تازہ ترین

دلی میں نوجوانوں کی گرفتاری

نئی دلی کشمیریوں کو انتقام گیری کا شکار بنانے پر مصر:گیلانی

9 ستمبر 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

سرینگر//حریت چیرمین سید علی گیلانی نے دہلی میں پولیس انتظامیہ کے ہاتھوں زیرِ تعلیم انجینئرنگ طلباء پرویز رشید اور جمشید ظہور کو گرفتار کئے جانے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ارباب اقتدار جموں کشمیر سے تعلق رکھنے والے طلباء کو خوف وہراس میں مبتلا کئے جانے کی کارروائیوں کا ارتکاب کرکے یہاں کے ذہین نوجوانوں کے روشن مستقبل سے کھلواڑ کررہے ہیں۔ حریت رہنما نے وقوع پذیر بیسیوں واقعات کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے عزیز طلباء کو فرضی کیسوں میں ملوث کرتے ہوئے پندرہ پندرہ، سولہ سولہ برس قید سنگین کے عذاب وعتاب میں مبتلا کرنے کے بعد بری کردیا گیا، لیکن تب تک ہمارے اُن عزیز جوانوں پر کیا گزری اس کا صحیح اندازہ وہی فرد کرسکتا ہے جو خود چندروز ہی کِسی زنداں خانے میں گزارنے کا تجربہ رکھتا ہو۔ حریت رہنما نے نوجوان حریت پسند لیڈر مسرت عالم بٹ کے صبرواستقبال اور عزم وہمت کو عقیدت کا سلام پیش کرتے ہوئے کہا کہ عالمی انسانی حقوق اداروں کے لیے اس نوجوان رہنما پر انتظامیہ کی طرف سے لگائے گئے 36ویں بار بدنامِ زمانہ پبلک سیفٹی ایکٹ کو ریاستی ہائی کورٹ کی طرف سے کالعدم قرار دئے جانے کے بعد بھی رہا کرنے سے گریز کرنے کی  کارروائی کو ایک مثال کے طور پر انسانی حقوق کی پامالیوں کے حوالے سے ایک واضح ثبوت کوعالم انسانیت کے سامنے پیش کرنا چائیے۔ حریت رہنما نے ریاست اور ریاست سے باہر ایسے سینکڑوں قیدیوں کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ انہیں عدالتوں کی طرف سے رہائی کے احکامات صادر کئے جانے کے باوجود جیل خانوں میں مقید رکھا گیا ہے، جوکہ جموں کشمیر میں ایک معمول بن گیا ہے۔ حریت راہنما نے اقوامِ متحدہ کے انسانی حقوق کمیشن اور دیگر اداروں سے مطالبہ کیا کہ وہ قیدیوں کے حوالے سے ہورہی انسانی حقوق کی پامالیوں کا مشاہدہ کرنے کے لیے ان جیل خانوں کا ازخود دورہ کرنے کے لیے بھارت کی حکومت پر اپنا سیاسی اور سفارتی دباؤ بڑھائے۔