تازہ ترین

گاندربل میں آوارہ کتوں کی ہڑبونگ

اپریل سے اگست تک 500 افراد زخمی

10 ستمبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

ارشاد احمد
 
گاندربل//ضلع گاندربل میں آوارہ کتوں کی بھرمار سے مقامی آبادی میں خوف و ہراس پھیل گیاہے۔ گاندربل،کنگن،گنڈ، صفاپورہ ،تولہ مولہ، لار،شالہ بگ، ڑھندھنہ، واکورہ، سمیت دیگر علاقوں میں درجنوں آوارہ کتوں کی موجودگی سے مقامی آبادی کاجینا محال ہوا ہے جبکہ ضلع انتظامیہ،میونسپل کمیٹی آوارہ کتوں کے پکڑنے اور نس بندی کرنے میں ناکام ہوچکی ہے۔کنگن کے مقامی باشندوں کے مطابق ہر گلی ہر کوچے میں درجنوں کتے ڈیرا جمائے بیٹھے رہتے ہیں جس کے باعث بچوں،بزرگوں اور خواتین کو چلنے پھرنے میں کافی مشکلات اور دشواری کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔کنگن اور گاندربل کے ملحقہ علاقوں سے کتوں کے کاٹنے کی شکایات موصول ہورہی ہیں۔محکمہ صحت کے اعلی حکام کے مطابق رواں سال کے اپریل سے لیکر اگست تک پورے ضلع کے مختلف علاقوں سے آوارہ کتوں کے کاٹنے کے افراد لائے گئے ہیں جن کو ARV نامی انجیکشن لگانے پڑے جبکہ تین زخمی افراد کو میڈیکل انسٹیچوٹ صورہ منتقل کرنا پڑا۔اس بارے میں سیول سوسائٹی کنگن نے معاملے کی سنجیدگی کو لیکر ضلع ترقیاتی کمشنر گاندربل کو یادداشت بھی پیش کی۔اس بارے میں جب کشمیر عظمی نے ضلع ترقیاتی کمشنر گاندربل ڈاکٹر پیوش شنگلہ سے بات کی تو انہوں نے کہا کہ "ہم نے اس سلسلے میں میونسپل کارپوریشن سرینگر سے مل کر ایک مرتبہ گاندربل اور کنگن سے درجنوں کتے پکڑوائے تھے چند دنوں میں پھر میونسپل کارپوریشن سرینگر کے تعاون سے آوارہ کتوں کو پکڑا جائے گا۔