تازہ ترین

مزید خبریں

19 نومبر 2018 (35 : 02 AM)   
(      )

نیو ڈسک

پنچایتی اِنتخابات کاچھٹا مرحلہ :  590 سرپنچ حلقوں کیلئے 1716 ، 4546 پنچ وارڈوں کیلئے 6689اُمید وار میدان میں 

جموں//پنچایتی اِنتخابات کے چھٹے مرحلے کے لئے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کے بعد 590 سرپنچ حلقوں کےلئے 1716 جبکہ 4546 پنچ وارڈوں کےلئے 6689 اُمید وار میدان میں رہے گئے ہیں۔پنچایتی انتخابات 2018 کے چھٹے مرحلے کے لئے ووٹنگ اور کاﺅنٹنگ کا عمل یکم دسمبر 2018 ءکو منعقد ہوگا۔ڈوڈہ ضلع میں 47 سرپنچ حلقوں کےلئے 195امید وار جبکہ 329پنچ وارڈوں کےلئے 683 امید وار میدان میں ہیں، رام بن ضلع میں 18 سرپنچ حلقوں کےلئے 70امید وار جبکہ 136 پنچ وارڈوں کے لئے 263امید وار میدان میں ہیں، ادھمپور ضلع میں 47سرپنچ حلقوںکےلئے 228امید وار جبکہ 367 پنچ وارڈوں کے لئے 809 امید وار میدان میں ہیں، ریاسی ضلع میں 21سرپنچ حلقوں کےلئے 76 امید وار جبکہ 181 پنچ وارڈوں کے لئے 383امید وار میدان میں ہیں ، کٹھوعہ ضلع میں 54سرپنچ حلقوں کےلئے 263امید وار جبکہ 420پنچ وارڈوں کے لئے 954امید وار میدان میں ہیں، سانبہ ضلع میں 36سرپنچ حلقوں کےلئے 149امید وار جبکہ 284 پنچ وارڈوں کے لئے 672امید وار میدان میں ہیں ، جموں ضلع میں 50سرپنچ حلقوں کےلئے 208امید وار جبکہ 406پنچ وارڈوں کے لئے 990 امید وار میدان میں ہیں، راجوری ضلع میں 58سرپنچ حلقوں کےلئے 195 امید وار جبکہ 416 پنچ وارڈوں کے لئے 797 امید وار میدان میں ہیں۔ اسی طرح پونچھ ضلع میں 32 سرپنچ حلقوں کےلئے 99امید وار جبکہ 268 پنچ وارڈوں کے لئے 483ا مید وار میدان میں ہیں۔ چھٹے مرحلے کے لئے بانڈی پورہ ضلع میں 15سرپنچ حلقوں کے لئے 19امیدوار جبکہ 107پنچ وارڈوں کے لئے 81امید وار میدان میں ہیں ، بارہمولہ ضلع میں 24سرپنچ حلقوں کے لئے 19 امید وار اور188پنچ وارڈو کے 21امید وار میدان میں ہیں، گاندبل ضلع میں 24سرپنچ حلقوں کے لئے 52امید وار جبکہ 18 پنچ وارڈوں کے لئے 144امید وار میدان میں ہیں،سری نگر ضلع میں 9سرپنچ حلقوں کے لئے 10 امید وار جبکہ 79پنچ وارڈوں کے لئے 22اُمیدوار میدان میں ہیں، بڈگام ضلع میں 25سرپنچ حلقوں کے لئے 25امیدوار اور 181پنچ وارڈوں کے لئے 110 امید وار میدان میں ہیں، پلوامہ ضلع میں 29سرپنچ حلقوں کے لئے 6 امیدوار جبکہ 229 پنچ وارڈوں کے لئے 8اُمید وار میدان میں ہیں، شوپیاں ضلع میں 11سرپنچ حلقوں کے لئے 5امید وار اور 91پنچ وارڈوں کے لئے 17امید وار میدان میں ہیں ، کولگام ضلع میں 38سرپنچ حلقوں کے لئے 32امید وار جبکہ 302 پنچ وارڈوں کے لئے 72امید وار میدان میں ہیں، اننت ناگ ضلع میں 52سرپنچ حلقوں کے لئے 65امید وار جبکہ 382 پنچ وارڈوں کے لئے 180 اُمید وار میدان میں ہیں۔
 
