تازہ ترین

خانقاہ فیض پناہ ترال میں آتشزدگی کا پُر اسرارواقعہ

مجسٹرئیل انکوائری کے احکامات صادر،عبوری کمیٹی تحلیل

15 اپریل 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

سید اعجاز
 
ترال//خانقاہ فیض پناہ ترال میں پر اسرارآتشزدگی واردات کے بعد لوگوں نے واقعہ کے خلاف احتجاج کیا۔واقعہ کی مجسٹریل انکوائری کے احکامات صادر کئے گئے ہیں اور تحصیلدار کو ایک ہفتے کے اندر اپنی رپوٹ پیش کرنے کے لئے کہا گیا ہے۔ادھر عبوری اوقاف کمیٹی کو تحلیل کردیا گیا ہے۔ترال بالا میں قائم خانقاہ فیض پناہ ترال میںآتشزدگی کی پر اسرارواردات کے خلاف اتوار کو لوگوں نے زیارت شریف کے صحن میںجمع ہو کر زوردار احتجاج کیا۔ احتجاج میں مختلف طبقہ ہائے فکر سے تعلق رکھنے والے لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کر کے تحقیقات کا مطالبہ کیا۔اس دوران ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ترال شبیر احمد رینہ نے یہاں پہنچ کر احتجاج میں شامل لوگوں کو یقین دلایا کہ اس حوالے سے مجسٹریل انکوائری شروع کی گئی ہے جس کے لئے تحصیلدار ترال غلام رسول بٹ کو انکوائری افسر تعینات کیا گیا ہے جو ایک ہفتے کے اندررپورٹ انتظامیہ کو پیش کریں گے۔انہوں نے احتجاج میں شامل لوگوں کویقین دلایاجو بھی اس میں ملوث ہو گا اسکے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔اس دورا ن ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر نے بعد میں ایک ہنگامی میٹنگ طلب کی جس میں علاقے کے مختلف سماجی،اور رضا کار تنظیموں کے ساتھ ساتھ ادارہ اوقاف اسلامیہ ہمدانیہ کے تمام عہدیدار بھی موجود تھے۔میٹنگ میں مختلف معاملات زیر بحث آئے جس میں عبوری اوقاف کمیٹی کو تحلیل کر کے نئی عبوری کمیٹی کچھ مدت کے لئے عمل میں لائی گئی۔جبکہ میٹنگ میں زیارت شریف میں سی سی کیمرے نصب کرنے کے علاوہ چاروں اطراف فینسنگ اور خانقاہ کی حفاظت کے لئے پولیس کی اضافی نفری تعینات کرنے کا فیصلہ بھی کیا گیا۔قابل ذکر بات یہ ہے کہ خانقاہ فیض پناہ ترال دسمبر1997 میں بھی آگ کی ایک پر اسرار واردات میں مکمل خاکستر ہوا تھا جس کو بعد میں نئے سرے سے تعمیر کیا گیا۔