مزید خبرں

14 ستمبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

ایم ایل اے مڑ ھ گورنرسے ملاقی

سرینگر // ممبر اسمبلی مڑھ سکھ نندن چودھری یہاں راج بھون میں گورنر ستیہ پال ملک سے ملاقی ہوئے۔سکھ نندن چودھری نے اپنے حلقہ انتخاب میں جاری ترقیاتی پروجیکٹوں کے کام میں سرعت لانے سے متعلق کئی معاملات پر گورنر کے ساتھ تبادلہ خیال کیا۔گورنر نے عوامی بہبود کے لئے دلچسپی کا اظہار کرنے پر سکھ نندن چودھری کی سراہنا کرتے ہوئے ان سے تلقین کی کہ وہ بلدیاتی اداروں کے انتخاب کی اہمیت سے متعلق لوگوں کو آگاہ کریں
 

نیشنل واٹر ایوارڈ س ۔2018 

 مرکزی وزارت برائے آبی وسائل کی جانب سے اندراج طلب 

نئی دلّی///ملک میں آبی وسائل کو محفوظ رکھنے کی اہمیت کے مد نظر ، مرکزی وزارت برائے آبی وسائل ، ریور ڈیولپمنٹ اور گنگا ریجووینیشن نے تمام شراکت داروں کی حوصلہ افزائی کے لئے نیشنل واٹر ایوارڈس قائم کئے ہیں۔نیشنل واٹر ایوارڈس 2018کے لئے اندراجات 13زمروں کے لئے طلب کی گئی ہے۔ان میں بیسٹ سٹیٹ ، بیسٹ ڈسٹرکٹ ، بیسٹ ولیج پنچایت ، بیسٹ میونسپل کارپوریشن ، بیسٹ ریسرچ / انوویشن / پانی کی تحفظ کے لئے نئی تکنیک کو اپنانے ، بیسٹ ٹی وی شو، بیسٹ اخبار، بیسٹ سکول ، بیسٹ ادارہ جنہوں نے پانی کے استعمال کے لئے کامیاب کیمپ منعقد کئے ہوں، بیسٹ ریذیڈنٹ ویلفیئر ایسو سی ایشن ، بہتر مذہبی،تفریحی اور سیاحتی طور پر پانی کے بہتر استعمال سے متعلق انجمنیں اور بہتر صنعتی ادارے جنہوں نے پانی کے تحفظ کو یقینی بنایا ہو شامل ہیں۔بیسٹ سٹیٹ او ر بیسٹ ڈسٹرکٹ ایوارڈوں کے علاوہ متعلقین کو 2لاکھ روپے ، ڈیڑھ لاکھ روپے اور ایک لاکھ روپے بطور پہلا ، دوسرا اور تیسرا نقد انعام دیا جائے گا۔مزید معلومات حاصل کرنے کے لئے متعلقین http://mowr.gov.in/national-water-awards2018 اور cgwb.gov.inپر رابطہ قائم کرسکتے ہیں۔درخواست دہندگان اپنی اندراجات بذریعہ MyGov(mygov.in) پورٹل پر بھی اَپ لوڈ کرسکتے ہیں۔
 

