جموں وکشمیر بنک کے بارے میں انتظامی کونسل کاحالیہ فیصلہ

منسوخی کے احکامات صادر کرنے کی ضرورت: حکیم

7 دسمبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

سرینگر//پیپلز ڈیموکریٹک فرنٹ کے چیرمین حکیم محمد یٰسین نے مطالبہ کیا ہے کہ ریاستی انتظامی کونسل کے جموںو کشمیر بنک کے بارے میں لئے گئے حالیہ فیصلے کے سلسلے میں حکومت کی طرف سے باضابطہ منسوخی کے احکامات اجراء کئے جانے چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ مذکورہ فیصلے کو واپس لئے جانے کے بارے میں گورنر کے زبانی بیانات سے لوگوں کے جذبات اور تشویشات کو تب تک دور نہیں کیا جاسکتا ہے جب تک نہ اس فیصلے کو منسوخ کرنے کا سرکاری حکمنامہ جاری کیا جائے۔ ایک بیان میں حکیم محمد یٰسین نے کہا ہے کہ ریاست کے لوگ جموںو کشمیر بنک کی خود مختارانہ حیثیت کو قائم رکھنے کے حق میں ہیں تاہم انہوں نے کہا کہ بنک کو RTIکے تحت جوابدہ بنایا جانا ایک ضروری امر ہے تاکہ اس کی کارکردگی میں مزید شفافیت لائی جاسکے۔ حکیم محمد یٰسین نے کہا ہے کہ جموںو کشمیر بنک کو چاہیے کہ وہ ایسے تمام بڑے بقایا دار مگر مچھوں کے بارے میں ایک وائٹ پیپر اجراء کرے جنہوں نے پچھلے 6دہائیوں سے سیاسی اثر و رسوخ کی بناء پر اربوں روپیہ کا قرضہ حاصل کرکے اس رقم کو جان بوجھ کر ہڑپ کرلیا ہے ۔ اس قدم سے عام لوگوں میں بنک کے تئیں اعتباریت اور اعتماد کو تقویت ملے گی ۔ حکیم یٰسین نے کہا ہے کہ جموںو کشمیر بنک کو سماج کے کمزور طبقے اور جسمانی طور معذور پڑھے لکھے نوجوانوں کے لئے روزگار کا مخصوص حصہ وقف کریں اور غریب لوگوں کے لئے آسان طریقے پر قرضے فراہم کریں۔ 
 

تازہ ترین