تازہ ترین

میوہ باغات کو درپیش بیماری سے کسان متاثر

محکمہ باغبانی فوری حل نکالے،تاریگامی کا مطالبہ

11 جولائی 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
سرینگر//سی پی آ ئی ایم کے سینئر لیڈر و ممبراسمبلی کولگام محمد یوسف تاریگامی نے کشمیر میں میوہ جات کولگی الٹرنیریا نامی بیماری پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے محکمہ باغبانی پر زور دیاہے کہ وہ فوری طور پر وسائل کو بروئے لاکر اسے قابو میں لائے۔ تاریگامی نے کہاکہ خراب موسم کی وجہ سے وادی کشمیر خاص طور پر جنوبی علاقوں میں میوہ جات کو بری طرح سے نقصان پہنچااوراب اس بیماری نے اس کو تباہ کردیاہے۔ان کاکہناتھاکہ میوہ سے جڑے افراد نے بینکوں سے قرضے لے رکھے ہیں جن کو اب ان کی قسطیں اداکرنے میں مشکلات کاسامناہے اور انہیں اس بارنقصان کاسامناکرنے کاخدشہ ہے۔ تاریگامی نے کہاکہ محکمہ باغبانی کو فوری طور پر صورتحال سے نمٹنے کیلئے اقدامات کرنے چاہئیں اور ماہرین کی ٹیموں کو متاثرہ علاقوں میں روانہ کرکے بیماری کی روم تھام کیلئے کوششیں کرنی چاہئیں۔انہوں نے کہاکہ اب تک محکمہ کا اس سلسلے میں رد عمل مایوس کن رہاہے جس سے میوہ کاروبار سے جڑے افراد میں مایوسی پائی جارہی ہے۔سی پی آئی ایم لیڈر نے کہاکہ میوہ جات کاکاروبارریاست کی معیشت میں اہم رول ادا کرتاہے اوراس سے ہزاروں لوگ جڑے ہوئے ہیں جن کا گزر بسر ہی اسی پر ہے جن کے مفادات کو تحفظ دیاجائے۔انہوں نے کہاکہ زرعی یونیورسٹی کے ماہرین بھی اس مرحلے پر اس کاروبار سے جڑے لوگوں کو اس بات کے مشورے دیں کہ انہیں میوہ فصل کو کیسے بچاناہے۔تاریگامی نے بیماری کی وجہ سے میوہ جات کو پہنچے نقصان کے متاثرین کیلئے جامع امداد کی اپیل کی ہے اور حکام بغیر کسی تاخیر کے متاثرین کو امداد فراہم کریں۔