عوامی معاملات آپسی مفاہمت کیساتھ حل کئے جائیں : بھیم سنگھ

جموں//نیشنل پنتھرس پارٹی کے سرپرست اعلی پروفیسر بھیم سنگھ نے   جموں میں پارٹی کے ہیڈکوارٹر پر نامہ نگاروں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پنچایتی وبلدیاتی انتخابات سے قبل جموں وکشمیر کے گورنر ستیہ پال ملک کو تمام تسلیم شدہ سیاسی جماعتوں کے نمائندوں کی سری نگر یا جموں میں ہنگامی میٹنگ طلب کرنی چاہئے۔پروفیسر بھیم سنگھ نے کہا کہ سکریٹریٹ یا راج بھون سے صرف ہدایات ہی جاری کی جاتی ہیں جس کی وجہ سے ریاست کے لوگوں کا حکومتوں پر سے اعتماد ختم ہوگیا ہے جو 1950سے بندوق، لاٹھیوں اور جھوٹ کے سہارے غلط طریقہ سے حکمرانی کرتی رہی ہیں۔تینوں خطوں لداخ، وادی کشمیر اور جموں کے لوگ یقیناً پنچایتی اور میونسپل انتخابات میں اپنے نمائندوں کو منتخب کرنے کے لئے ووٹ دیں گے۔انہوں نے جموں وکشمیر کی تمام سیاسی جماعتوں سے ایک مشترکہ کانفرنس کرنے کی اپیل کی جس سے ایمانداری سے ووٹنگ کے ذریعہ ایک مشترکہ ایجنڈہ پر پہنچا جاسکے۔انہوں نے کہاکہ حکومت سے پبلک سیفٹی ایکٹ (پی ایس اے) کے تحت بغیرمقدمہ چلائے قید کئے گئے تمام لوگوں کو رہاکرنے کے لئے کہاجائے جس سے  لوگ بلاخوف و خطر کے اپنی پسند کے نمائندوں کا پنچایتی و بلدیاتی  یا پھر اسمبلی کے لئے انتخاب کرسکیں ۔اس موقع پر سینئر پارٹی لیڈر بھی موجود تھے جن میں پی کے گنجو،  انیتا ٹھاکر، شنکر سنگھ چب، سیواسنگھ بالی وغیر ہ شامل ہیں۔
 

 پنچایتی اوربلدیاتی انتخابات کیلئے بائیکاٹ کی کال افسوس ناک :چمن لال گپتا

جموں//35اے کوسیاسی رنگت دے کرجمہوری نظام کو زک پہنچانے والے سیاستدانوں کو آڑے ہاتھوں لیکر سابق مرکزی وزیر پروفیسر چمن لال گپتا نے کافی عرصہ سے التوا ء میںپڑے پنچایتی و بلدیاتی انتخابات کومنسوخ کر نے کی کاوشوں پرشدید الفاظ میں افسوس کا اظہار کیاہے ۔ یہاں پرجاری بیان میں انہوںنے چند سیاسی جماعتوں کی جانب سے بائیکاٹ کی کال پر شدید تنقید کی ہے۔ اپنے  بیان میں پروفیسر چمن لال گپتا نے الزام   لگایا کہ کچھ جماعتیں سیاسی بلیک میلنگ سے جڑی ہوئی ہیں جو  بغیر کسی وجہ کے جمہوری نظام کوزک پہنچارہی ہیں۔ انہوں نے مزید کہاہے کہ35 اے کا معاملہ زیرسماعت و زیر غور  عدالت عظمی ٰ   ہے اس پر کوئی بھی تبصرہ  کرنا سراسر غلط اورغیر جواز ہے اوربغیر کوئی سوچے سمجھے اس معاملے پر سیاست کرکے وادی کشمیرمیں خراب صورتحال پیدا کی جارہی ہے،اتناہی نہیں بلکہ املک  کو بھی اپنی ہی  دھن پر رقص کرنے کے خواہاں ہیں ۔گپتا نے حیرانی کااظہار کرتے ہوئے کہا  کہ 35اے پرسیاست کرنے والے سیاسی جماعتوں سے وابستہ افرادملک کے باہر کیا کررہے ہیں۔ پروفیسر گپتا نے پنڈت جواہرلال نہرو کو وادی کشمیرمیںموجودہ صورًتحال کیلئے ذمہ دار ٹھہراتے ہوئے کہاہے کہ شیخ محمد عبداللہ ان کے سیاسی دوست تھے جن سے ملکر انہوں نے اپنے سیاسی مفاد کیلئے سمجھوتہ کیا ہے جوکہ اصل میں مہاراجہ ہری سنگھ کی جانب سے کئے گئے سمجھوتے سے الگ ہے ۔ گپتا نے اانکشاف کرتے ہوئے کہا ہے کہ ڈوگرہ لیڈر پریم ناتھ جس نے پاکستان کے خلاف جنگ بندی اورریاست جموں وکشمیر کے ساتھ اپنائے جارہے امتیازی سلوک   کی مخالفت کی تھی کو جیل جاناپڑا اورعدالت میں غیرشنوانی کے باعث انہیں   کافی مشکلات کاسامنا کرناپڑا تھا ۔ انہوں نے مزید بتایاہے کہ آئین کے بانی ڈاکٹربھیم راؤ امبیڈ کر نے بھی دفعہ 370کی بھی مخالفت کی تھی ۔اب صورتحال انتہائی خراب پیدا کی گئی ہے اورفوجی جوانوں کو ملک کی سالمیت کیلئے یہاں آکر خون بہاناپڑتا ہے۔ انہوںنے نیشنل کانفرنس کے لیڈر ڈاکٹر فاروق عبداللہ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ فاروق عبداللہ کورازانہ بیان بازی کرنے کی عادت بن چکی اور افسوس کا عالم یہ ہے کہ وہ خود نہیں جانتے کہ ان کی بیان بازی سے کیانتائج  برآمد ہوسکتے ہیں جبکہ محبوبہ مفتیبھیسیاسی میدان میں  جگہ بنانے کیلئے غلط بیان بازی کرکے اقتدار سنبھالنے کی خواہاں ہیں۔
 
