تازہ ترین

شہری ہلاکتیں اور طلاب کے خلاف فورسز کی کارروائیاں

لاہور اورمظفرآباد میں احتجاجی جلوس،اقوام متحدہ سے مداخلت کی اپیل

21 اپریل 2017 (00 : 02 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
 مظفرآباد//وادی میںشہری ہلاکتوں اور طالب علموں پرتشدد ڈھانے کی کارروائیوں کے خلاف پاکستانی زیرانتظام کشمیر کے دارالحکومت مظفرآباد میں طلاب سڑکوں پر نکل آئے اور برہان مظفر وانی چوک میں احتجاج کیا ۔احتجاج میں طالب علموں کے ساتھ ساتھ سول سوسائٹی ممبران ، وکلاءاور تاجروں نے بھی شرکت کی۔احتجاجی طلاب نے ہاتھوں میں علامتی طور پر زنجیریں اور آنکھوں پر پٹیاں باندھ لی تھیں۔ مرکزی ایوان صحافت سے اقوام متحدہ کے مبصرکے دفتر تک مارچ کیاگیا۔موصولہ بیان کے مطابق پاسبان حریت اور انٹرنیشنل فورم فار جسٹس اینڈ ہیومن رائٹس کے زیر اہتمام برہان وانی چوک میں ہزاروں طلبہ و طالبات اور سول سوسائٹی نے بھارت مخالف اور آزادی کے حق میں نعرے بلند کئے۔ احتجاجی مظاہرے میں وزیر تعلیم بیرسٹر افتخار گیلانی، پاسبان حریت کے چیئرمین عزیر احمد غزالی، انٹرنیشنل فورم فار جسٹس اینڈ ہیومن رائٹس کے وائس چیئرمین مشتاق الاسلام، ڈائریکٹر کشمیر لبریشن سیل راجہ سجا د لطیف ،کشمیر ہیومن رائٹس آزادکشمیر کے صدر قاری بلال احمد فاروقی، عبدالشکور آزاد، شاہین احمد شاہ، طلبہ و طالبات نے بھی خطاب کیا۔ مظاہرین نے اقوام متحدہ کے مبصر کے دفتر کے سامنے احتجاجی دھرنا دیا۔ بھارت کے خلاف نعرے بلند کرتے ہوئے کئی بچے شدید گرمی کے باعث بے ہوش ہوئے۔ احتجاج میں شریک بچوں نے کتبے اور بینر اٹھا رکھے تھے جن پر آزادی کے حق میں نعرے درج تھے۔احتجاجی مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے وزیرتعلیم بیرسٹر افتخار گیلانی نے کہا کے کشمیر میں بھارت جس طرح حملہ آور ہوا ہے مہذب دنیا اس عمل کو مسترد کرتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستانی زیر انتظام کشمیر کے عوام آزادی کی تحریک کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے ہیں اور عالمی برادری سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ بھارتی جارحیت پر خاموش تماشائی نہ بنے۔