تازہ ترین

متعدد سڑکیں ہنوز بند،بارہمولہ اور اننت ناگ میںبرف پگھلنے سے گلی کوچے زیر آب

11 فروری 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

فیاض بخاری+عارف بلوچ
 بارہمولہ+اننت ناگ//شمالی قصبہ بارہمولہ میں حالیہ برف باری کے بعد کھلی دھوپ سے برف پگھلتے ہی بیشتر سڑکوں اورگلی کوچوں میں پانی جمع ہوگیا ہے جس کی وجہ سے لوگوں کو عبور و مرورمیں مشکلات درپیش ہیں۔ خواجہ باغ ، نانک بھون ،تحصیل روڑ ،مین چوک ،جدید روڑ خانپورہ ،دیوان باغ ،آزاد گنج اور دیگر علاقوں کے لوگوں کا کہنا ہے کہ جمع شدہ پانی کی نکاسی کا کوئی انتظام نہ ہونے کی وجہ سے وہ اپنے گھروں میں محصور ہوکر رہ گئے ہیں۔ انہوں نے کہا ہے کہ ضلع انتظامیہ سے گزارشوں کے باوجود ڈرنیج سسٹم نہیں کیا جارہا ہے۔ ادھر سرینگر مظفرآباد شاہرہ کئی جگہوں پر  سڑک کی خستہ حالی کی وجہ سے ناقابل آمدورفت بن گئی ہے جبکہ سنٹ جوزف اسکول سے لیکر خانپورہ تک شاہراہ پر جگہ جگہ گہرے کھڈ بن چکے ہیں جو برف پگھلنے کی وجہ سے جھیل کا منظر پیش کررہے ہیںاورمسافروں وٹرانسپورٹروں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔لوگوں نے ضلع انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ اس معاملے کی طرف خصوصی توجہ دی جائے تاکہ عوام کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔ ضلع کے سلطان پورہ ،راجپورہ ،ددھ بگ ،گوہن ،پچہار ،نوگام ،کٹیا ولی کے لوگوں کا کہنا ہے کہ انتظامیہ یہاں سے برف ہٹانے میں پوری طرح ناکام ہے ۔انہوں نے بتایا کہ اگر چہ لوگوں نے کئی مرتبہ متعلقہ محکمہ کو اس معا ملے کو لیکر مطلع کیا تاہم اس کی طرف کوئی دھیان نہیں دیا گیا ہے۔حاجی بل بارہمولہ اور گلی بل رفیع آبادکے لوگوں کا کہنا ہے کہ ان دیہات میں  6 سے 7 فٹ برف موجود ہے جس کے نتیجے میں وہ تحصیل ہیڈکواٹر سے ابھی تک منقطع ہیں اورتمام تر بنیادی سہولیات سے محروم ہیں۔حاجی بل میں فارق احمد شاہ نامی شہری کے رہائشی مکان  کی چھت کو بھاری برف باری کی وجہ سے نقصان پہنچا جس کے نتیجے میں متاثرہ کنبہ کھلے آسمان تلے زندگی بسر کرنے پر مجبور ہو گیا ہے ۔نارواو بارہمولہ کے زنڈ فرن ،پالہ دھجی ،گوری وان ،ونسرن ،کالے بن ،گلستان ،ڈانگر پورہ اور دیگر دیہات کے لوگوں کا کہنا ہے کہ انتظامیہ نے ان دیہات کو جانے والی سڑکوں سے ابھی بھی برف ہٹانے میں کوئی خاص اقدام نہیں کیا۔ادھر برف پگھلنے کے ساتھ ہی اننت ناگ قصبہ کی سڑکیں اور گلی کوچے زیر آب آگئی ہیں جس کے سبب عوام مشکلات سے دوچار ہے۔ناقص ڈرینج سسٹم کی وجہ سے تمام سڑکیں ندی نالوں کا منظرپیش کرچکی ہیں ۔قصبہ کے لالچوک،جنگلات منڈی،ریشی بازار،مٹن اڈہ ،گانجی واڈہ سمیت تمام معروف اور مصروف ترین بازار اور نشیبی علاقوں میں پانی جمع ہونے کے سبب لوگوں کو چلنے پھرنے میں مشکلات درپیش ہیں  ۔ٹریڈرس و مینو فیکچرر س ایسوسی ایشن اننت ناگ کے جنرل سیکریٹری سجاد احمد حکیم نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ2014میں آئے تباہ کن سیلاب کے سبب قصبہ کا ڈرینج سسٹم پوری طرح ناکارہ ہوگیا ہے اور 4سال گذرنے کے بعد بھی ڈرینج سسٹم کو ٹھیک نہیں کیا گیا۔اُنہوں نے انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ وہ لوگوں کے مشکلات کو مدنظر رکھ ڈرینج سسٹم کو بہتر بنانے کے لئے سنجیدہ اقدامات کریں ۔