تازہ ترین

کرناہ ،کیرن ،گریز اور مژھل کی سڑکیں ہنوز بند

ضروری اشیاء کی قلت اور ادویات نایاب ،عوام پریشان

10 فروری 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

اشفاق سعید
سرینگر //حالیہ برف باری سے بند ہوئی کرناہ ،کیرن، مژھل اور گریز کی سڑکوں سے برف نہ ہٹانے کے سبب اُن علاقوں میں مقیم آبادی کی زندگیاں اجیرن بن چکی ہیں اور اُن علاقوں کی آبادی گذشتہ ایک ماہ سے گھروں میں محصور ہیں۔انہوں نے انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ سڑکوں کو کھول کر اُن کیلئے غذائی اجناس پہنچایا جائے۔ان علاقوں میں دکانوں پر ضروریات کی چیزوں کی قلت ہے، دالیں، سبزیاں، پھل ، مرغ اور گوشت تودور کی بات معصوم بچوں کیلئے دودھ تک نہیں مل رہا ہے ۔اسی طرح ادویہ دکانوں پر کئی اہم اور ضروری ادویات بھی نایاب ہو چکی ہیں ۔کرناہ میں سنیچر کو بیوپار منڈل نے احتجاج کیا اور سرکار سے مطالبہ کیا ہے کہ کرناہ کپوارہ شاہراہ کو کھولنے کے اقدامات کئے جائیں۔بیوپار منڈ ل کے کارکنان کا کہنا ہے کہ اس وقت چوکی بل کپوارہ میں کرناہ کی کئی گاڑیاں جن میں مال لدا ہوا ہے تباہ ہو رہا ہے جبکہ سینکڑوں مسافر بھی کپوارہ اور چوکی بل میں در در کی ٹھوکریں کھا رہے ہیں ۔کیرن اور مژھل کی حالت بھی اس سے مختلف نہیں ہے ۔یہاں کے لوگوں کو تو انتظامیہ نے حالات کے رحم وکرم پر چھوڑا ہے۔ یہ علاقے مسلسل ایک ماہ سے پوری دنیا سے کٹ کر رہ گے ہیں ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ انہوں نے کئی بار بیکن حکام سے مطالبہ کیا کہ سڑکوں کو کھولا جائے لیکن اُن علاقوں کے لوگوں کو حالات کے رحم وکرم پر چھوڑا گیا ہے اور اُن کی جانب کوئی دھیان نہیں دیا جاتا ۔لوگوں نے گورنر اور صوبائی انتظامیہ سے مانگ کی ہے کہ ان سڑکوں کو بحال کر کے لوگوں کی مشکلات کا ازلہ کیا جائے ۔