 

 محکمہ باغبانی کے زیراہتمام تربیتی پروگرام منعقد

ادہم پور // ضلع میں نوجواجوں کیلئے روز گار پیدا کرنے اور بے روزگار نوجوانوں کومرکزی حکومت کی شروع کر دہ فلاحی اسکیموں کے بارے میں بیدار کرنے کیلئے محکمہ باغبانی کی جانب سے کرشی وگیان کیندر ریاسی کے اشتراک سے ایک تربیتی پروگرام منعقد کیا گیا ۔ڈائریکٹر محکمہ باغبانی جموں  انو رادھا گپتا کی ہدایات پر منعقد ہ اس تربیتی پروگرام میںزراعت شعبہ سے وابستہ 22کسانوں نے شرکت کی۔ اس موقع پر بولتے ہوئے محکمہ باغبانی کے اعلیٰ آفیسر برج ولبھ گپتا نے اپنے خطاب میں کہاکہ مذکورہ پروگرام کو منعقد کر نے کا اصل مقصد ضلع میں زراعت شعبہ سے وابستہ کسانوں کو مرکزی حکومت کی جانب سے شروع کی گئی اسکیموں کے بارے میں جانکاری فراہم کر نا ہے ۔انہوں نے مزیدکہاکہ اس وقت نامیاتی زراعت کو فروغ دینا اشد ضروری ہے جبکہ اس سلسلہ میں کسانوں کو بھی بیدار کیا جانا چائیے تاکہ کیمیائی کھادوں کا ستعمام کم کرنے کیساتھ ساتھ زراعی پیدا وار کو بڑھایا جاسکے ۔انہوں نے کسانوں سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ مرکزی حکومت کی جانب سے شروع کردہ فلاحی اسکیموں کا زیادہ سے زیادہ فائدہ اٹھا جائے ۔اسی دوران چیف ہارٹیکلچر آفیسر نے کسانوں میں کھیتی باڑی سے متعلق ساز و سامان بھی تقسیم کیا ۔
 

