریس کی سربراہی سے دستبرار ہونے کی پیشکش کی ہے۔انہوں نے بھاجپا کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ وہ اپنی ہار تسلیم کرتے ہیں۔ لوک سبھا انتخابات میں بھارتیہ جنتا پارٹی کی زبردست جیت کے بعد وزیراعظم نریندر مودی مکمل اکثریت کے ساتھ دوسری بار حکومت بناکر تاریخ رقم کریں گے ۔ وہ ایسا کرنے والے ملک کے تیسرے اور پہلے غیرکانگریسی لیڈر ہوں گے ۔ ملک کی پارلیمانی تاریخ میں گزشتہ پانچ دہائی میں یہ پہلا موقع ہے جب کسی وزیراعظم کی قیادت میں مسلسل دوسری مرتبہ مکمل اکثریت والی حکومت بننے والی ہے ۔ اس سے پہلے ایسا 1971میں اس وقت کی وزیراعظم اندراگاندھی کی قیادت میں ہوا تھا۔ مودی یہ ریکارڈ بنانے والے پنڈت جواہر لال نہرو اور اندرا گاندھی کے بعد تیسرے اور پہلے غیرکانگریسی لیڈر ہیں۔