بلدیاتی انتخابات:13برس بعد ووٹنگ کا پہلا مرحلہ آج

۔57 وارڈوں میں انتخابی معرکہ، 149وارڈوں میں69امیدوار بلا مقابلہ کامیاب،23میں کوئی امیدوار نہیں

8 اکتوبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

بلال فرقانی
سرینگر//13برس بعد منعقد ہونے والے بلدیاتی انتخابات کا پہلا مرحلہ آج سخت سیکورٹی کے بیچ منعقد ہونے جارہا ہے۔آج سرینگر میونسپل کارپوریشن کے3وارڈوں سمیت کل 149بلدیاتی وارڈوں کا انتخاب ہونا ہے۔ 149بلدیاتی وارڈوں میں69امیدوار بلا مقابلہ کامیاب قرارپائیں گے، جبکہ23وارڈوں میں کوئی بھی امیدوار کھڑا نہیں ہوا ہے۔اس طرح مجموعی طور پر صرف 57 انتخابی وارڈوں میںووٹنگ کا عمل ہوگا۔ ان 57 حلقوں میں 138امیدوار میدان میں ہیں۔

وسطی کشمیر

سرینگر میونسپل کارپوریشن کے3وارڈوں16(ہمہامہ)17(ہمدانیہ کالونی بمنہ) اور 74(باغ مہتاب) میں پہلے مرحلے کے بلدیاتی انتخاب میںآج و وٹ ڈالے جائیں گے،جس کے دوران 8 امیدواروں کے درمیان انتخابی جنگ ہوگی۔ سرکاری ذرائع کے مطابق حکام نے سرینگر میں  27پولنگ مراکز قائم کئے ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ بڈگام میں چاڈورہ میونسپل کمیٹی میں13 وارڈوں میں سے5میں کوئی بھی امیدوار کھڑا نہیں ہوا ہے،جبکہ دیگر8 وارڈوں میں8امیدوار میدان میں ہیں،اور وہ بلا مقابلہ کامیاب  ہونگے۔ میونسپل کمیٹی چاڈورہ میں کوئی بھی انتخاب نہیں ہوگا۔ خانصاحب میونسپل کمیٹی کے  7 وارڈوں میں صرف7 امیدوار ہی میدان میں ہے،اور قدرتی طور پریہاں انتخاب کی نوبت نہیں پڑے گی۔بڈگام میونسپل کمیٹی میں13بلدیاتی وارڈ ہیں۔۹وارڈوں میں صرف ایک ہی امیدوار کھڑا ہوا ہے، جبکہ3وارڈوں میں کوئی بھی امیدوار سامنے نہیں آیا ہے۔یہاں صرف ایک ہی وارڈ میں انتخاب ہوگا۔

شمالی کشمیر

 بارہمولہ میونسپل کونسل کے21وارڈوں میں سے15 وارڈوں میں31امیدوار میدان میں ہیں،جبکہ 6بلدیاتی  وارڈوں میں امیدوار بلا مقابلہ کامیاب ہونگے۔پہلے مرحلے کے تحت کپوارہ اور ہندوارہ میونسپل کمیٹیوں میں 18امیدارو ں کے قسمت کا فیصلہ ہو گا جبکہ ہندوارہ اور کپوارہ میں پہلے ہی 8امیدوار بلا مقابلہ کامیاب ہوگئے ہیں جن میں 6کا تعلق ہندوارہ اور 2کا کپوارہ سے ہے۔کپوارہ کی میونسپل کمیٹی میں2بلدیاتی حلقوں میں امیدوار بلا مقابلہ کامیاب ہونگے ،جبکہ دیگر11وارڈوں میں29امیدواروں کے درمیان انتخابی دنگل ہوگی۔ ہندوارہ میونسپل کمیٹی کے13 وارڈوں میں7وارڈوں میں18امیدواروں کے درمیان مقابلہ آرائی ہوگی،جبکہ6بلدیاتی حلقوں میں امیدوار بلا مقابلہ کامیاب ہونگے۔ شمالی کشمیر کے ضلع بانڈی پورہ کی میونسپل کمیٹی میں صرف ایک وارڈ میں امیدوار بلا مقابلہ کامیاب ہوگا،جبکہ دیگر16وارڈوں میں42امیدوار میدان میں ہیں۔

جنوبی کشمیر

 کوکر ناگ میونسپل کمیٹی کے13وارڈوں میں8 امیدوار کھڑے ہیں۔جبکہ ایک وارڈ پر کوئی بھی امیدوار کھڑا نہیں ہوا ہے۔اس میونسپل کمیٹی کے4وارڈوں میں انتخاب ہوگا،جس میں8امیدواروں کے درمیان مقابلہ آرائی ہوگی۔ اچھ بل میونسپل کمیٹی میں نقل مکانی کرنے والے ماں بیٹا بلا مقابلہ کامیاب ہونگے۔یہاں 8وارڈوں میں 3 وارڈوں میں کوئی بھی امیدوار کھڑا نہیں ہوا ہے،جبکہ مزید5امیدوار بلا مقابلہ کامیاب ہونگے ۔ میونسپل کمیٹی کولگام کے13وارڈوں کیلئے5امیدوار بلا مقابلہ کامیاب ہونگے،جبکہ8انتخابی وارڈوں میں کوئی بھی امیدوار میدان میں نہیں ہے۔ دیوسر میونسپل کمیٹی کے8 وارڈوں میں بی جے پی کے8 امیدوار بلا مقابلہ کامیاب ہو گئے ہیں۔ قاضی گنڈ میونسپل کمیٹی کے7وارڈوں میں بی جے پی کے4امیدوار بلا مقابلہ کامیاب ہونگے،جبکہ3وارڈوں میں کوئی بھی امیدوار کھڑا نہیں ہوا ہے۔

شوپیان

نامہ نگار شاہد ٹاک کے مطابق شوپیان میونسپل کمیٹی کے 17وارڈوں میں 11 امیدوار بلامقابلہ کامیاب ہوگئے ہیں،جن میں چار خواتین شامل ہیں۔ ضلع چناو آفسر ڈاکٹر اویس احمد نے ایک پریس کانفرنس کے دوران کہا کہ 17 وارڈوں میں چار خواتین سمیت 13 امیدواروں نے نامزدگی کے فارم دائر کئے تھے۔ ایک امیدوار کی نامزدگی رد کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ ایک امیدوار دونشستوںپر کامیاب ہوا تھا تاہم بعد میں اسے ایک نشست کے لئے دستبردار ہونا پڑا۔انہوں نے کہا کہ کامیاب ہونے والے سبھی امیدوار بی جے پی سے تعلق رکھتے ہیں جن میںچار خواتین بھی شامل ہیں۔یہ سبھی امیدوار وادی سے باہر سکونت اختیار کئے ہوئے ہیں اور سبھی مہاجر کشمیری پنڈت ہیں۔
 

تازہ ترین