انتخابات نہیں حق خودارادیت

نعرہ اور موقف ایک : میر واعظ

15 ستمبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

بلال فرقانی
 سرینگر// حریت (ع) چیئر مین میرواعظ عمر فاروق نے انتخابات کو لاحاصل عمل قرار دیتے ہوئے کہا کہ کسی بھی طرح کے انتخابی عمل سے لوگوں کا کوئی بھی لینا دینا نہیں ہے۔انہوں نے اقوام متحدہ کے بشری حقوق کونسل کی نومنتخب چیئرمین مچل بچلٹ کی طرف سے جموں کشمیر میں حقوق انسانی کی پامالیوں سے متعلق بیان کو چشم کشا قرار دیا۔سرینگر کی جامع مسجد میں نماز جمعہ سے قبل خطاب کے دوران میر واعظ نے مچل بچلٹ کے بیان کو’’مبنی برحقیقت‘‘ قرار دیتے ہوئے کہا’’یہ بات باعث افسوس ہے کہ حکومت ہندوستان نے اس بیان کو ایک بار پھر مسترد کردیا لیکن وہ اس بات کو محسوس نہیں کرتے کہ اقوام متحدہ ، او آئی سی یا ایمنسٹی انٹرنیشنل کی رپورٹوں کو مسترد کرنے سے حکومت ہندوستان کی انسانی قدروں اور جمہوریت کے دعوے سراب ثابت ہو رہے ہیں‘‘ ۔انہوں نے کہا ’’ حکومت ہندوستان اپنی غلطیوں سے سبق حاصل نہیں کرتی اور وہ وہی غلطیاں دہرا رہے ہیں جو وہ 1947سے آج تک دہراتے آرہے ہیں ، وہ سمجھ نہیں پا رہے ہیں کہ آج کشمیریوں کی چوتھی نسل اپنا حق مانگ رہی ہے ‘‘۔انہوں نے کہا’’جب تک ریاست سے فوجی انخلا نہیں ہوتا تب تک یہاں حالات میں بہتری کے امکانات پیدا ہونا ناممکن ہے‘‘ ۔حریت(ع) چیئرمین نے کہا کہ کشمیر میں فوجیوں اور فورسز کی تعداد کم کرنے کے بجائے یہاں مزید فورسز کو لایا جارہا ہے اور اس کا سب سے بڑا مقصد یہ ہے کہ کشمیری عوام کی آواز کو دبایا جائے ۔ میرواعظ نے کہا ’’ ہم یہ بات واضح کرنا چاہتے ہیں کہ حکومت ہند جتنی زیادہ قوت کے ساتھ ہماری آواز کو دبانے کی کوشش کرے گی اتنی ہی شدت کے ساتھ یہ آواز ابھرتی جائیگی ۔ انتخابات مسترد کرتے ہوئے میر واعظ نے کہا اسمبلی الیکشن ہو یا پارلیمانی ، پنچایتی وبلدیاتی انتخابات، یہ ایک لا حاصل عمل ہے،اور اس سے کچھ حاصل نہیں ہوگا۔میرواعظ کا کہنا تھا ’’ انتخابات نہیں صرف حق خودارادیت‘‘۔ اسی نعرہ کو بنیاد بنا کر آئندہ ذرائع ابلاغ ، سماجی میڈیا، یا دیگر ذرائع کے ذریعے انتخابی عمل کیخلاف مہم چلائی جائیگی‘‘۔

تازہ ترین