 
 
 

نٹرنگ نے ہندی ڈراما ’گرگٹ ‘کھیلاگیا

جموں//نٹرنگ نے یہاں رانی پارک جموں میں ہفتہ وار تھیٹرسیریزکے تحت بلونت ٹھاکرکاہدایت کردہ معروف ہندی ڈراما ’گرگٹ ‘کھیلاگیا۔اس ڈرامے کی کہانی روس کے افسانہ نگارانٹن چیکب نے لکھی ہے جس میںموجودہ سماجی وسیاسی نظام کاعکاس اوراس پرگہری چوٹ اورطنزکامظہرہے۔ڈرامے سے ظاہرہوتاہے کہ اس کی جڑیں جموں سے جڑی ہوئی ہیں ۔اس دوران ناظرین نے نٹرنگ کے اداکاروں کی طرف سے پیش کئے گئے اس ہندی ڈرامے کوبڑے پیمانے پرسراہا۔ڈراما’گرگٹ ‘ایک کتے اورایک بدعنوان پولیس افسرکے گردگھومتاہے جوگرگٹ کی طرح رنگ بدلتے ہیں اورحالات کے مطابق اپنے آپ کوہرباربدل لیتے ہیں۔سٹیج ایکشن کاآغاز کتے کی طرف سے ایک شخص کے کاٹنے سے ہوتاہے جومددکےلئے افسران کے پاس رابطہ کرتاہے تاکہ کتے کے مالک کے خلاف کاروائی ہومگرتمام کوششیں بے کارجاتی ہیں۔اسی دوران یہ پتاچلتاہے کہ کتاایک منسٹرکاہے کیونکہ اسے ایک ایساہی کتامنسٹرکے بنگلے کے گردگھومتاہوادکھائی دیتاہے ۔افسرشہری کوہراس کرتاہے اورکہتاہے کہ آپ نے ایک عزت دارکتے کے ساتھ کیوں چھیڑچھاڑ کی اورپک پاکٹ (شہری) کی پٹائی کرتاہے ۔اسی دوران مجمعے سے ایک شخص آتاہے اورکہتاہے کہ منسٹرکاکتاتوایسانہیں ہے اس نے توصرف ایک شکاری کتارکھاہواہے۔اس کے بعدکتے کی تلاش شروع ہوجاتی ہے تاکہ کتے کی طرف سے کاٹنے کامعاوضہ کادعویٰ کیاجائے۔اس کے بعدکتاملنے پراس کی پٹائی کی جاتی ہے اورپھرمنسٹرکاایک ملازم منظرنامے میں آتاہے۔پہلے تووہ کتے کوپہچاننے سے انکارکرتاہے اورپھربعدمیں شناخت ہوتی ہے کہ یہ کتامنسٹرکے بھائی کاہے جودہلی دورے پرتھا۔ اس کاکتامکمل پروٹوکول کے ساتھ واپس اسکارٹ لاتاہے۔اس دوران ڈرامے میں پولیس افسرکاکردارسوشانت چاڑک اداکرتے ہیں ،میناکشی بھگت سینئرافسرہوتی ہیں جبکہ اداکاروں میں منوج للوترہ ۔چور،شبھم سنگھ وزیرکاملازم، شبھم شرمانے کتے ،برجیش اوتارشرما ،اجے کماراورآرتی کمارتھے۔
 
 
 

