تازہ ترین

ادبی کنج کے زیراہتمام ادبی نثری نِشست کا اہتمام

13 جولائی 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

  جموں // کثیر اللسانی ادبی تنظیم ادبی کنج جے اینڈ کے زیراہتمام گذشتہ روز ایک ادبی نثری نِشست کا اِنعقاد ہوُا۔اِس ادبی نِشست کی صدارت کے فرائض ڈوگری کے لیکھک و کوَی پرنسپل کے آر سلگوترہ  نے سر انجام دِئے۔ جبکہ کشتواڑ سے تعلق رکھنے والے جانے پہچانے صحافی اور اُردوُزبان کے شاعر عبدالجبّار بٹ مہمانِ خصوُصی تھے۔  نِشست کی نِظامت کے فرائض اِس بار تنظیم کے ادبی سیکرٹری بِشن داس خاکؔ نے انجام دِئے۔ نِشست کے اوّلین دوَر میں مختلف مقررین نے نثری ضابطہ کے مختلف پہلوؤںپر تفصیلاً روشنی ڈالتے ہوئے اپنے خیالات کا اِظہار کِیا۔ اِ س موقعہ پر پیش کی گئیں خصوُصی نثری تخلیقات اِس طرح تھیں۔(1)  ایک خاص اُردوُ تخلیق  ’ایمر جینسی، چند یادیں‘   از آرشؔ دلموترہ، (2)  ’تھکاوٹ‘  ایک  ہِندی تحریر، از بِشن داس خاکؔ ۔ (3)’میریاں شرطاں‘  کے آر سلگوترہ نے پیش کِیا۔ (4) ایک پنجابی تخلیق ’ ٹُٹّا شیٖشہ بول ریہا ہے ‘  شام طالبؔ نے پیش کِیا۔  جِن سبھی تحریروں پر سیر حاصل تبصرہ بھی ہوُا۔ نِشست میں ایک کثیر اللسانی نظمی دور بھی ہوا .جِس میں مختلف شعراء حضرات نے محتلف زبانوں میں اپنا کلام بھی پیش کِیا۔  اِس موقعہ پر گلوکار چمن سگوچ نے اپنی سُریلی آواز میں سرور چوہان حبیٖبؔ کی ایک غزل ، ’تاقیامت قریٖب ہی رہنا , بن کے میرے حبیٖب ہی رہنا‘گا کر سب کو مسرور کر دِیا۔  ٓج کے شعری دوَر میں حِصّہ لینے والے شعراء کے اِسمائے گرامی اِس طرح ہیں:۔ آرشؔ دلموترہ  ،  سنتوش شاہ نادا نؔ، عبدالجبّار بٹ،  سروَر چوہان حبیٖب، بِشن داس خاکؔ، چمن سگوچؔ ، ر ا ج کمل، دیپک ؔبہاری، ایس کے گٗپتا، راجیو کُمار، اور شام طالبؔ۔ نِشست کا اِختتام تنظیم کے چئیرمین  آرشؔ دلموترہ  کی پیش کردہ شُکریہ کی تحریک سے ہوُا۔