تازہ ترین

میرواعظ منزل سے مزار شہداء کی طرف جلوس کی تیاری

حریت (ع) اور عوامی مجلس عمل کا اجلاس، انتظامات کا جائزہ لیا گیا

13 جولائی 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

 سرینگر// حریت(ع) اورعوامی مجلس عمل کے زعمائوں،کارکنوں اور عہدیداروںکا ایک اہم اور غیر معمولی اجلاس تاریخی میرواعظ منزل راجوری کدل پر منعقد ہوا جبکہ حریت چیرمین  میرواعظ ڈاکٹر مولوی محمد عمر فاروق جنہیں حسب پروگرام اس اہم اجلاس جس میں 13 جولائی کے پروگرام کو حتمی شکل دینے کے ساتھ ساتھ کارکنوںکو ہدایت جاری کرنی مقصود تھی کی صدارت کرنی تھی کو ریاستی حکمرانوں نے اپنی رہائش گاہ میرواعظ منزل نگین میںمسلسل نظر بند کرکے موصوف کی پر امن سرگرمیوں پر پابندی عائد کردی ہے ۔اجلاس میں حریت اور مجلس عمل کے رہنمائوں نے 13 جولائی 1931ء کے اولین شہداء اور جملہ شہدائے کشمیر کی عظیم قربانیوں پر انہیں شاندار الفاظ میں خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے اس عزم اور عہد کا اعادہ کیا کہ شہیدوں کے مشن کو تکمیل کے مرحلے تک لیجانے کیلئے ہر سطح پر ہماری پرامن اور منصفانہ جدوجہد جاری رہیگی۔مقررین نے  اس بات کا اعادہ کیا کہ13 جولائی کے قومی دن کے موقعہ پر اپنے ان عظیم شہداء کو خراج عقیدت ادا کرنے کیلئے تنظیم کے پروگرام کے مطابق میرواعظ کی قیادت میں  نماز جمعہ کے فوراً بعد مرکزی جامع مسجد سرینگر سے مزار شہداء نقشبند صاحبؒ تک جلوس کو ہر قیمت پر کامیاب بنایا جائیگا اور اس ضمن میں مزاحمتی قیادت کی جانب سے دیئے گئے پروگرام کی بجا آوری کیلئے ہر ممکن طور پر اقدامات اٹھائے جائیں گے۔اجلاس میں عوام الناس سے اپیل کی گئی کہ وہ13 جولائی  کے تعلق سے مشترکہ مزاحمتی قیادت کی جانب سے ان قومی شہیدوں اور آج تک کے جملہ شہدائے کشمیر کو شایان شان طور پرخراج عقیدت ادا کرنے کیلئے جوق در جوق مزار شہداء نقشبند صاحب کا رخ کریں اورCASOکی آڑ میں حالیہ ہلاکتوں اور سرکاری سطح پر رچائی جارہی ظلم و ستم سے عبارت پالیسیوں کیخلاف صدائے احتجاج بلند کریں۔