تازہ ترین

جنوبی کشمیر میں تیسرے روز بھی معمول کی زندگی درہم برہم

10 فروری 2019 (00 : 01 AM)   
(   عکاسی: عارف بلوچ    )

عارف بلوچ
اننت ناگ//تباہ کن برف باری کے سبب جنوبی ضلع اننت ناگ میں ہفتہ کو بھی معمول کی زندگی پوری طرح درہم برہم رہی ۔ضلع کے کئی علاقوں میں لوگوں نے بجلی اورپانی کی عدم دستیابی اور سڑکوں سے برف نہ ہٹانے پر برہمی کا اظہار کیا ہے ۔ضلع کے اچھ بل ماگرے پورہ کے لوگوں نے رابط سڑک سے برف نہ ہٹانے کا الزام عائد کرتے ہوئے محکمہ آر اینڈ بی کے خلاف احتجاج کیا ہے ۔مظاہرین نے کہا کہ محکمہ لوگوں کو راحت پہنچانے میں مکمل طور پر ناکام ہوا ہے ۔بٹہ گنڈ ویری ناگ کی رابطہ سڑک بھی برف سے ہنوز ڈھکی ہے ،جس کے سبب آبادی کو عبور و مرور میں مشکلات درپیش ہیں ۔اُدھر کانچلو کنڈ کے لوگوں نے انتظامیہ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ علاقہ کی تمام رابط سڑکیں برف سے ہنوز ڈھکی ہیں جس کے سبب دردرزہ میں مبتلا ایک خاتون کو کئی کلومیٹر چار پائی پر اسپتال پہنچایا گیا ۔زملگام ڈورو کے لوگوں نے علاقے میں پینے کے پانی کی قلت کی شکایت کرتے ہوئے محکمہ پی ایچ ای کے خلاف سخت برہمی کا اظہار کیا ہے ۔مقامی لوگوں نے کہا کہ وہ پانی کیلئے برف کا استعمال کرتے ہیں ۔اُدھر ہالپورہ وائلو کے لوگوں نے سڑکوں سے برف نہ ہٹانے کی شکایت کرتے ہوئے کہا کہ وہ لوگ گذشتہ چار روز سے گھروں کے اندر محصور ہو کر رہ گئے ہیں ۔اُنہوں نے انتظامیہ سے علاقہ میں فوری طور برف ہٹانے کی اپیل کی ہے ۔کانچون کوکر ناگ میں برف باری کے نتیجے میں بشیر احمد کھٹانہ کا رہائشی مکان تباہ ہو گیا ہے ،جس کے سبب افراد خانہ کھلے آسمان تلے آگئے ہیں ۔متاثرین نے انتظامیہ سے فوری امداد کی اپیل کی ہے ۔اس بیچ ساگام رسیونگ اسٹیشن کے تحت آنے والے علاقے گذشتہ دو روز سے گھپ اندھیرے میں ہیں ۔محکمہ کے مطابق ترسیلی نظام میں نقص پیدا ہونے کے سبب اسٹیشن سے برقی رو بحال کرنا ناممکن ہوگیا ہے ،تاہم بجلی بحال کرنے کی کوشش جاری ہے ۔انسانی جذبہ کے تحت شاہراہ پر درماندہ ترک ڈرائیوروں کو مفت روشن فراہم کرنے کی غرض سے لیوڈورہ ،ٹول پوسٹ قاضی گنڈ کے لوگوں نے مفت لنگر قائم کرکے درماندہ ٹرک ڈرائیوروں و کنڈیکٹروں میں مفت غذائی اجناس تقسیم کی ہے ،جس پر درماندہ ڈرائیوروں نے شکریہ ادا کیا ہے ۔