بلاک متھوارکی پنچایتوں میں گہماگہمی ، انتخابی مہم جاری

اُمیدواررائے دہندگان کومائل کرنے کےلئے کوششیں جاری

طارق ابرار

جموں//تحصیل بھلوال کی بلاک متھوارکی پنچایتوں میں پنچایتی انتخابات کی مہم زوروں پرہے اوررائے دہندگان کواپنی طرف مائل کرنے اوراپنے حق میں کرنے کےلئے سرپنچ اورپنچ کے طورپرمیدان میں اُترے اُمیدوارایڑی چوٹی کازورلگارہے ہیں۔واضح رہے کہ بلاک متھوارکے تحت آنے والی 9پنچایتیں بشمول متھوار، سروٹ، گورڈہ ،بگانی،اگور،کیری ،دھنوں میں پولنگ 29 نومبرکوہوگی ۔دس دن باقی ہونے کے سبب پنچایتوں میں خوب گہماگہمی دیکھی جارہی ہے اوراُمیدواربینرس،پوسٹرس،ف لیکسز وغیرہ بنانے میں مشغول ہیں اور ووٹروں کواپنے حق میںکرنے کےلئے کوئی دقیقہ فروگذاشت نہیں کررہے ہیں۔سرپنچ ہویاپنچ اُمیدوار،اپنے اپنے طورپرلوگوں سے مختلف وعدے کررہے ہیں ۔کوئی پنچایت کوماڈل پنچایت بنانے کادعویٰ کررہاہے توکوئی لوگوں کوان کاخدمتگاربننے کاموقعہ دینے کی گزارش کررہاہے ۔اگربات کی جائے بلاک متھوارکی پنچایت دھنوں کی تواس پنچایت میں سرپنچ عہدہ کےلئے دواُمیدوارمیدان ہیں ان میں جہاں ایک طرف سماجی کارکن سائیں خان ہیں تووہیں دوسری طرف نوجوان چہرہ تنویراحمدسرپنچ بننے کےلئے بیتاب ہیں اوردونوں کی طرف سے پنچایت کے مختلف وارڈوں اورموضع جات بشمول دھنگ، دھنوں، ہنڈوال،گورسی نالہ وغیرہ میں مہم چلائی جارہی ہے ۔دونوں مضبوط امیدوارہیں اورتوقع کی جارہی ہے کہ دونوں اُمیدواروں میں کانٹے کی ٹکرہوگی ۔اس پنچایت کے وارڈوں میں بھی پنچ اُمیدوارزوروشورسے انتخابی مہم کوچلارہے ہیں۔وارڈنمبر 6 میں رشیدہ بی بی زوجہ عبدالعزیز ڈیلر اورعبدالعزیزکے مابین مقابلہ ہے ۔وارڈنمبر 7 میں محمدحنیف اورمحمدجمیل پنچ عہدہ کےلئے امیدوارہیں اوراس وارڈمیں کس اُمیدوارکی جیت ہوگی یہ کہناقبل ازوقت ہوگا۔اسی طرح وارڈنمبر 3 نالہ گورسی میں میرحسین پنچ کے طورپراُمیدوارہیں اوران کے مقابلے میں میدان میں اُترااُمیدواربھی رائے دہندگان کواپنی طرف راغب کرنے کے جتن کررہاہے تاہم ذرائع کایہ بھی کہناہے کہ میرحسین مضبوط اُمیدوارہے ۔پنچایت بگانی میں دواُمیدوار سرپنچ عہدہ کےلئے میدان میں ہیں جن میں شریفاںبی بی مضبوط دعویدارہے تاہم دوسری خاتون اُمیدوارکوبھی ہلکے میں نہیں لیاجاسکتاہے اوریہ وقت ہی بتائے گاکہ اونٹ کس کروٹ بیٹھے گاالبتہ ذرائع کے مطابق شریفاں بی بی کی جیت کے امکانات زیادہ روشن ہیں۔پنچایت بگانی کی وارڈنمبر 2 محلہ پنچایت گھرسے چمپارینہ پنچ کے طورپراُمیدوارہیں اوران کی حریف اُمیدواروں کے ساتھ سخت مقابلے کی ٹکرکاامکان بتایاجارہاہے۔اسی طرح پنچایت بگانی کی وارڈنمبر3 محلہ پنساریاں تالاب میں شیوکماراور شام سنگھ اورایک دیگراُمیدوارمیدان میں ہیںاورسخت مقابلہ بتایاجارہاہے۔بگانی پنچایت کی دیگروارڈوں میں راج کمار،نیلم کماری اوراومکاربھی مضبوط پنچ اُمیدواروں میں شمارکیے جارہے ہیں۔اسی طرح اگرپنچایت کیری کی بات کی جائے تواس پنچایت پنچایت حلقہ کے سرپنچ کاانتخاب بلامقابلہ عوام نے مشاورتی میٹنگ کے دوران نچھترسنگھ کواپنانمائندہ چن لیاہے ۔کیری پنچایت کے وارڈنمبر7میںمحمداقبال اورایک دیگراُمیدوارکے درمیان مقابلہ ہے ۔پنچایت سروٹ میں سرپنچ عہدے کےلئے تکونی مقابلہ ہے اورتینوں اُمیدواراپنی اپنی جگہ مضبوط مانے جاتے ہیں اورفی الحال یہ کچھ بھی نہیں کہاجاسکتاہے کہ کون سااُمیدوارکامیاب ہوگا۔پنچایت حلقہ سروٹ کے وارڈنمبر 5رتی کنئی کنتھامیں رقیہ بی بی ،پنچایت متھوارکے وارڈنمبر 5 سے گلزاربی بی زوجہ چودھری رحمت علی کامقابلہ پروین اخترکے ساتھ ہے ۔ذرائع کے مطابق دونوں اُمیدواروں کے درمیان کانٹے کی ٹکرکاامکان ہے۔
 
