تازہ ترین

میڈی کلیم پالیسی ملازمین کیلئے بوجھ

گورنر انتظامیہ فیصلے پر نظر ثانی کرے :سی پی آئی ایم

12 اکتوبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

سرینگر //سی پی آئی ایم کی ریاستی کمیٹی کی میٹنگ میں منظور کی گئی قرار داد میں حکومت سے مانگ کی گئی کہ وہ میوہ جات اگانے والے کسانوں کی مشکلات کا فوری طور پر ازالہ کرے اور ان کے سیبوں کو تباہ ہونے سے بچایاجائے جو وہ ملک بھر کے مارکیٹ میں فروخت کرتے ہیں ۔قرارداد میں مانگ کی گئی کہ کولڈ سٹوریج اور دیگر سہولیات فراہم کی جائیں ۔کمیٹی کے ریاستی سیکریٹری غلام نبی ملک کی صدارت میں منعقد ہوئی اس میٹنگ میں ریاست کی موجودہ سیاسی صورتحال اور سماج کے مختلف طبقوں کو درپیش مسائل کے بارے میں تبادلہ خیال کیاگیا۔اس دوران کمیٹی نے مسائل حل نہ ہونے پر تشویش ظاہر کی اور انتظامیہ پر زور دیاکہ عوامی مشکلات کا ازالہ کیاجائے۔قرارداد کے ذریعہ کہاگیاکہ حکومت نے ڈیلی ویجروں اور دیگر عارضی ملازمین کو مستقل کرنے کاوعدہ کیاتھاتاہم اس پر عمل نہیں ہواجس کے نتیجہ میں پی ایچ او ر محکمہ بجلی و دیگر محکمہ جات کے ملازمین سراپا احتجاج ہیں اور ان غریب ورکروں کا گزر بسر مشکل ہوگیاہے ۔کمیٹی نے حکومت پر زور دیاکہ وہ بجلی کے شعبے کی نجکاری سے گریز کرے کیونکہ ایسا کرنے سے کرایہ بڑھ جائے گا جو غریب عوام پر بھاری بوجھ ہوگا ،لوگ موجودہ کرایہ بھی مشکل سے ادا کرتے ہیں اور اگر بجلی کی نجکاری ہوگئی تو پھر ان کیلئے کرایہ کی ادائیگی کٹھن ہوگی۔کمیٹی نے حکومت کی طرف سے حال ہی میں وضع کی گئی میڈی کلیم ہیلتھ انشورنس سکیم پر تحفظات ظاہر کرتے ہوئے کہاکہ درجہ چہارم کے ایک ملازم کیلئے سالانہ 8777روپے جمع کروانا مشکل ہے اس لئے حکومت ملازمین کے ساتھ انصاف کرے اور ملازم تنظیموں کے ساتھ مشاورت کرکے پالیسی کو حتمی شکل دی جائے ۔کمیٹی نے نوجوانوں کی اندھا دھند گرفتاریوں،پی ایس اے کے اطلاق اور انہیں بیرونی جیلوں میں منتقل کرنے پر سخت تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہاکہ اس سلسلے میں ریاستی گورنر مداخلت کرکے طاقت کے بے جا استعمال اورہحراساں کرنے کی کارروائیوں پر روک لگائیں ۔