تازہ ترین

خنزیری بخار: 4ماہ میں 16اموات، سکمز میں12مریض ابھی بھی زیر علاج

10 فروری 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

اشفاق سعید
سرینگر //سرینگر// شیر کشمیر انسٹی چیوٹ آف میڈیکل سائنسز صورہ میں اکتوبر2018 سے اب تک NIHIسوائن فلو نامی بیماری کی لپیٹ میں آکر 16افراد کی موت واقع ہوئی ہے۔ ہسپتال انتظامیہ کا کہنا ہے کہ رواں سردیوں میں اگرچہ ہسپتال میں تشخص کرانے والے مریضوں کی تعداد زیادہ درج کی گئی تاہم اموات کم ہوئی ۔ہسپتال ذرائع کا کہنا ہے کہ اکتوابر سے اب تک ہسپتال میں 993مریضوں کی تشخص کی گئی جس میں سے 740مریضوں کے ٹیسٹ منفی آئے اور 253مریضوں کے ٹیسٹ مثبت آئے ۔ذرائع نے مزید بتایا کہ اس سال اس بیماری میں مبتلا 96مریضوں کو علاج ومعالجہ کیلئے ہسپتال میں بھی داخل کرنا پڑاجبکہ 12مریض ابھی بھی ہسپتال میں زیر علاج ہیں ۔ذرائع کے مطابق اس عرصے کے دوران 16افراد کی موت واقع ہوئی ہے ۔ہسپتال حکام کے مطابق جن مریضوں کی موت واقع ہوئی وہ دیگر کئی مہلک بیماریوں میں بھی مبتلا تھے ۔اسپتال حکام کے مطابق اس سال اگرچہ ہسپتال میں ٹیسٹ کرانے آئے زیادہ افراد کی رپورٹ مثبت آئے تاہم انتظامیہ نے سب کا بہتر طریقے سے علاج کر کے انہیں گھروں کو روانہ کیا اور گذشتہ سال کے مقابلے میں اس سال اموت میں بھی کمی آئی ہے ۔پچھلے سال اس بیماری میں مبتلا وادی کے 28افراد کی موت واقع ہوئی تھی ۔ ادھر کے ایس ایم ایچ ایس ہسپتال میں ایسے کسی بھی مریض کی موت نہیں ہوئی ہے ۔اسپتال کے میڈیکل سپرڈنڈنٹ ڈاکٹر سلیم ٹاک نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ اسپتال میں بہت سے لوگ تشخص کیلئے آئے تھے اور سب کے ٹیسٹ منفی آئے اور اس طرح ہسپتال میں کس بھی ایسے مریض کی موت واقع نہیں ہوئی ہے ۔