تازہ ترین

سینٹرل جیل میں کولگام کے قیدی کی حالت غیر

افراد خانہ کا کینسر کی دوائی فراہم نہ کرنے کا الزام

9 نومبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

سرینگر// پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت گذ شتہ 18مہینوں سے قید مہلوک لشکر کمانڈر شکور ڈار کے بھائی کینسر میں مبتلا خورشید ا حمد ڈار کی حالت سنٹرل جیل سرینگر میں ناز ک بنی ہوئی ہے۔ سی این ایس دفتر پر آ ئے منوراحمدڈار ساکن سوپٹ قاضی گنڈ کولگام نے بتایا کہ ’’میرابیٹا خورشید احمد ڈارگذ شتہ ڈیڑ ھ سال سے پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت مٹن جیل میں قید تھا اوروہ پہلے ہی کینسر میں مبتلا تھا اور وہ پابند ی کے ساتھ اس بیمار ی کی دوائی لے رہا تھا‘‘ ۔والد نے مزید کہا کہ کچھ عرصہ قبل اسے مٹن جیل سے علاج معالجہ کرانے کی غر ض سے سنٹر ل جیل سرینگر منتقل کیا گیا جہاں ڈاکٹروںنے طبی معائنہ کے بعد اس کی پرانی دوائی تبدیل کرکے نئی دوائی تجویز کی تاہم ابھی تک اسے وہ نئی دوائی فراہم نہیں کی گئی ہے جس کی وجہ سے درد بڑھتا جارہا ہے اور ہردن اس کی صحت بگڑ تی جارہی ہے۔ منور ڈار نے کہا کہ دوائی نہ ملنے سے اس کے بیٹے کی حالت ابتر ہوئی ہے اوراسکی حالت دیکھ کر ایسامحسوس ہو تا ہے کہ وہ چند دنوں کا مہمان ہے ۔ انہوں نے جیل حکام کے ساتھ تمام متعلقین سے اپیل کی ہے کہ وہ میر ے بیٹے کو دوائی فراہم کے کر نے کے علاوہ اس کے علاج ومعا لجہ کو یقینی بنانے کے ساتھ اسکی رہائی بھی یقینی بنائیں تاکہ ہم اس کا بہتر علاج معالجہ کراسکے۔ خیال رہے کہ خورشید احمدمہلوک لشکر کمانڈر شکور ڈار کے بھائی ہیں جو گذشتہ سال کولگام میں ایک معرکہ آ رائی کے دوران جابحق ہوا تھا۔