وادی میں اقتصادی بحران جیسی صورتحال:کے ٹی ایم ایف

واجب الادا رقومات کی ادائیگی کیلئے بات چیت لازمی

3 اپریل 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

نیو ڈسک
سرینگر// کشمیر ٹریڈرس اینڈ مینوفیکچرس فیڈریشن نے وادی کو اقتصادی و مالی طور کمزور کرنے کی پالیسی نا قابل قبول قرار دیتے ہوئے ٹھیکیداروں کی واجب الادا رقومات کو واگزار کرنے کا مطالبہ کیا۔کے این ایس کے مطابق کشمیر ٹریڈرس اینڈ مینوفیکچرس فیڈریشن نے اس بات پر سخت تشویش کا اظہار کیا کہ ایک منصوبے کے تحت وادی کی معیشی صورتحال کو ابتر بنایا جا رہا ہے،جس کے نتیجے میں مالی بد حالی پھیلنے کا خدشہ لا حق ہوا ہے۔سرینگر میں ایک پریس کانفرنس کے دوران حاجی محمد صادق بقال نے ٹھیکیداروں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے اُنکی حمائت کا اعلان کیا۔ کے ٹی ایم ایف صدر نے ٹھیکیداروں کو یقین دلایا کہ دکاندار اور تاجر انکے شانہ بہ شانہ ہیںاور انکی آواز میں آواز ملانے کیلئے تیار ہے۔بقال نے کہا کہ1150کروڑ روپے کی واجب الادا رقم سے ٹھیکیدار ہی نہیں بلکہ ان کے ساتھ منسلک دیگر تجارتی و کاروباری شعبے بھی متاثر ہوئے ہیں،جس کے نتیجے میں ہر سو اقتصادی بحران جیسی کیفیت پیدا ہوئی ہے۔اس دوران فیڈریشن کا ایک وفد صدر محمد صادق بقال،جنرل سیکریٹری ہلال احمد شاہ اور چیف کارڈی نیٹر حاجی نثار کی قیادت میں راجباغ میں چیف انجینئرنگ دفتر میں گزشتہ15دنوں سے خیمہ زن ٹھیکیداروں کے پاس یکجہتی کے طور پر انکے ہمراہ دھرنے پر بیٹھ گیا۔