ہریانہ میں کشمیری طلباء پر حملہ

پولیس کی فوری کاروائی ،3 مقامی افراد گرفتار

7 دسمبر 2018 (00 : 01 AM)   
(   File Photo    )

اشفاق سعید
 سرینگر // ہریانہ میں ایک بار پھر کشمیر ی طلباء مقامی نوجوانوں کے تشدد کا شکار بنے ہیں جبکہ ہریانہ پولیس کا کہنا ہے کہ انہوں نے کیس درج کر کے 3 مقامی نوجوانوں کی گرفتاری عمل میں لائی ہے ۔طلباء نے گورنر انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ اُن کی حفاظت کیلئے فوری اقدامات کئے جائیں کیونکہ وہ وہاں خودکو غیر محفوظ تصور کر رہے ہیں ۔ہریانہ کے امبالہ میں ایس آ ر ایم آ ر اور ای میکس انجینئر نگ کالیج میں زیر تعلیم شیخ بابر جہاں زیب ساکن ککرناگ ،یاسر ڈار ساکن پنگلش ترال اور وارث رشید سمیت چار نوجوان جو وہاں پر کرائے کے کمروں میں رہائش پذیر تھے ،نہونی علاقے سے چاروں نوجوان کھانا کھانے کے بعد جب اپنی  نجی گا ڑی میں سوار ہو کر اپنے کا لج کی جانب جا رہے تھے کہ 15 سے زیاد ہ غنڈوں نے ٹمرولی کے مقام پر ان پر ڈنڈوں اور آ ہنی ہتھیاروں سے حملہ کیا ۔نوجوانوں نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ بنا کوئی بات سنے انہوں نے اُن پر نہ صرف ڈنڈوں بلکہ ہاتھوں میں اٹھائی ہوئی بوتلوں سے حملہ کیا جبکہ گاڑی کے شیشے بھی چکنا چور کر دیئے ۔انہوں نے مزید بتایاکہ جان بچا کر جب وہ وہاں سے بھاگ کر کالج ہوسٹل کی طرف پہنچے تو غنڈوں نے اُن کا پیچھا کرتے ہوئے کالج کے اندر بھی داخل ہونے کی کوشش کی ۔انہوں نے کہا کہ وہ اس واقعہ کے بعد بے حد پریشان ہیں اور کرائے کے کمروں کو چھوڑ کر ہوسٹل میں رہنے کو ترجیح دے رہے ہیں ۔انہوں نے مزید بتایا کہ واقعہ کے بعد انہوں نے مقامی تھانے کو فون کر کے اس حوالے سے بتایا جس کے بعد پولیس کی ایک ٹیم نے جائے واردات پر آ کر تینوں کو اسپتا ل پہنچا یا۔ اور ایک مقامی شخص کی شناخت پر تین افرا د کو حراست میںلیا گیا جس کے بعد پولیس نے حملہ آو روں کے خلاف ایک کیس زیر نمبر269/2018 تحت سکشن 323,34,341,427 اور506 درج کر کے دیگر افراد کی تلاش بڑ ے پیمانے پر شروع کردی ہے۔ مقامی پولیس کا کہنا ہے کہ ’واقعہ کی ویڈیو کلپ سے ہم اس میں ملوث لوگوں کی شناخت کرسکے، یہ تمام لوگ مقامی ہیں، تین کو گرفتار کیا گیا ہے جبکہ دیگر افراد کی شناخت بھی کی جاچکی ہے اور انہیں بہت جلد قانون کے شکنجے میں لایا جائے گا۔کشمیر عظمیٰ نے اس واقعہ کے حوالے سے جب ملانہ ہریانہ کے مقامی تھانہ کے انجارج روندر کمار سے بات کی تو انہوں نے کہا کہ بدھ کی شام کو یہ واقعہ پیش آیا جس کے بعد پولیس نے چھاپہ مار کارروائی کے دوران تین نوجوانوں کی گرفتاری عمل میں لائی ہے ۔انہوں نے کہا کہ مقامی طلبا ء اور کشمیری طلباء کی آپس میں کس بات پر لڑائی ہو گئی تھی ۔انہوں نے کہا کہ ہریانہ پولیس کشمیری طلباء کی حفاظت کیلئے ہر ممکن اقدامات کر رہی ہے اور انہیں پولیس افسران کے نمبرات بھی فراہم کئے گے ہیں تاکہ دوبارہ ایسے واقعات پیش نہ آئیں ۔ اس واقعہ کے بعد مقامی طلباء اور اُن کے والدین نے گورنر انتظامیہ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اُن کی حفاظت کو یقینی بنانے کیلئے اقدامات کریں تاکہ مستقبل میں دوبارہ ایسے واقعات رونما نہ ہوں ۔

تازہ ترین