جموں اکھنور شاہراہ کے کناروں سے درختوںکی کٹائی

نیشنل ہائی وے اتھارٹی سے ریفلیکٹراورسیفٹی بلاک نصب کرنے کامطالبہ

جموں//جموںوکشمیر پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کے لیڈر پونیت سنگھ جموال نے جموں اکھنور  شاہراہ پرپڑے درختوں کے باعث حادثات  کے بڑھتے خدشات پر دکھ کااظہارکا اظہار کرتے ہوئے ان کو فوری طور پر ہٹانے کی مانگ کی ہے ۔ انہوں نیشنل ہائی وے اتھارٹی آف انڈیا سے اپیل کی ہے کہ وہ رنبیر کنال کے کنارے پر گرپڑے درختوںکو فوری طورپر ہٹانے کاکام  شروع کرئے تاکہ کوئی حادثہ پیش نہ آئے۔پونیت سنگھ جموال نے مزید کہاہے کہ نیشنل ہائی وے اتھارٹی آف انڈیا نے جموں اکھنور روڈ کو وسیع کرنے کاکام ہاتھ میںلیا ہے اس کا  تہہ دل سے خیرمقدم کرتے ہیں جو کہ کافی دیر سے لٹکا ہوا تھا لیکن راستے میں آئے درختوں کے کٹاؤکے کام کو ابھی معقول طریقہ کار سے شروع نہیں کیا گیا ہے جس کی وجہ سے ہر وقت حادثات کے خدشات رہتے ہیں ۔انہوں نے مزیدکہاکہ راتوں میں چلتے رہگیروں کے علاوہ ڈرائیور وں اورٹرانسپورٹر وںکو کافی دقت کاسامناکرناپڑ تاہے جبکہ دن کو سڑک پر جام لگاہوتا ہے جوکہ باعث تشویش ہے۔انہوں نے نیشنل ہائی وے اتھارٹی آف انڈیا سے اپیل کی ہے کہ وہ فوری طو ر پر قومی شاہرہ پرپڑے درختوں کوہٹانے کا کام شروع کرے۔
 

آل انڈیا سٹو ڈنٹس فرنٹ کے زیراہتمام کانفرنس 

جموں// آل انڈیا سٹوڈنٹس فرنٹ ادوہمپور کی جانب سے شہید بھگت سنگھ پارک میں تیسری ضلعی کانفرنس کا اہتمام کیا گیاجس میں سینکڑوںکی تعداد میں طلباؤں نے شرکت کی ۔اس کانفرنس کے دوران مختلف معاملات پر تفصیلی بات چیت کے بعد مشترکہ طور پر طے پایا گیا کہ آئندہ ہونے والے اجلاس میں 32وفودشامل کئے جائینگے ۔ذرائع کے مطابق پردیپ سنگھ کی قیادت میں منعقدہ مذکورہ کانفرس میں تنظیم کے سنیئر یوتھ لیڈران و کارکنوں نے شرکت کی ۔اس کانفرس کے دوران مجموعی طور پر 21کونسل ممبران کا انتخاب بھی کیا گیا ۔ تاہم کانفرنس کے دوران آل انڈیا سٹوڈنٹس فرنٹ کو تشکیل دیاگیا اور12مزید ارکان کوضلعی کونسل کیلئے نامزد کیاگیا۔ان منتخب ارکان میں روہت شرما بطورضلع صدر‘ ارشد محمد بطور نائب صدر کے علاوہ سرجیت رانا سیکرٹری،  راجندر سنگھ بطور جوائنٹ سیکرٹری،کیول کمار بطوراسسٹنٹ سیکرٹری،پردیپ سنگھ، آرگنائزر سیکرٹری ،انکوش پریس سیکرٹری  اورامت بطورخزانچی منتخب ہو ئے ہیں۔
 

