تازہ ترین

گاندربل میں سیب باغات بیماریوں کی لپیٹ میں

کاشتکار پریشانیوں میں مبتلاء،محکمہ باغبانی کہا ں ہے؟

10 جولائی 2018 (00 : 01 AM)   
(      )

ارشاد احمد
گاندربل//ضلع گاندربل میں میوہ باغات دو طرح کی بیماریوں کی لپیٹ میں میں آنے سے کسانوں میں زبردست تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے.غیر یقینی موسمی تبدیلی کی وجہ سے گاندربل میں میوہ باغات میں سیبوں پر خطرناک وبائی بیماری لگ جانے سے کاشتکاروں میں زبردست تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔کنگن،لار،منیگام،صفاپورہ،واکورہ،بٹہ وینہ،ززنہ،آہن سمیت دیگر علاقوں میں غیر یقینی موسمی صورتحال کی وجہ سے Alternaria نامی وبائی بیماری سیبوں کے درختوں پر لگ جانے سے میوہ باغات کی فصلوں کو بڑے پیمانے پر نقصان پہنچا ہے.ان علاقوں میں میوہ صنعت سے وابستہ مقامی لوگوں نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ پہلے پہل درختوں کو الٹرنیرا Alternaria نامی مہلک بیماری لگ گئی جس سے پتوں اور شگوفوں کو نقصان پہنچا۔ہر علاقے کے کسانوں نے کلشم کلورائیڈ نامی دوائی کا چھڑکاؤ کیا جس کی وجہ سے سیبوں پر دوسری بیماری Necrotic نامی  لگ گئی جس سے سیبوں  پر کالے رنگ کے دھبے لگ جانے سے رہی سہی کسر بھی پوری ہوگئی۔کسانوں نے آج تک میوہ باغات کو بیماریوں سے محفوظ رکھنے اور دیگر اخراجات پر کثیر رقم خرچ کی ہے جس کیلئے انہوں نے بنکوں اور دیگر مالی اداروں سے بھاری رقم قرضے پر حاصل کی تھی لیکن ان بیماریوں کی وجہ سے کسانوں میں مایوسی اور تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔نہ ہی محکمہ باغبانی سے وابستہ ماہرین علاقوں میں آئے اور نہ ہی شیر کشمیر ایگریکلچر یونیورسٹی کے زیر نگرانی کرشی وگیان کیندر کے زعماء ہی معائنہ کرنے کی زحمت گوارا کی۔جس وجہ سے پوری محنت پر پانی پھیر دیا ہے۔کاشتکار مطالبہ کررہے ہیں کہ اس حوالے سے ماہرین کی ٹیم علاقوں میں بھیج کر بیماریوں سے ہورہئے سیبوں کو بچایا جاسکے ۔