تازہ ترین

برف ہٹانے کیلئے کنٹرول روم کا قیام

صوبائی کمشنر کی ترقیاتی کمشنروں کو ہدایت

12 اکتوبر 2018 (00 : 01 AM)   
(   File Photo    )

سرینگر//صوبائی کمشنر کشمیر بصیرا حمد خان نے لیہہ اور کرگل سمیت وادی کے تمام ضلع ترقیاتی کمشنروں کو اُن کے متعلقہ اضلاع میں 17اکتوبر سے دن رات کام کرنے والے کنٹرول رومز کا قیام عمل میں لانے کی ہدایت دی ہے تاکہ امکانی برفباری سے نمٹنے کے لئے مختلف محکموں کے آفیسران کے درمیان قریبی تال میل قائم رہے۔انہوںنے کہا کہ مقامی آبادیوں اور شہریوں کو برف ہٹانے کے لئے کی جارہی تیاریوں کے بارے میں مکمل جانکاری دی جانی چاہیے۔انہوںنے موسم سرما کے لئے عام شہریوں کی راحت رسانی کے لئے ضلع انتظامیہ کو متحرک رہنے پر زوردیا۔ صوبائی کمشنر نے ان باتوں کا اظہار ایک میٹنگ کے دوران کیا جس میں کرگل اور لیہہ سمیت وادی بھر میں امکانی برفباری سے پہلے کی جارہی تیاریوں کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔میٹنگ میں بتایا گیا کہ تمام اضلاع میں برف ہٹانے کے لئے151سنوکلیرنس مشینوںکو تیاریوں کی حالت میں رکھا گیا ہے ۔میٹنگ کے دوران تمام ضلع ترقیاتی کمشنروں نے امکانی برفباری سے نمٹنے کے لئے کی جارہی تیاریوں کے بارے میں جانکاری دی۔ضلع ترقیاتی کمشنروں کی مانگ پر صوبائی کمشنر نے ایم ای ڈی محکمے کو سنو کلیرنس کے لئے اضافی مشینیں دستیاب رکھنے کی ہدایت دی۔پسیوں کی زدمیںآنے والے علاقوں سے لوگوں کی منتقلی کے کامیاب پروگرام کے لئے صوبائی کمشنرنے ڈیزاسٹر منیجمنٹ کو ماک ڈرل کا انعقادکرنے اور افرادی قوت اورمشینری کو تیاری کی حالت میں رکھنے کی ہدایت دی۔اس موقعہ پر بتایا گیا کہ ایس ایم سی نے شہر میں پانی کی نکاسی کے لئے 115ڈی واٹرنگ پمپس تیار رکھے ہیں جب کہ ڈرینوں سے ملبہ ہٹانے کا کام پہلے ہی مکمل کیا گیا ہے۔صوبائی کمشنر نے امکانی برفباری سے نمٹنے کے لئے کی جارہی تیاریوں کے بار ے میں ترقیاتی کمشنروں کو ہفتہ وار بنیادوں پر میٹنگوں کا انعقاد کرنے اور صوبائی کمشنر کے دفتر میں ہر پندرہ دن بعد رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت دی۔میٹنگ میں ضلع ترقیاتی کمشنر سرینگر،ضلع ترقیاتی کمشنر پلوامہ،ڈائریکٹر ڈیزاسٹر منیجمنٹ،چیف انجینئر پی ایم جی ایس وائی اورجوائنٹ کمشنر ایس ایم سی کے علاوہ مختلف محکموں کے انجینئر اور آفیسران موجود تھے۔جب کہ لیہہ اورکرگل سمیت وادی کے ترقیاتی کمشنروں نے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے میٹنگ میں شرکت کی۔