 رہبرتعلیم ٹیچروں کی بھوک ہڑتال چوتھے روز میںداخل

 جموں//صوبہ جموں کے تمام اضلاع میں آل جموں وکشمیر رہبر تعلیم ٹیچرز فورم کی جانب سے شروع کی گئی بھوک ہڑتال چوتھے روز میں داخل ہو گئی ہے ۔ذرائع کے مطابق 7ویں پے کمیشن کی عمل آوری ودیگر مانگوں کو لے کر کی گئی بھوک ہڑتال کے دوران صوبہ کے تمام اضلاع میں ملازمین نے احتجاج کرتے ہوئے ریاستی انتظامیہ کیخلاف نعرے بازی بھی کی ۔آل جموں وکشمیر رہبر تعلیم ٹیچرز فورم کی جانب سے یہاں جاری ایک پریس بیان کے مطابق جموں کیساتھ ساتھ رام بن ،ادوہمپور ،ریاستی ،کٹھوعہ خطہ پیر پنچال کے دونوں اضلاع میں ضلعی ہیڈ کواٹر پر ملازمین کی جانب سے ہڑتال کو جاری رکھا گیا ہے ۔ضلع رام بن میں احتجاج و بھوک ہڑتال کے دوران رہبر تعلیم ٹیچروں چیف ایجوکیشن آفیسر رام بن کے دفتر کے سامنے احتجاجی دھرنا دیا ہو ا ہے جہاں پر احتجاج و ریاستی انتظامیہ کیخلاف نعرے بازی کرتے ہوئے ملازمین نے جلداز جلد 7وین پے کمیشن کو لاگو کر نے کی مانگ کی ۔صوبہ بھر میں جاری ہڑتال کے دوران ملازمین لیڈران نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملازمین گزشتہ کئی عرصہ سے اپنی مانگوں کو لے کر احتجاج کیا جا رہاہے تاہم ان کی جائز مانگوں کو حل کرنے کی طرف کوئی توجہ نہیں دی جارہی ہے ۔ملازمین نے مزیدکہاکہ گزشتہ چار ماہ سے وہ ساتویں پے کمیشن کو لاگو کرنے کی مانگ کیلئے سڑکوں پر ہیں تاہم ریاستی انتظامیہ کی جانب سے اس طرف کوئی دھیان نہیں دیا جا رہا ہے ۔تاہم جموں میں جاری بھوک ہڑتال میں بھی تمام اضلاع سے ملازمین لیڈران شامل ہیں 
 

ْجموں:27کلوگرام  لفافے ضبط 

نیوز ڈیسک 
جموں //جموں و کشمیر اسٹیٹ آلودگی کنٹرول بورڈ کے آفیسران کی ایک جائنٹ ٹیم نے جموں میں ایک کاروائی کے دوران 27.50کلوگرام لفافے ضبط کرلئے گئے ۔ذرائع کے مطابق ریجنل ڈائریکٹر جموں شالی رنجن کی سربرائی میں جموں جنوب میں انجینئر بدر حسین ،انجینئر ارشد ملک اور انجینئر چندر کوتوال کے ہمراہ   ایک مہم کے دوران بشناہ اسمبلی حلقہ میں پالتھین مخالف مہم کے دوران مجموعی طور پر 72.50کلو گرام لفافے ضبط کرلئے گئے ۔اس موقعہ پر ریجنل ڈائریکٹر جموں نے تمام دوکانداروں ودیگر تاجروں کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہاکہ پلا سٹک بالخصوص لفافوں کا استعمال نہ کیا جائے ۔انہوں نے مزید کہاکہ ریاستی انتظامیہ کی جانب سے پلاسٹک بالخصوص لفافوں کے استعمال پر پابندی عائد کی گئی ہے تاہم لفافوں کو غیرقانونی استعمال کیلئے جمع نہ کیا جائے ۔انہوں نے مزیدکہاکہ قوانین کیخلاف ورزی کر نے والوں کیخلاف سخت سے سخت کاروائی عمل میں جائے گی ۔
 

