تازہ ترین

جموں کے ڈاکٹرنے دوردرازگائوں میں ہسپتال تعمیرکیا

10 اکتوبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

یوگیش سگوترہ
جموں//سماج کے تئیں خدمات انجام دینے کاجذبہ ہرانسان میں ہوتاہے لیکن کچھ ہی لوگ ہوتے ہیں جولوگوں کی خدمت کے فریضے کوانجام دینے میں کامیاب ہوپاتے ہیں۔جموں کے سپوت ڈاکٹرکے ایس چاڑک ایک ایسے شخص ہیں جنھوں نے بشناہ تحصیل نوگراں گائوں میں ضرورت مندوں کیلئے ہسپتال قائم کیاہے۔ڈاکٹرچاڑک نے اپنے آبائی گائوں میں ایک کمرے سے ہسپتال کاکام شروع کیاتھاجہاں وہ ضرورت مندلوگوں کوطبی سہولیات فراہم کرتے رہے۔ڈاکٹرچاڑک نے 38سال پہلے میڈیسن کی تعلیم حاصل کرنے کیلئے جموں چھوڑاتھااوردہلی کے معروف ہسپتالوں میں سرجن کے طورپرخدمات انجام دیں۔2000 میں انہوں نے جموں کے ضرورت مندلوگوں کوطبی سہولیات فراہم کرنے کے مشن پرکام کرناشروع کیااوربعدمیں ان کے اس مشن نے ہسپتال کاروپ اختیارکیا۔اس کے علاوہ ڈاکٹرموصوف نے شری اونکارسنگھ میموریل ٹرسٹ کے تحت مختلف طبی کیمپ منعقدکیے اور پھرضرورتمندوں کے آپریشن کئے۔ڈاکٹرچاڑک سپیشل سرجن کے طورپرملازمت سے ریٹائرہوچکے ہیں اوراب شمالی بھارت کے ایک اعلیٰ ہسپتال میں کام کررہے ہیں۔ہسپتال کے خواب کے بارے میں ڈاکٹرچاڑک نے بتایاکہ ’میں نے مونٹیرنگ اورٹریکنگ کے دوران اوربلندپہاڑوں پررہنے والے لوگوں کواکثرطبی امدادطلب کرتے دیکھاہے ۔اس چیزنے مجھے تحریک دی کہ میں سماج کے نظراندازاورغریب لوگوں کی طبی امدادکروں ۔انہوں نے کہاکہ 2000 میں پانچ دوستوں نے ملک کرایک گروپ بنایاجس نے ایک ٹرسٹ کے تحت مختلف ریاستوں میں ططبی کیمپ منعقدکئے ہیں۔بعدمیں ،میں نے اپنی آبائی زمین اسی مقصدکیلئے دے دی ۔تب سے ہم ملک میں طبی خدمات فراہم کرنے کاکام کررہے ہیں اورجموں خطے میں طبی سہولیات کی فراہمی میری ترجیح رہی۔پھربشناہ میں ہسپتال کی ایک بلاک تعمیرکی جس میں 25  بستروں ، دوآپریشن تھیٹروں ،لیبارٹری،ایڈمنسٹریشن بلاک، آئوٹ پیشنٹ ڈیپارٹمنٹ ،گیسٹ روم اورایمبولینس کاانتظام تھا۔انہوں نے کہاکہ ہم آپریشن کیلئے مریضوں سے کوئی پیسہ نہیں لیتے ہیں ۔اتناہی نہیں ہم مریضوں اورتیمارداروں کوکھانااوررہائش کی سہولت بھی دیتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ہمارے پاس اچھے ڈاکٹرہیں جوآرتھوپیڈک ،گال بلیڈرسٹون، کڈنی ستون، ہرنیا،پروسٹریٹ ودیگرقسم کے آپریشن کرتے ہیں۔