تازہ ترین

سرینگرمیں2018میں375سڑک حادثات

۔46شہری جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے،383زخمی

19 فروری 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

سٹی رپوٹر
سرینگر //محکمہ ٹریفک نے کہا ہے کہ شہر میں زیادہ تر ٹریفک حادثات تیزرفتاری ، موبائل فون کا استعمال اور ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی کی وجہ سے رونما ہوتے ہیں ۔محکمہ کے اعداوشمار کے مطابق 2018میں شہر سرینگر میں 375سڑک حادثات رونما ہوئے جس کے نتیجہ میں 46شہری  ہلاک اور 383زخمی ہوئے ۔ آئی جی پی ٹریفک الوک کمار نے نوجوانوں پر زور دیا ہے کہ وہ گاڑیاں اور ٹو ویلر چلانے کے دوران سیٹ بلٹ اورہیلمٹ کا استعمال کریں اور ٹریفک قوانین کے مطابق ہی گاڑیوں کو چلائیں ۔ کشمیر عظمیٰ کے ساتھ بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ شہر میں چلنے والی نجی گاڑیوں کے مالکان سیٹ بلٹ کا استعمال نہیں کرتے ہیں جبکہ دو پہیوں والے موٹر سائیکل چلنے والوں کیلئے لازمی ہے کہ وہ ہیلمٹ کا استعمال کریں مگرلوگ ایسا نہیں کرتے ہیں ۔انہوں نے نوجوانوں پر زور دیا ہے کہ وہ موٹر سائیکل اور سکوٹی چلانے کے دوران ہیلمٹ کا استعمال کریں اور ساتھ میں کرتب بازی سے بھی پرہیز کریں ۔انہوں نے کہا کہ گاڑیوں کو تیز رفتاری سے نہ چلائیں اور گھر سے گاڑی پر چڑھنے سے قبل اُس بات کا خیال رکھیں کہ اُن کے پیچھے اُن کے بچے اور دیگر گھر والے اُن کے انتظار میں رہتے ہیںوہ اپنے لئے نہ سہی بلکہ اپنے اہل وعیال کیلئے گاڑیوں کو مخالف سمت سے چلانے میں گریز کریں ۔انہوں نے کہا کہ محکمہ ٹریفک ہر بار یہ جانکاری فراہم کرتا رہتا ہے کہ ڈرائیور گاڑیاں چلانے کے دوران موبائل فون کا استعمال نہ کریں ۔انہوں نے کہا کہ اکثر یہ دیکھا گیا ہے کہ سب سے زیادہ سڑک حادثات ٹریفک قوانین کی خلاف ورزیوں کی وجہ سے ہوتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ محکمہ ٹریفک کے اہلکار اس لئے سڑکوں پر موجود ہوتے ہیں کیونکہ انہیں لوگوں کی حفاظت کیلئے ہی تعینات کیا گیا ہے ۔