پی ڈی ڈی نیڈبیسڈورکرس کی ہڑتال کادوسرادن

نیم برہنہ ہوکراحتجاجی مظاہرہ،تنخواہیں واگذارکرنے کامطالبہ

10 اکتوبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

جموں//پاورڈیولپمنٹ ڈیپارٹمنٹ کے عارضی ملازمین کی 72 گھنٹے کی ہڑتال دوسرے روزبھی جاری رہی ۔ ان عارضی ملازمین نے چیف انجینئر پی ڈی ڈی دفترکے باہرنیم برہنہ ہوکراحتجاج کرتے ہوئے متعلقہ حکام پرانہیں واجب الاداتنخواہیں واگذارنہ کرنے کاالزام لگایا۔نیڈبیسڈورکرس یونین پی ڈی کے صدراکھل شرمانے کہاکہ یونین کاایک اجلاس 24 اگست کمنعقدہواتھاجس میں مسائل پرغوروخوض ہواتھا۔اس دوران بتایاکہ ہم نے متعددبارانتظامیہ کونیڈبیس ورکروں کی جائزمانگوں کے بارے میں بتایاہے لیکن کوئی بھی توجہ نہیں دی جارہی ہے۔ اس کے بعدچندروزپہلے ایک میٹنگ منعقدکرکے یہ فیصلہ کیاکہ 8اکتوبرسے اپنی واجب الاداتنخواہوں کی ادائیگی کیلئے چیف انجینئروں کے دفتروں کے باہر72گھنٹے کے دھرنے پربیٹھنے کافیصلہ لیاہے۔انہوں نے کہاکہ ہم اپنی تنخواہوں کی ادائیگی کیلئے جدوجہدکریں گے۔اکھل شرمانے کہاکہ ہم نے چیف انجینئرسے ملاقات کی اورانہیں میمورنڈم پیش کیاتھا اورانتباہ دیاتھاکہ اگرہماری مانگیں پوری نہ ہوئیںتو ہم غیرمعینہ مدت کی ہڑتال پرچلے جائیں گے۔انہوں نے دعویٰ کیاکہ کشمیرصوبہ کے نیڈبیسڈ ورکروں کوہرمہینے تنخواہ دی جاتی ہے لیکن جموں کے 3405 نیڈبیسڈ ورکروں کے ساتھ ایسانہیں کیاجاتاہے جوکہ ناانصافی ہے۔

تازہ ترین