 

۔33ویں سالانہ 9 روزہ جشن عیدمیلادالنبی کانفرنس کیلئے تیاریاں عروج پر

طارق ابرار

جموں//ریاست بھرمیں ربیع الاول کامہینہ شروع ہوتے ہی میلادمصطفےٰ تقریبات کے سلسلے میں فرزندان توحیداورعاشقان رسول میں کافی جوش وخروش پایاجارہاہے ۔مختلف تنظیموں اورانتظامیہ کمیٹیوں کی جانب سے عیدمیلادمصطفےٰ تقریبات کاشیڈول جاری کردیاگیاہے ۔واضح رہے کہ 21 نومبرکو12 ربیع الاول یعنی نبی آخرالزماں اور پیغمبراسلام 12 ربیع الاول کوہی دُنیامیں تشریف لائے تھے اوران کی جنم سالگرہ کودھوم دھام سے منانے اورآپ کی سیرت طیبہ اورتعلیمات کواُجاگرکرنے کے مقصدسے اس روز بڑے پیمانے جلوس محمدی اوراس کے بعدمحفل میلاد کاانعقادمختلف مساجداورعیدگاہوں میں ہوناطے پایاہے ۔جہاں ایک طرف انجمن اصلاح المسلمین کی طرف سے 21 نومبر کو12 ربیع الاول کے روزمرکزی جامع مسجدجموں ،ریذیڈنسی روڈ میں عظیم الالشان محفل میلاد کااہتمام کیاجارہاہے وہیں کمیٹی عیدمیلادالنبی کانفرنس جموں کے سیکریٹری قاری علی اکبرقادری وجملہ اراکین کی طرف سے سرزمین جموں پر33ویں سالانہ 9 روزہ عظیم الشان جشن عیدمیلادالنبی کانفرنس کاشیڈول جاری کیاہے۔تفصیلات کے مطابق یہ نوروزپروگراموںکاانعقادبفیض روحانی حضرت شیخ سیدعبدالقادرجیلانی اورحضورتاج الشریعہ محمداختررضاخان ؒ بریلی شریف ،بفیض نورانی قاری عبدالنبی قادری رضوی ؒ ،زیرسرپرستی میاں بشیراحمد لاروی ،زیرقیادت حضرت مولانا نثاراحمدخان سابق وزیر ،زیرصدارت عبدالمجیدقادری ،ایڈوکیٹ صدر سیرت النبی کانفرنس ،زیرنظامت محمدشمس اللہ خان ،اورمحمدیونس قادری ،زیرنگرانی شایان رضایوپی ،زیرحمایت محمدیاسین کاﺅسا ،جسٹس (ر) سرینگرکشمیرکیا جارہاہے اوران کانفرنسوں میں مقررخصوصی سیدجاویدعلی نقشبندی ،درباراہلسنت دہلی ہوں گے جبکہ دیگرمعززعلماءکرام بشمول مولانا محمدصدیق عالم ،مفتی محمدآصف علیمی ،مفتی محمدرفیق امام وخطیب جامع مسجد حنفیہ پل توی ، مولانا ظہورالاسلام ،شاعراسلام شکیل احمدمینانی لکھنو،ولایت حسین ،حسن رضا بٹھنڈی موڑ، سیدمظہرحسین شاہ ،امام وخطیب جامع مسجدلکھداتابازار جموں کے علاوہ درجنوں مدرسین اسلام ان پروگراموں میں سیرت نبوی پرتفصیلی خیالات کااظہارکریں گے۔نوروزہ پروگرام کاشیڈول اس طرح ہے۔9 ربیع الاول بروزاتوار،18 نومبر بمقام جامع مسجد شریف دھمی بیڑہ فضل پورنگروٹہ ، 11 ربیع الاول بروزمنگلوار ،بمقام مرکزی غوچیہ جامع مسجدبٹھنڈی موڑ جموں (بعدنمازمغرب ) ، 12 ربیع اولال کوجامع مسجدلکھداتابازار سے جلوس محمدی جوجامع مسجدحنفیہ غوثیہ پل توی پہنچ کراختتام پذیرہوگاکے بعد جامع مسجد غوثیہ پل توی، 14 ربیع الاول بروز جمعہ 23 نومبر ،بمقام جامع مسجد شریف لکھداتابازار جموں ، 15 ربیع الاول ۔بروز سنیچروار 24 نومبر بمقام جامع مسجد عائشہ چھنی کمالہ ترکوٹ نگرجموں (بعدنمازعصر) ، 16ربیع الاول بروز اتوار25 نومبر بمقام جامع مسجدشریف نگروٹہ ،17 ربیع الاول بروز پیر 26 نومبر بمقام جامع مسجدشریف سمبل لہڑ نالہ نگروٹہ جموں، 18 ربیع الاول بروز منگل 27 نومبر بمقام مرکزالذداسات اسلامیہ جامع ابوالفتح درابی نگروٹہ ، 23ربیع الاول بروز اتوار،2 دسمبر بمقام مدنی جامع مسجدشریف چواہدی بن میں منعقدہوگا۔
 