 AICTEنے آرینس گروپ آف کالجز کو

 سکیل ڈولپمنٹ کورسز شروع کرنے کی منظوری دی 

نیوز ڈیسک 
جموں //آل انڈیا کونسل برائے تکنیکی تعلیم (AICTE)اور وزرات برائے انسانی وسائل وترقی نئی دہلی نے آرین کالج آف انجینئر نگ راجپورہ میں سکیل ڈولپمنٹ کورسز کو شروع کر نے کو منظوری دے دی ہے ۔اس دوران منتخب طلباء کو شروع کردہ سکیل ڈولپمنٹ کورسز کی مفت تربیت دی جائے گی جبکہ ان کی پوری فیس و دیگر خرچہAICTEخود اٹھائے گی ۔ مذکورہ کالج میں جن سکیل ڈولپمنٹ کورسز کو منظور ملی ہے ان میں تعمیراتی زمرے میں اسٹنٹ سروائرے ،ہیلپرز ،پینٹرز کورس کے علا وہ اٹو موٹیو برانچ میں کلچ ماہر ،ولیڈنگ ،بریک ماہر وغیرہ شامل ہیں ۔تاہم اسی طرح الیکٹرونک شعبہ میں سولر پینل کو نصب کرنا ،ٹیکنیشن ،ایل ای ڈی لائٹس کی مرمت ،ٹی وی کی مرمت وغیرہ کورسز شامل ہیں ۔اس موقعہ پر آرینس گروپ آف کالجز کے چیر مین ڈاکٹر انشو کٹیاریہ نے آل انڈیا کونسل برائے تکنیکی تعلیمکا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ان کی جانب سے منظور ی ملنے کے بعد طلباء اور خواہشمند وں کی مشکلات کم ہوگئی ہیں اور اب کالج انتظامیہ طلباء کو ان کورسوں کی تربیت دئینگے ۔انہوں نے مزیدکہاکہ کالج انتظامیہ فنڈز کی کمی کی وجہ سے ان طلباء کیلئے تکنیکی کورسز کو شروع نہیں کر سکتی تھی تاہم آل انڈیا کونسل برائے تکنیکی تعلیم کی جانب سے اٹھا ئے گئے قدم کے بعد اب طلباء کو سہولیات فراہم کی جائینگی ۔اس موقعہ پر بولتے ہوئے مونیکا راینہ ہیڈ سکیل ڈولپمنٹ سنٹر نے کہاکہ ان کورسوں میں تعمیراتی شعبہ میں طلباء کی رجسٹریشن کیلئے اہلیت 5ویں جماعت رکھی گئی ہے جبکہ آئی ٹی کورسز کیلئے 10ویں اور 12ویں پاس رکھی گئی ہے ۔جبکہ اسی طرح الیکٹر انک میں تعلیمی اہلیت 10ویں جبکہ اسی شعبہ میں آئی ٹی آئی سیکٹر میں تعلیمی اہلیت 12پاس رکھی گئی ہے ۔یاد رہے AICTEکی جانب سے مجموعی طور پر 10کورسوں کو منظوری دی گئی ہے جبکہ ان کو رسز کو پورے کرنے پر امیدواروں کو روزگار بھی فراہم کیا جائے گا ۔
 

بلاک متھوار میں بارشوں سے مکی کی فصلوں کونقصان 

کسان پریشان، محکمہ زراعت سے تخمینہ لگانے کامطالبہ

جموں//ضلع جموں کی زون بھلوال بلاک متھوار کے کسانوں کوان دنوںگوناگوں  پریشانیوں کاسامناہے ۔ذرائع کے مطابق اس سال برسات کے موسم میں زیادہ بارش ہونے کے سبب بھلوال تحصیل کے کسانوں کی فصل تباہ ہو گئی ہے اور محکمہ زراعت کی طرف سے ابھی تک کوئی بھی ملازم تباہ ہوئی فصل کاجائزہ لینے کیلئے علاقوں میںنہیں گیا ہے۔اس سلسلے میں پنچایت دھنوں کے متعددکسانوں نے کہاکہ برسات کے دوران زیادہ بارشوں کی وجہ سے ہماری فصلیں بری طرح تباہ ہوگئی ہیں۔انہوں نے الزام لگایاکہ محکمہ زراعت غفلت کی نیندسورہاہے جوکہ افسوس کی بات ہے۔انہوں نے کہاکہ محکمہ زراعت کے اعلیٰ حکام کوچاہیئے کہ وہ عملے کوتباہ ہوئی فصلوں کاجائزہ لینے کیلئے مختلف علاقوں میں بھیجیں اورنقصانات کاتخمینہ لگایا۔پنچایت دھنوں وملحقہ علاقوں کے کسانوں نے ریاستی گورنر سے اپیل کی ہے کہ تباہ ہوئی فصلوں کا معاوضہ دینے کیلئے محکمہ زراعت کی ٹیموں کوموقعہ پر بھیجاجائے تاکہ نقصانا ت کاتخمینہ لگایاجاسکے ۔
 
 

تازہ ترین