تازہ ترین

شہری ہلاکتوں پر ریاستی حقوق کمیشن حرکت میں

انتظامیہ سے تفصیلی جواب دائر کرنے کا حکم

12 جولائی 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

بلال فرقانی
سرینگر// فورسز کے ہاتھوں10شہری ہلاکتوں پر انسانی حقوق کے ریاستی کمیشن نے چیف سیکریٹری کے علاوہ پولیس سربراہ ،کمشنر سیکریٹری داخلہ اور بارہمولہ، و کولگام اضلاع کے پولیس سربراہاںکو14 اگست تک مکمل تفصیلی رپورٹ کو پیش کرنے کی ہدایت دی۔ وادی میں شہری ہلاکتوں کے نہ تھمنے والے سلسلے کے بیچ بشری حقوق کے ریاستی کمیشن نے مشی پورہ ہائورہ کولگام میں ایک کمسن بچی سمیت3 نوجوانوں کی ہلاکت پر ریاستی  چیف سیکریٹری،پولیس کے ڈائریکٹر جنرل اور کمشنر سیکریٹری ہوم کو14اگست تک مکمل تفصیلی رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت دی۔اس حوالے سے انٹرنیشنل فورم فار جسٹس کے چیئرمین محمد احسن اونتو نے انسانی حقوق کے مقامی کمیشن میں ایک عرضی پیش کی،جس میں کہا گیا کہ احتجاج کے دوران معصوم اور نہتے شہریوں کو ہلاک کیا گیا،جس میں ایک12سالہ کمسن طالبہ عندلیب بھی شامل ہے۔ عرض گزار نے ان ہلاکتوں کی تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہوئے اصل حقائق کو سامنے لانے کی مانگ کی ۔درخواست میں مزید کہا گیا ہے کہ متعلقہ حکام کو ہدایت دی جائے کہ وہ متاثرین کو معاوضہ فرہم کریں،جبکہ ان شہری ہلاکتوں میں ملوث افراد کو قانون کے کٹہرے میں کھڑا کیا جائے۔ بشری حقوق کے ریاستی کمیشن کے چیئرمین نے سماعت کے دوران لدھو پانپور میں29جون کو جان بحق کمسن شہری فیضان احمد کی ہلاکت سے متعلق ضلع ترقیاتی کمشنر پلوامہ اور ایس ایس پی پلوامہ کو3 اگست تک رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت دی۔اس واقعے سے متعلق بھی اونتو نے ایک عرضی کمیشن میں پیش کی تھی،جس کی شنوائی کے دوران ضلع پلوامہ کے پولیس اور انتظامی سربراہاں کو مکمل تفصیلی رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت دی۔