تازہ ترین

رام بن کے رہبر تعلیم اساتذہ کا دھرنا ختم

ڈی سی کی مسائل کے حل کی یقین دہانی، اساتذہ کو ڈیٹیچ کرنے کا حکم

21 اپریل 2017 (00 : 02 AM)   
(      )

محمد تسکین
 بانہال // رہبر تعلیم ٹیچرس فورم کے بینر تلے بدھ کی رات کو دیر گئے تک چیف ایجوکیشن افسر رام بن کے دفتر کے باہر جاری دھرنا ضلع انتظامیہ کی مداخلت کے بعد ختم کیا گیا ہے اور جمعرات کو ڈپٹی کمشنررام بن نے چیف ایجوکیشن افسر رام بن کی موجودگی میں چھ ماہ سے بند پڑی تنخواہوں کا مطالبہ کرنے والے رہبر تعلیم ٹیچروں سے ملاقات کی۔ اس موقع پر وفد کی قیادت فورم کے ریاستی صدر ونود شرما ، ضلع صدر گل زبیر ڈینگ اور بھو پندر سنگھ کر رہے تھے۔ بدھ کی رات نو بجے کے بعد چیف ایجوکیشن افسر کے دفتر کے باہر دھرنے پر بیٹھے رہبر تعلیم ٹیچراور دفتر کے اندر یرغمال بنائے گئے ملازمین کا ڈرامہ اسسٹنٹ کمشنر رام بن کی مداخلت کے بعد ختم کیا گیا اور رہبر تعلیم ٹیچروں کو یقین دلایا گیا کہ جمعرات کو ڈپٹی کمشنر رام بن محمد اعجاز ان سے ملاقات کرینگے اور ان کے تنخواہ سے متعلقہ مسئلے کو حل کرینگے۔ جمعرات کو ڈپٹی کمشنر رام بن کی قیادت میں اور چیف ایجوکیشن افسر رام بن محمد شریف چوہان کی موجودگی میں رہبر تعلیم ٹیچروں کے لیڈران اور احتجاجی اساتذہ نے ڈی سی رام بن کے دفتر میں ملاقات کی۔ اس موقع پر رہبر تعلیم ٹیچروں نے ان کے ساتھ چیف ایجوکیشن افسر رام بن کی طرف سے روا رکھے گئے سلوک اور چھ مہینوں سے تنخواہ کی عدم ادائیگی اور ضلع رام بن کیلئے بہت قلیل فنڈس سمیت اپنی داد و فریاد ضلع ترقیاتی کمشنر رام بن کو سنائی۔ اساتذہ کا الزام ہے کہ چیف ایجوکیشن افسر رام بن میں مختلف ٹیچر پچھلی ایک دہائی سے بھی زائد عرصے سے کام کررہے ہیں اور انہوں نے اس دفتر کو کرپشن اور بے ضابطگیوں کا گڑھ بنا رکھا ہے اور ان کی وجہ سے ہی چھ ماہ سے تنخواہوں سے محروم رہبر تعلیم ٹیچروں کیلئے دوماہ کی سات کروڑ روپئے کی رقم کے بجائے محض اکیاسی لاکھ روپئے کی رقم ہی واگذار کی گئی ہے جو اس احتجاج اور دھرنے کا باعث بنا۔ اس موقع پر ڈپٹی کمشنر رام بن محمد اعجاز نے ضلع رام بن کے رہبر تعلیم ٹیچروں کی تنخواہوں کی عدم ادائیگی کا معاملہ سٹیٹ پروجیکٹ ڈائریکٹر سروا شکھشا ابھیان سے بھی اٹھایا اور رہبر تعلیم ٹیچروں کو ڈپٹی کمشنر رام بن نے یقین دلایا کہ ان کے معاملے کو اولین ترجیح میں حل کرنے کی ہر ممکن کوشش کی جائے گی۔ اس موقع پر رہبر تعلیم ٹیچروں نے رام بن ضلع کے مختلف تعلیمی زونوں اور چیف ایجوکیشن افس رام بن میں دہائیوں سے تعینات ٹیچروں اور کلریکل سٹاف کی فوری ڈی اٹیچمنٹ کا بھی مدعا اٹھایا اور ڈپٹی کمشنر رام بن نے چیف ایجوکیشن افسر رام بن کو اس معاملے پر فوری کاروائی کا حکم صادر کیا۔ اس کامیاب ملاقات کے بعد رہبر تعلیم ٹیچر جلوس کی صورت میں وہاں سے نکل کر پر امن طور منتشر ہوئے۔ 
اس ملاقات کے کچھ ہی دیر بعدچیف ایجوکیشن افسر رام بن نے جمعرات کو ایک حکم نامہ جاری کرکے ضلع رام بن کے تمام زونل ایجوکیشن افسروں کو ہدایت جاری کی ہے کہ وہ فوری طور پر اْن تمام ٹیچروں کو اپنے اپنے دفتروں سے ہٹاکر واپس ان سکولوں میں بھیجا جائے جہاں وہ تعینات ہیں اور اس حکم پر 22 اپریل تک عملدارمد کرکے چیف ایجوکیشن افسر رام بن کو مطلع کرنے کی ہدایت جاری کی گئی ہے۔ اس حکم نامہ پر عملدرامد ناکام ہونے والے زونل افسروں کے خلاف قانونی کاروائی کی بھی تنبہ کی گئی ہے۔اس دوارن ممبر اسمبلی بانہال وقار رسول نے بھی ضلع انتظامی کمپلیکس میں احتجاجی دھرنے میں شامل رہبر تعلیم ٹیچروں سے ملاقات کی اور انہیں اپنی بھر پور مدد کا یقین دلایا۔