تازہ ترین

گورنر کا بیا ن مضحکہ خیز:انجینئر

مسئلہ سیر و تفریح نہیں کشمیر کی حق خود ارادیت کا

12 جنوری 2019 (00 : 01 AM)   
(      )

 سرینگر//اے آئی پی سربراہ انجینئر رشید نے گورنر ستپال ملک کی طرف سے دئے گئے اس بیان کو کہ کشمیر کا مسئلہ تیرہ سے تئیس برس کی عمر کے نوجوانوں کا ہے مضحکہ خیز قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ گورنر موصوف کا بیان نہ صرف بیہودہ ہے بلکہ پوری دنیا کو گمراہ کرنے کے مترادف ہے ۔ اپنے ایک بیان میں انجینئر رشید نے کہا ’’گورنر صاحب کو سمجھ لینا چاہئے کہ 1990ء سے اب تک کشمیریوں کی تین پیڑیاں گاجر مولیوں کی طرح صرف اس لئے کٹ رہی ہیں کیونکہ نئی دلی اپنی ضد ،ہٹ دھرمی اور ناکامیوں کو چھوڑنے کیلئے تیار نہیں ہے اور اس نے اقوام متحدہ سے لیکر شملہ تک میں صرف جھوٹ بول کر اپنے ناجائز اہداف کو حاصل کرنے کی ناکام کوشش کی ہے ۔ بلا شبہ کشمیر کس مسئلہ نوجوانوں کا مسئلہ ہے لیکن حقیقت یہ ہے کہ مسئلہ سیر و تفریح، سینما گھروں کے کھولنے ، کافی شاپوں کی عدم دستیابی یا کھیل کے میدانوں کی نایابی کا نہیں بلکہ طفیل متو، زاہد فاروق ، وامق فاروق ، عمر قیوم اور سینکڑوں ایسے ہی کھلتے ہوئے گلابوں کی جوانیاں بے رحم بندوق کے ہاتھوں چھیننے کا ہے۔ اگر واقعی گورنر موصوف کو یہاں کے بچوں کی فکر ہے تو انہیں چاہئے کہ وہ تمام تھانوں سے اعداد و شمار جمع کرکے یہ پتہ کریں کہ کتنے نابالغ بچے عقوبت خانوں کی زینت بنے ہیں اور کس طرح سینکڑوں بچوں کو فرضی کیسوں میں پھنسا کر ان کے مستقبل کو FIRکے ذریعے تاریک بنانے کی منصوبہ بند کوششیں جاری ہیں ۔ اگر واقعی گورنہ موصوف کو یہاں کے بچوں کی فکر ہے تو انہیں سرجان برکاتی، مسرت عالم ، قاسم فکتو اور ان جیسے درجنوں کشمیریوں کے بچوں کے جذبات کا لحاظ رکھتے ہوئے ان کی رہائی کو ممکن بنانا چاہئے جو کہ رات دن اُن کی جدائی میں اداس رہتے ہیں اور جن کا کوئی پرسان حال نہیں ‘‘۔ انجینئر رشید نے کہا کہ کشمیر کا مسئلہ  ہر حال میں ہندوستان کی مسلسل وعدہ خلافیوں کا نتیجہ ہے اور یہاں کے بچوں کا مستقبل خراب کرنے کی ذمہ داری نئی دلی پر عائد ہوتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ گورنر موصوف کو یہاں کے کافی ہائوسوں اور سینما گھروں کی فکر کرنے کے بجائے اس سوال کا جواب دینا چاہئے کہ اگر انہیں واقعی یہاں کے بچوں کی فکر ہے تو کب تک یہاں کے وہ اسکول ، میدان ، سرکاری دفاتر اور چراگاہیں سیکورٹی فورسز کے قبضے سے بیدخل کرائے جائیں گے جن کے ساتھ نئی پود کا مستقبل وابستہ ہے۔