 

سیکریٹری سماجی بہبود کا سانبہ میں چلڈرنس ہوم کی جلدتکمیل پرزور

جموں/ /سیکرٹری سماجی بہبود ڈاکٹر فاروق احمد لون نے ڈائریکٹوریٹ آف سوشل ویلفیئر جموں ، مشن ڈائریکٹوریٹ آئی سی ڈی ایس اور مشن ڈائریکٹوریٹ آئی سی پی ایس کا دورہ کر کے وہاں افسروں کے ساتھ کام کاج کا جائزہ لیا۔اس دوران سینئر افسروں کے ساتھ ایک میٹنگ طلب کی گئی اور محکمہ کے سکیموں اور جموں میں جوینائل جسٹس ایکٹ کی عمل آوری سے جڑے امور پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔اس موقعہ پر مشن ڈادئریکٹر آئی سی پی ایس جی اے صوفی ، مشن ڈائریکٹر آئی سی ڈی ایس ویر جی ہانگلو ، ڈائریکٹر سوشل ویلفیئر جموں ڈاکٹر بھارت بھوشن اور کئی دیگر افسران بھی موجود تھے۔انہوں نے سانبہ کا دورہ کر کے وہاں چلڈرن ہوم کی تعمیر کا جائزہ لیا۔اُنہوں نے 55بستروں پر مشتمل اس چلڈرن ہوم کو جلد از جلد مکمل کرنے کی ہدایات دیں تاکہ اسے بچوں کی دیکھ ریکھ اور تحفظ کے لئے استعمال میں لایا جاسکے ۔اُنہوں نے دستیاب اراضی کو مو¿ثر ڈھنگ سے استعمال میں لانے کے لئے ایک ڈی پی آر تیار کرنے کی بھی ہدایت دی۔سیکرٹری موصوف نے جھک میں آئی سی پی ایس کمپلیکس کا بھی دورہ کیااور سانبہ ضلع میں سماجی بہبود سیکٹر کے کام کا کاج کا جائزہ لیا۔ اس موقعہ پر سماجی بہبود محکمہ سانبہ کے کئی اعلیٰ افسران بھی موجود تھے۔